صبا اکبر آبادی آرزو۔۔صبا اکبر آبادی

فرحت کیانی نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اگست 13, 2014

  1. فرحت کیانی

    فرحت کیانی لائبریرین

    مراسلے:
    11,085
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Confused
    آرزو
    دامن کی آرزو نہ گریباں کی آرزو
    ہم کو ہے بس بہارِ گلستاں کی آرزو
    کرنا ہے ان کو جشنِ بہاراں کا اہتمام
    اب تک تھی جن کو جشنِ بہاراں کی آرزو
    آنکھوں کو ہے تجلئ اخلاص سے غرض
    دل میں ہے صرف رفعتِ انساں کی آرزو
    جس سے چُھپا رہے نہ کوئی رنگِ کائنات
    رکھتا ہوں ایسے دیدۂ حیراں کی آرزو
    تاریکیوں کے دور سے گزرنے کے بعد ہم
    رکھتے ہیں ہر گلی میں چراغاں کی آرزو
    ایک اک شجر میں چاہیے فردوسَ رنگ و بُو
    ہے شاخ شاخ ہرگلِ خنداں کی آرزو
    ہم اپنے جھونپڑوں میں ہیں مسرور و مطمئن
    ہے قصر کی تلاش نہ ایواں کی آرزو
    اللہ ان گھروں کو اُجالا کرے نصیب
    تھی جن کو اِک چراغِ شبستاں کی آرزو
    بُت جن میں تھے ہوس کے وہ بُت خانے رہ گئے
    پُوری ہُوئی ہے قلبِ مسلماں کی آرزو
    پچھلے پہر کے ڈُوبتے تاروں کا ذکر کیا
    ہے صبحَ نو کے مہرِ درخشاں کی آرزو
    عیسیٰ نفس بنو کہ نہ دَم توڑ نہ دے کہیں
    دِل میں کسی مریض کے درماں کی آرزو
    اُٹھو کہ جنگلوں میں نئی بستیاں بسائیں
    پُوری ہو اب تو دشت و بیاباں کی آرزو
    پیشِ نظر صحیفۂ دل چاہیے صبا
    ہر وقت ہے تلاوتِ قرآں کی آرزو

    --صبا اکبر آبادی (1948ء)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • زبردست زبردست × 1

اس صفحے کی تشہیر