۳۰ جنوری مہاتما گاندھی کے قتل کی تاریخ

سارہ خان نے 'سیاست' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جنوری 30, 2016

  1. سارہ خان

    سارہ خان محفلین

    مراسلے:
    15,819
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    آج کہیں پڑھا کہ مہاتما گاندھی کا قتل ۳۰ جنوری کو ہوا تھا۔ تو اس بارے میں مزید معلومات کے لئے گوگل کو زحمت دی۔۔
    یہ جان کر حیرانی ہوئی کہ گاندھی کو انتہا پسند ہندوؤں نے اس لیئے قتل کیا کہ وہ پاکستان کو اس کا حق دلانے کی کوشش کر رہے تھے۔۔

    موہن داس کرم چند گاندھی، جو عام طور پر مہاتما گاندھی کے نام سے جانے جاتے ہیں، کو 30 جنوری 1948ء کو برلا ہاؤس (موجودہ گاندھی سمرتی) میں قتل کیا گیا جہاں گاندھی کسی مذہبی میل ملاپ میں اپنے خاندان کے ساتھ موجود تھے، اس جگہ ہندو مہاسبھا سے تعلق رکھنے والا ایک انتہا پسند و قوم پرست ہندو شخص نتھو رام گوڈسے پہنچا اور اس نے موہن داس گاندھی پر گولی چلائی۔ حادثہ کے بعد گاندھی کو فوراً برلا ہاؤس کے اندر لے جایا گیا مگر تب تک وہ دم توڑ چکے تھے۔ اس حملے سے پہلے ان پر پانچ مزید حملے بھی ہوئے تھے مگر ان سب میں قاتل ناکام رہے۔ ان میں سب سے پہلی ناکام کوشش 1934ء میں کی گئی تھی۔
    گوڈسے کا خیال تھا کہ گاندھی کےاُپواسوں نے (جو اعلان کے مطابق جنوری کے دوسرے ہفتہ میں ہونے والا تھا)، کابینہ کو اس بات پر مجبور کیا کہ وہ 550 ملین روپیے نقد13 جنوری 1948ء کو پاکستان کے حوالے کرے، (اور نو آزاد بھارت کی حکومت 200 ملین روپیوں کی پہلی قسط پاکستان کے حوالے بھی کر چکی تھی۔ تاہم آزادی کے فوراً بعد جب پاکستان کی سرحد سے جنگجوؤں نے کشمیر پر حملہ کیا، جس کے متعلق دعوٰی کیا گیا کہ ان لوگوں کو پاکستان کی پشت پناہی حاصل ہے، تب دوسری قسط کو روکنے کا فیصلہ کیا گیا تھا۔ گوڈسے، آپٹے اور ان کے احباب یہ محسوس کرنے لگے کہ ان اقدامات کے ذریعہ بھارت کے ہندوؤں کی قیمت پر پاکستانی مسلمانوں کی خوشنودی حاصل کی جا رہی ہے۔ گاندھی اور جواہر لال نہرو کے اس فیصلے سے ولبھ بھائی پٹیل کو بھی استعفٰی دینا پڑا تھا۔
    مزید
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
    • معلوماتی معلوماتی × 4
    • زبردست زبردست × 2
  2. زیک

    زیک محفلین

    مراسلے:
    37,745
    جھنڈا:
    UnitedStates
    موڈ:
    Amused
    پاکستانی درسی کتب میں ان پیسوں کے نہ دینے کا ذکر ہے مگر گاندھی کا نہیں
     
    • متفق متفق × 2
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  3. سارہ خان

    سارہ خان محفلین

    مراسلے:
    15,819
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    درسی کتب میں اگر کہیں صحیح تاریخ لکھی بھی ہوئی ہے تو شگر کوٹڈ۔۔ ویسے جانبدارانہ ہی لکھی ہوئی ہوتی۔۔۔
     
    • متفق متفق × 1
  4. ایچ اے خان

    ایچ اے خان معطل

    مراسلے:
    14,183
    موڈ:
    Cool
    سنا ہے گاندھی مسلمان ہوکر پاکستان ہجرت کرنا چاہتا تھا
     
    • غیر متفق غیر متفق × 3
    • پر مزاح پر مزاح × 2
  5. سارہ خان

    سارہ خان محفلین

    مراسلے:
    15,819
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    کہاں سے سنا یہ ؟ بے سروپا بات ہے۔۔
     
    • متفق متفق × 1
  6. ایچ اے خان

    ایچ اے خان معطل

    مراسلے:
    14,183
    موڈ:
    Cool
    اررے یہ تو بہت مشھور ہے
    بلکہ وہ مرن بھرت پر تھے اور مہاجر بننے پر تلے تھے
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
    • ناقص املا ناقص املا × 1
  7. سارہ خان

    سارہ خان محفلین

    مراسلے:
    15,819
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    حوالہ کوئی اس بات کا ؟
     
  8. ایچ اے خان

    ایچ اے خان معطل

    مراسلے:
    14,183
    موڈ:
    Cool
    حوالہ
    کہیں پڑھا تھا
    ڈھونڈتا ہوں
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  9. نور وجدان

    نور وجدان مدیر

    مراسلے:
    5,321
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Asleep
    ''ٹریک ٹو پاکستان'' ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔اس کتاب کو پڑھیے ۔۔۔۔۔جب گاندھی جی نے کرپس تجاویز مان لیں تو نہرو کانگریس کا صدر بن گیا اور گاندھی کی ریپو کو نقصان تک پہنچا تھا ۔۔۔۔۔۔۔۔۔ اگر کرپس تجاویز مسترد نہیں ہوتی تو کبنیٹ مشن پلین کی نوبت نہیں آتی اور نا پاکستان کی ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔اس لیے یہ کہنا کہ سارے پاکستانی جھوٹے ہیں، غلط ہے ۔۔۔۔۔مگر آٹے میں نمک کے برابر ہیں ۔۔۔
     
    آخری تدوین: ‏جنوری 30, 2016
    • معلوماتی معلوماتی × 3
  10. ایچ اے خان

    ایچ اے خان معطل

    مراسلے:
    14,183
    موڈ:
    Cool
    ابھی مل نہیں رہا مگر بہرحال گاندھی نے پاکستان ہجرت کی دھمکی دی تھی
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  11. سارہ خان

    سارہ خان محفلین

    مراسلے:
    15,819
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    مشکل ہے اس بات پر یقین کرنا
     
    • متفق متفق × 2
  12. ایچ اے خان

    ایچ اے خان معطل

    مراسلے:
    14,183
    موڈ:
    Cool
    کسی کتاب میں پڑھا تھانیٹ پر نہیں مل رہا
     
  13. ایچ اے خان

    ایچ اے خان معطل

    مراسلے:
    14,183
    موڈ:
    Cool
    بہرحال گاندھی تحریک خلافت میں بھی جوہر برادران کے ساتھ کھڑے تھے
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  14. نور وجدان

    نور وجدان مدیر

    مراسلے:
    5,321
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Asleep
    اس کی وجہ کامن انٹرسٹ تھا
     
    • متفق متفق × 1
  15. ایچ اے خان

    ایچ اے خان معطل

    مراسلے:
    14,183
    موڈ:
    Cool
    یعنی مسلمز اور ہدندووں کا انٹرسٹ کامن تھا؟
     
    • ناقص املا ناقص املا × 1
  16. سارہ خان

    سارہ خان محفلین

    مراسلے:
    15,819
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    ۱۹۳۲ میں جب انگریزوں نے کمیونل ایوارڈ میں مسلمانوں اور ہندو اچھوتوں کو علیحدہ انتخاب کا حق دیا تھا تو گاندھی نے خود کشی کی دھمکی دی تھی اور مرن برت رکھ لیا تھا ۔۔۔
    یہ کیسے مان لیا جائے کہ وہ مسلمانوں کے ساتھ تھے ؟
     
    • متفق متفق × 1
  17. ایچ اے خان

    ایچ اے خان معطل

    مراسلے:
    14,183
    موڈ:
    Cool
    میرے خیال میں وہ ہندوستانیوں کے ساتھ تھے
    الگ انتخاب کا حق کا مطلب دو ملک کی تقسیم کی شرووعات تھی
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  18. نور وجدان

    نور وجدان مدیر

    مراسلے:
    5,321
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Asleep
    مسلمان اور ہندو آزادی چاہتے تھے
     
    • متفق متفق × 1
  19. نور وجدان

    نور وجدان مدیر

    مراسلے:
    5,321
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Asleep
    مسلم اکثریتی علاقوں میں ان کی سیاسی طاقت کم کرنا تھی
     
    • متفق متفق × 1
  20. ایچ اے خان

    ایچ اے خان معطل

    مراسلے:
    14,183
    موڈ:
    Cool
    یہ بات درست ہے
    کاش مسلمز اور ہندو ایک ساتھ رہ سکتے
     
    • غیر متفق غیر متفق × 1
    • غمناک غمناک × 1
    • مضحکہ خیز مضحکہ خیز × 1

اس صفحے کی تشہیر