ساغر نظامی ہے کمالِ رقصِ صوفی بھی نشاطِ پادشاہی - ساغر نظامی

کاشفی نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اپریل 4, 2012

  1. کاشفی

    کاشفی محفلین

    مراسلے:
    15,393
    غزل
    (ساغر نظامی)
    ہے کمالِ رقصِ صوفی بھی نشاطِ پادشاہی
    بڑی مدّتوں میں ٹوٹا، یہ فریبِ خانقاہی
    یہی میری آدمیّت کی دلیلِ برتری ہے
    کہ لگا نہیں جبیں پر کبھی داغِ بےگناہی
    مجھے کیوں ہو فکرِ شاہد کہ معاملہ ہے روشن
    میں تری کھُلی شہادت، تو مری کھُلی گواہی
    ہے عجیب لا اُبالی، مرا مسلکِ جنوں بھی
    نہ اصولِ پاکبازی، نہ شعارِ بے گناہی
    مری زندگی میں ساغر وہ بلا کا بانکپن ہے
    نہ اطاعتِ اوامر، نہ پرستش نواہی
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
    • زبردست زبردست × 1
  2. محمداحمد

    محمداحمد لائبریرین

    مراسلے:
    23,101
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Amazed
    بہت ہی خوب۔

    اعلیٰ انتخاب ہے ۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  3. محمد وارث

    محمد وارث لائبریرین

    مراسلے:
    26,903
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Depressed
    واہ بہت خوب۔ شکریہ جناب شیئر کرنے کیلیے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  4. کاشفی

    کاشفی محفلین

    مراسلے:
    15,393
    بہت شکریہ محمد احمد بھائی!
     
  5. کاشفی

    کاشفی محفلین

    مراسلے:
    15,393
    بہت شکریہ محمد وارث صاحب!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  6. کاشفی

    کاشفی محفلین

    مراسلے:
    15,393
    بہت شکریہ فرخ منظور صاحب!
     

اس صفحے کی تشہیر