گیان چند پرلوک سدھار گئے

الف عین نے 'اردو نامہ' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اگست 19, 2007

  1. محب علوی

    محب علوی لائبریرین

    مراسلے:
    12,507
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    حیدر آبادی صاحب میرے خیال سے دلکش صاحب نے عمدگی سے اپنے خیال کی ترجمانی کر دی ہے اور یقینا اب ویسی صورتحال نہ ہوگی جیسی کہ پہلے تھی ویسے ان کی بات بجا ہے اور پاکستان میں آجکل جتنی مٹھاس اور دوستانہ رویہ بھارت کے لیے ہے اس کا بہت کم حصہ بھارت میں ہے ۔ اب بھی بھارتی چینلز پاکستان کی کسی کمزوری کو دوگنا تگنا کرکے دکھانے سے گریز نہیں کرتے اور پاکستان پر انتہائی سخت قسم کے الزامات لگاتے ہیں جو بری طرح سے پاکستان کا تصور دنیا میں بگاڑتا ہے۔ غلطیاں ہر ملک کرتا ہے مگر ہمسایوں کے کچھ حقوق زیادہ ہوتےہیں اور ان کا دونوں کو خیال رکھنا چاہیے۔

    امید ہے آپ بات کو مثبت انداز میں لیں گے۔
     
  2. حیدرآبادی

    حیدرآبادی محفلین

    مراسلے:
    154
    دلکش صاحب !
    آپ کا یہ تبصرہ عمدہ ہے اور حقائق پر بھی مبنی ہے۔
    ہم معذرت چاہتے ہیں اگر ہماری کوئی بات آپ کو ناگوار گزری ہو۔ درحقیقت یہ اڑوس پڑوس کی بات نہیں بلکہ وہی مذہبی رشتہ ہے جس کے سبب آپ اور ہم ایک مضبوط ڈور سے جڑے ہوئے ہیں۔
    بات صرف اتنی تھی کہ ہم نہیں چاہتے تھے کہ ہمارے ہاں کے کسی غیرمسلم ادیب و شاعر کے ہاتھ کوئی ثبوت آئے اور وہ اسے بتا بتا کے رونا روئے کہ دیکھو ، ان میں اور ہم میں کیا فرق کہ وہ بھی غصے میں برا لہجہ ہی اپناتے ہیں۔
    اور پھر مشورہ تو اپنوں کو ہی دیا جاتا ہے نا بھائی۔ :)
    اینی وے ، ایک بار پھر معذرت۔
     
  3. رضوان

    رضوان محفلین

    مراسلے:
    2,668
    جناب دلکش صاحب
    اس سارے معاملے میں اگر کچھ تنگی تُرشی ہوگئی ہے (جو کہ یقیناً ہوگئی ہے ورنہ آپ جیسے صاحبِ دل اس طرح ناراض نہ ہوتے ) تو اس کے لیے میں بھی نہایت ندامت سے معافی کا طلبگار ہوں۔ صفائی میں صرف اتنا کہنا چاہوں گا کہ میں نے جو کچھ لکھا یہ میرانظریاتی اختلاف ہے اور کسی شخص نہیں بلکہ اُس مکتبہ فکر کے خلاف ہے جو انسانوں کو اپنے مخصوص مفادات کے تحت تقسیم کرتی ہے۔ آپ کا اختلاف اور نقطہ نظر سر آنکھوں‌ پر۔ میں سمجھتا ہوں کہ آزادی اظہار کاحق اپنے ساتھ کئی فرائض بھی لاتا ہے۔ آپ کی دلشکنی پر ایک دفعہ پھر دلی معزرت :(
     
  4. Dilkash

    Dilkash محفلین

    مراسلے:
    477
    ارے نہیں بھائی۔۔میں خود تھوڑا سا جذباتی اوربے حد جلد باز ادمی ہوں۔۔پٹھان ھوں نا۔۔گرم مزاج۔لیکن ایک بات ہے کہ پٹھانوں کی طرح ضدی بلکل نہیں۔اور اپنی بات کو حرف اخرکبھی نہیں سمجھا۔۔جیسا کہ ایک پٹھان اپنی عمر بیس سال بعد بھی وہی بتاتا تھا جو کہ اتنے برس پہلے بتایا تھا۔کیونکہ وہ سمجھتا تھا کہ پٹھان کی ایک ہی بات ہوتی ہے۔ہاہاہا

    بھائیوں دراصل میں معافی کا خواستگار ہوں کہ بہت سارے لوگوں کو میری بات سے تکلیف ہوئی۔
    خوشحال بابا کا شعر ہے۔
    ہم قلعہ دہ ہم بلا دہ خپلہ ژبہ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔خہ ہغہ چہ تل کوی خوگے خبرے
    ترجمہ۔۔اپنی زبان حفاظتی قلعہ بھی ہے اور خطرناک بلا بھی ھے
    وہ اچھا ھے جو ہمیشہ شرین بیانی کرے۔
    حیدرابادی بھائی۔۔
    کھبی تشریف لائے انشااللہ حیدرابادی مطعم پر خیمہ کھلاؤنگا۔۔بہت شکریہ
    اپکے اس شرین اور محبت بھرے مکتوب کےجواب میں ((وساطت سے)) قبلہ اعجاز اختر صاحب سے بھی معزرت کا طالب ہوں
     
  5. Dilkash

    Dilkash محفلین

    مراسلے:
    477
    بہت شکریہ رضوان بھائی۔مجھے وہی لوگ پسند ھیں جو سچ بولتے ہوں۔
    جیسا کہ اپکو اور ہر کسی کو اظہار خیال کا حق ہے سو ہم سب نے جمہوری طریقے سے استعمال کیا۔:):)
    زیادتی مجھ سے ہوئی کہ اپنے نظریے کو کچھ زیادہ ہی شدت سے اجاگر کرنے کی کوشش کی۔
    عبدلقدیر خان اور پاکستان سے محبت میری کمزوری ہے یا شائد جزباتیت۔بحر حال اعتدال اچھا ھے
    بہت شکریہ۔۔۔کوئی خفگی نہیں۔
     
  6. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    35,986
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    چلئے قصہ ختم۔ وطنیت کا جذبہ درست سہی، لیکن تہذیب و ثقافت محض مذہب یا ملک ست متعلق ہی نہیں ہوتی۔ گیان چند کا میں خود مخالف ہوں یعنی ان کی حالیہ کتاب کا۔ لیکن ساتھ ہی مجھے اس پر افسوس ہے کہ ادھر اخبارات میں مستقل عینی آپا کے انتقال پر تعزیتی جلسے ہو رہے ہیں اور خعراجِ عقیدت پیش کیا جا رہا ہے لیکن گیان چند کو سب بھول بیٹھے ہیں۔ وہ اس کے حقدار بہر حال نہیں تھے۔ عینی آپا ضرور قدِّ آدم ہستی تھیں اور گیان چند ان کے قد تک ن یں پہنچ سکتے تھے۔۔ درست۔۔ لیکن افسوس کہ عینی آپا کی رحلت نے ان کو پسِ پردہ ڈال دیا ہے۔
    میرے ادارئے پر لیکن کسی کا کئی ردِ عمل نہیں اب تک!!
     
  7. حیدرآبادی

    حیدرآبادی محفلین

    مراسلے:
    154
    جی ہاں ، ایسا ہوتا ہے اعجاز صاحب۔ مگر کیا کیجئے کہ سب مقدرات کا کھیل ہے۔
    ویسے مجھے یہاں پر بالی ووڈ کی بات یاد آتی ہے۔ کوئی بھی فلمساز اپنی کوئی فلم اس جمعہ کو قطعاََ ریلیز نہیں کرتا جب اس دن بالی ووڈ کے کسی "عظیم" ڈائرکٹر و ایکٹر کی فلم ریلیز ہو رہی ہو۔
    بیچارے گیان صاحب کو اگر پتا چل جاتا کہ عینی آپا بھی اسی ماہ فوت ہونے والی ہیں تو شائد اپنی تاریخِ وفات وہ ایک آدھ مہینہ بڑھا لیتے :)
    خیر مذاق کی بات ہے۔ لیکن جہاں تک مجھے معلوم ہوا ہے دہلی میں کوئی تعزیتی جلسہ ہوا تھا۔
     
  8. حیدرآبادی

    حیدرآبادی محفلین

    مراسلے:
    154
    کس کا قیمہ بھائی ؟؟ :eek: کئیکو ڈرا رہے ہو؟
    یہاں سعودی عرب میں جب میں پہلے پہل آیا تھا تو گوشت کی دکانوں پر اردو میں ایسا لکھا دیکھ کر پریشان ہو جاتا تھا
    تازہ بہ تازہ انڈین اور پاکستانی گوشت !!
     
  9. Dilkash

    Dilkash محفلین

    مراسلے:
    477
    یہاں پر تو اسٹریلئن گوشت کی برامدات تقریبا بند کردی گئی ھے۔
    لوگ کہتے ہیں وہ گوشت اچھا تھا اس لئے کہ جانور اسٹرلیا میں بڑے بڑے فارمز میں پالے جاتے ھیں جس سے جانور زیادہ حرکت میں رہ کر اس کی خون اور ریشے تازہ اور طاقتور رھتے ہیں جو شائد باعث لذت او تقویت ھوں۔

    اب پاکستانی اور انڈین گوشت کا مزہ نہیں ارہا ہے۔پتہ نہیں کیوں۔

    سنا ہے کہ اسٹریلین دنبوں کے زیادہ تر فارمزحیدر اباد کے نظام مرحوم کے اولاد کی ملکیت ہے۔
     
  10. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    35,986
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    ذکر چھڑا تھا گیان چند کا
    بات پہنچی آسٹریلیائی گوشت تک۔۔
    یہاں حیدر آباد میں بھی اخبار میں کسی تعزیتی تقریب کی خبر دیکھی تھی جس کی سرخی ہی عینی آپا کی تھی۔ اور آخر میں ایک جملے میں تحریر تھا کہ ساتھ ہی گیان چند کو بھی یاد کیا گیا۔ واقعی اللہ کی مرضی نہیں تھی کہ ۔۔ جو مرتا کوئی دن اور
     
  11. Dilkash

    Dilkash محفلین

    مراسلے:
    477
    بزرگوارم
    اپکو تو یہ اقرار ہے کہ لاہوریوں کے علاوہ حیدرابادی بھی کھانوں کے انتھائی شوقین ہیں۔
    مجھے تو انکا کٹھا بہت پسند ہیں۔

    تو بات کس چیز کی بھی ہوتی رہے بغیر کھانے ادمی زندہ نہیں رہ سکتا۔

    اور گوشت اور کھانا تو دور کی بات ہے ۔بخارا والے تو چائے ناخوردن جنگ نہ می شود پر پورے بخارا سے ھاتھ دھو بیٹھے تھے۔شادی غمی دونوں میں کھانا ضروری ہے۔
     

اس صفحے کی تشہیر