1. احباب کو اردو ویب کے سالانہ اخراجات کی مد میں تعاون کی دعوت دی جاتی ہے۔ مزید تفصیلات ملاحظہ فرمائیں!

    ہدف: $500
    $453.00
    اعلان ختم کریں

کیا کائنات کا پہلا سیکولر ابلیس تھا؟

جاسم محمد نے 'متفرقات' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اگست 23, 2019

  1. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    11,738
    کیا کائنات کا پہلا سیکولر ابلیس تھا؟
    23/08/2019 سلیم جاوید

    انسانوں کے مختلف گروہوں کے ہاں مختلف مقدسات رائج ہیں۔

    ہم سیکولرز، لوگوں کے ہرگروہ کا یہ حق تسلیم کرتے ہیں کہ وہ کسی مرئی یا غیرمرئی وجود کو، کسی وجہ سے یا بغیر وجہ سے مقدس جانتا اور مانتا ہو۔ (تقدیس کا مطلب یہ کہ کسی عیب یا غلطی سے پاک ہونا) ۔ تاہم یہ واضح ہونا ضروری ہے کہ ہم عمومی طور پر، سب مقدسات کے احترام کے قائل ہیں اور کسی شخص کے عقیدہ، نسل، رنگ اور زبان سمیت اس کے کسی ہیروکی تحقیرکرنا غلط سمجھتے ہیں مگریہ کہ حیات اجتماعی میں کسی چیزکی تقدیس کے پابند بھی نہیں ہیں۔

    نہ کسی کی تحقیر، نہ کسی کی تقدیس۔

    سماجی زندگی کے قوانین، صرف اس منطقی دلیل کی بنیاد پربنائے جائیں جوسماج کے ہرطبقے کی عقل کواپیل کرسکتے ہوں۔ اگر ایک ہمہ رنگ سوسائٹی میں، کوئی اقلیت یا اکثریت محض اس بنیاد پر ملکی قانون سازی کرے کہ ان کا عقیدہ فلاں کام کو جائز یا ناجائز سمجھتا ہے تو ہمیں قبول نہیں ہوگا۔ مزید یہ کہ بطور مسلم سیکولر، ہم اسلام کودلیل ومنطق سے تہی دامن اور معذور دین نہیں سمجھتے کہ اس کو سیکولرمکالمہ کے کسی پلیٹ فارم پہ پیش کرتے ہوئے ہمیں شرم آئے یا شکست خوردگی کا احساس ہو۔ ہمارا دعوی ہے کہ پرامن بقائے باہمی کا مدلل چارٹر۔ صرف دین اسلام میں ہے۔ (مگروہ دینِ اسلام جو قرآن میں مذکور ہے ) ۔

    اس ابتدائی گزارش کے بعد عرض ہے کہ سیکولرزم سے اگر کسی طبقے کو تکلیف ہوتی ہے تو وہ کٹھ ملائیت ہے۔ ہر وہ تحریک جس کی وجہ سے کسی مذہب وعصبیت کے کٹھ ملاؤں کے بزنس پہ اثر پڑتا ہو، وہ ان کے لئے موت وحیات کا معرکہ بن جایا کرتی ہے۔ سیکولرز تو رہے ایک طرف، کٹھ ملا کو تبلیغی جماعت سے بھی اس لئے چڑ محسوس ہوا کرتی تھی کہ وہ بندے اور خدا کے درمیان، کسی دلال اورایجنٹ کی نفی کیا کرتے تھے۔ (چنانچہ، پہلے تبلیغی جماعت کی مخالفت کرکے اور بعد میں اس کو ”ہائی جیک“ کرکے اب اس طرف سے وہ مطمئن ہوچکے ہیں) ۔

    پاکستان کے موجودہ حالات کے تناظر میں، میں اپنے سیکولر احباب کو نصیحت کرتا ہوں کہ جس محفل میں کٹھ ملا تشریف فرما ہو، وہاں کوئی علمی گفتگو نہ کیا کریں۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ وہ دلیل سے مکالمہ کرنے کی بجائے، عوام کے سامنے آپ کو ان کی مقدس شخصیات کا دشمن بنا کرمیدان جیت لے گا۔ یہ اس کا پرانا طریقہ واردات ہے۔

    مجھے اس کا بارہا تجربہ ہوا ہے۔ ایسا ہی ایک واقعہ آپ کے ساتھ شیئر کرتا ہوں۔

    ایک بار محفل میں سیکولرزم پہ گفتگو کرتے ہوئے میں نے عرض کیا کہ ایک سیکولر پارلمنٹ، مقدس کتابوں کے حوالوں پہ نہیں بلکہ دلیل اور زمینی حقائق کی بنیاد پہ فیصلے کیا کرے گی۔ ایک مولانا صاحب نے فوراً فرمایا کہ کائینات کا پہلا سیکولر ابلیس تھا کیونکہ اس نے خدا کی مقدس ہدایت کو بلادلیل ماننے سے انکار کر دیا تھا۔

    عرض کیا حضور، بات کو مقدس حوالہ جات کی طرف نہ لے جایئے کیونکہ ایسے ریفرنسز پر جو مزید سوال اٹھیں گے، وہ آپ سے برداشت نہیں ہوں گے۔

    مولانا کا وار بہرحال کام کرگیا تھا اورحاضرین نے ان پر واہ واہ کے ڈونگرے برسا دیے تھے۔ ہر چہ باداباد، میں نے بات کو آگے بڑھانے کا فیصلہ کیا۔ عرض کیا ”مولانا، مرتد کی سزا اسلام میں کیا ہے؟“۔

    مولانا چوکنے ہو چکے تھے لہذا خوب تول کرجواب دیا ”مرتد کی سزا تو قتل ہے مگرہرکسی کو اس کی اجازت نہیں۔ صرف خلیفہ وقت اس کے قتل کا حکم دے گا“۔

    عرض کیا کہ اگرکبھی مجھے حکومت مل گئی اور میرے سامنے کوئی اسلام سے مرتد شخص لایا گیا تو میں اس کو قتل نہیں کروں گا بلکہ اس کو رائے کی آزادی دوں گا۔

    کہنے لگے ”اس لئے کہ آپ سیکولر ہیں۔ مسلمان حکمران ایسا نہیں کریں گے“۔

    عرض کیا ”تو پھر سوچ لیجیے کہ کائینات کا پہلا سیکولر ابدی حکمران کون تھا جس کے سامنے کائینات کا پہلا مرتد آیا تو اس نے اس کو قتل نہیں کیا تھا؟ “۔

    مولانا تو خیرآئیں بائیں شائیں بھی نہ کر سکے لیکن یہی بات ایک اور دوست کے سامنے دہرائی تو اس نے کہا کہ خدا نے ابلیس کی آزادی رائے کا احترام تھوڑی کیا تھا؟ خدا نے اس کو سزا کے طور پر راندہ درگاہ بھی تو کیا تھا نا؟

    عرض کیا۔ ”ہم لوگ مذہبی حوالوں سے پرہیز کیا کرتے ہیں اس لئے کہ اس سے ہر بات الجھ کر رہ جاتی ہے۔ البتہ میں اس کی توجیہہ یوں کرتا ہوں کہ اپنے باس سے رائے کے اختلاف کے بعد (بلکہ نافرمانی کے بعد) ، اس ملازم کواپنی کمپنی میں رکھنے کا کوئی جواز نہیں تھا تو باس نے اس کواپنی کمپنی سے فائر کر دیا (جو کہ منطقی فیصلہ تھا) ۔ تاہم، اس ملازم نے چونکہ کافی عرصہ سروس کی تھی (ابلیس نے ہزاروں سال عبادت کی تھی) تو“ اینڈ آف سروس ”ایوارڈ کے تحت اس کا منہ مانگا مطالبہ ( یعی دائمی عمر کا تقاضا) پورا کردیا گیا تھا۔ باقی وہ اپنی دلیل میں آج بھی آزاد گھومتا پھرتا ہے۔

    عرض یہ ہے کہ میں اسلام کو سیکولر نظام حیات کا اولیں موسس مانتا ہوں۔ میرا دین ”لا اکراہ فی الدین“ کا ماٹو دیتا ہے۔ اور جو آدمی یہ بھی نہ مانے تو ہماری طرف سے ”لکم دینکم ولی دین“ کی آفر ہے۔

    بات یہ ہے کہ میرا دین، دلیل کامقابلہ دلیل سے کیا کرتا ہے۔ (البتہ تلوار کا مقابلہ تلوار سے بھی کیا کرتا ہے اگر پہل دوسری طرف سے ہوئی ہو۔ پس یہ بھی مبنی بردلیل عمل ہوا) ۔ اور اسی کو سیکولرزم کہتے ہیں ”۔
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  2. آصف اثر

    آصف اثر معطل

    مراسلے:
    2,922
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Busy
    مصنف شائد سیکولرزم کی تعریف سے واقف نہیں البتہ اگر اتنا ہی شوق ہے تو سیکولرزم کے بجائے اسلام ازم کہنا چاہیے۔ صرف مولوی کے ضد میں اس طرح کے معنی گھڑنا حماقت ہے۔
     
    آخری تدوین: ‏اگست 24, 2019
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • دوستانہ دوستانہ × 1
    • متفق متفق × 1
  3. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    10,802
    جھنڈا:
    Pakistan
    مصنف سرسری علم کا حامل لگتا ہے۔۔۔
    ان جیسوں کو ہی ابلیس اپنے چنگل میں پھنسا تا ہے۔۔۔
    ابلیس کی دراز رسی کو بے چارہ انعام سمجھ رہا ہے۔۔۔
    اور اس کی سزا یاد نہیں۔۔۔
    وان عليك اللعنة الي يوم الدين (الحجر)
    یہ حصہ ابتداء پیدائش آدم علیہ السلام سے قیامت کے دن تک ہے۔
    دوسرا حصہ قیامت کے بعد جب لوگ جہنم میں پہنچادئے جائیں گے تو جہنم میں شیطان بھی ہوگا ، لوگ اس سے جھگڑا کریں گے کہ تیری وجہ سے ہم جہنم میں ہیں۔ وہ جواب دے گا:
    وقال الشيطان لما قضي الامر ان الله وعدكم وعد الحق ، ووعدتكم فاخلفتكم ، وماكان لي عليكم من سلطان ، فلا تلوموني ولوموا أنفسكم ، ما انا بمصرخكم وما أنتم بمصرخي ...(ابراهيم)
    یہ سب تمہاری اپنی حرکت ہے ، میں نے تو تمہیں صرف دعوت دی تھی اور وعدہ کیا تھا، تمہیں مجبور نہیں کیا تھا ، اللہ کی طرف سے بھی دعوت تھی اور وعدہ تھا ، لیکن تم نے میری دعوت کو قبول کیا ، اب مجھے ملامت نہ کرو۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 5
    • زبردست زبردست × 1
  4. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    10,802
    جھنڈا:
    Pakistan
    پوری آیت یہ ہے:
    لا إِکْراهَ فِی الدِّینِ قَدْ تَبَیَّنَ الرُّشْدُ مِنَ الْغَیِّ فَمَنْ یَکْفُرْ بِالطَّاغُوتِ وَ یُؤْمِنْ بِاللَّهِ فقد استَمْسَکَ بِالْعُرْوَهِ الْوُثْقی‏ لاَ انْفِصامَ لَها وَ اللَّهُ سَمیعٌ عَلیمٌ
    دین میں زبردستی نہیں۔ سیدھا راستہ گمراہی سے الگ ہوچکا ہے۔ جو بدی کے راستے کا انکار کرے اور اللہ پر ایمان لائے تو اس نے ایسا مضبوط سہارا تھام لیا جس کے ٹوٹنے کا کوئی امکان نہیں۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
    • زبردست زبردست × 1
  5. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    8,738
    خالق اور مخلوق کا تقابل ہی بنیادی طور پر غلط ہے، اگر اسلام کی رُو سے بات کی جائے تو۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
    • متفق متفق × 2
  6. یاقوت

    یاقوت محفلین

    مراسلے:
    320
    موڈ:
    Breezy
    میرا بس ایک سوال ہے کہ سیکولر ازم کی بنیاد "" اظہار آزادی رائے"" ہے۔کچھ عرصہ قبل میں نے خود ایکسپریس اخبار میں پڑھا تھا کہ ایک فرانسیسی کامیڈین نے ایک محفل میں ایک لطیفہ سنایا جس میں یہودیوں پر بھی مزاح تھا مزے کی بات یہ تھی کہ خود فرانسیسی صدر (آنجہانی یعنی سابقہ) نے ایکشن لیتے ہوئے اس کامیڈین پر پابندی لگا دی میں سوچتا ہوں تب کہاں تھی اظہار آزادی رائے۔خاکم بدہن حضورﷺ کے کارٹون بنیں اور اظہار آزادی رائے کا ڈھول پیٹا جائے اور ایک شخص ایک نجی محفل میں ایک لطیفہ سنادے تو اس پر پابندی ؟؟؟؟؟؟ ہائے اقبال کیا کہہ گئے آپ
    جو شاخ نازک پہ بنے گاآشیاں ناپائیدار ہوگا۔ محض سیکولر ازم کا ڈھنڈورا پپٹنے سے بات نہیں بننے والی۔ میں نے پہلے بھی ایک مراسلے میں آپ سے عرض کیا تھا کہ سوڈان میں جب عیسائیوں نے الگ ریاست کا مطالبہ کیا تو کتنی دیر لگی ریاست کو تقسیم ہونے میں ؟؟؟؟ فلسطین ،کشمیر سمیت بہت سارے اسلامی ممالک دہائیوں سے آگ میں جل رہے ہیں وہاں کیوں نہیں راتوں رات قراردادیں پاس ہوتیں اور ان پر زبردستی عمل کروایا جاتا؟؟؟ہر کسی کو اپنی سمت درست کرنی ہوگی کہ ہمیں کونسا راستہ چنناہے؟؟؟ کیا انصاف کا معیار یہی ہے؟؟؟ کیا زمانے میں پنپنے کی یہی باتیں ہیں؟؟؟؟؟اور حضرت علامہ اقبال مغربی تہذیب کی اندرونی حالت کا بتا کر گئے ہیں ""چہرہ روشن اندرون چنگیز سے تاریک تر۔۔۔
    آج آپ مسلم دنیا پر بس اک طائرانہ نظر ڈال کر دیکھ لیں تو آپ کو اقبالؒ کی کہی بات کیا نظر نہیں آئے گی؟؟؟ تو پھر کہاں کی مساوات ؟؟ کہاں کا انصاف؟؟؟ کہاں کے حقوق ؟؟؟ کہاں کے بلند و بانگ دعوے ؟؟؟ اور کہاں کی اظہار آزادی رائے؟؟؟؟؟؟؟
     
    آخری تدوین: ‏اگست 24, 2019
    • زبردست زبردست × 3
  7. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    10,802
    جھنڈا:
    Pakistan
    صریح جھوٹی روایت!!!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • پر مزاح پر مزاح × 1
    • متفق متفق × 1
  8. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    8,738
    یہاں غالباََ خدائے واحد کو سیکولر 'حکمران' قرار دینے کی کوشش کی جا رہی ہے۔ ارے بھئی، جب خدا کا تصور آ گیا تو پھر، یہ معاملہ مذہب کی ڈومین میں چلا گیا۔ اب یہاں سیکولرازم کی گنجائش کہاں!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
    • زبردست زبردست × 2
    • متفق متفق × 1
  9. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    10,802
    جھنڈا:
    Pakistan
    یہ سراسر شر پھیلانے کا نظریہ ہے جس کی کوکھ سے کوڑھ کی کاشت ہوتی ہے!!!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  10. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    10,802
    جھنڈا:
    Pakistan
    باطل کے رد کرنے کو تکلیف نہیں کہتے۔۔۔
    تکلیف اس کو کہتے ہیں جو باطل کے سر پر بجتی ہے!!!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • زبردست زبردست × 1
  11. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    10,802
    جھنڈا:
    Pakistan
    کون سا بزنس؟؟؟
    کیا زد پڑی؟؟؟
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  12. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    10,802
    جھنڈا:
    Pakistan
    ایک صریح اور من گھڑت جھوٹ!!!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • متفق متفق × 1
  13. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    10,802
    جھنڈا:
    Pakistan
    شاباش۔۔۔
    اب آیا اونٹ پیاڑ کے نیچے!!!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • پر مزاح پر مزاح × 2
  14. یاقوت

    یاقوت محفلین

    مراسلے:
    320
    موڈ:
    Breezy
    انتہائی معذرت کے ساتھ محترم میں آپ کا مدعا نہیں سمجھ پایا؟؟؟؟
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  15. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    10,802
    جھنڈا:
    Pakistan
    سیکولر ازم کو کہا ہے!!!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  16. یاقوت

    یاقوت محفلین

    مراسلے:
    320
    موڈ:
    Breezy
    میری کم علمی کی حدتک تبلیغی جماعت کے بانی مولانا الیاس صاحب عالم دین انکے بعد انکے بیٹے(غالباََ مولانا محمد یوسف) امیر بنے جوکہ عالم دین تھے اور شیخ الحدیث مولانا زکریا کاندھلوی صاحب کا نام تو کسی تعارف کا محتاج نہیں آپ نے اپنی ساری زندگی تبلیغ میں لگا دی۔ تو کونسے علماء نے مخالفت کی جب کہ بنانے والے ہی علماء تھے؟؟؟
     
    • متفق متفق × 2
    • زبردست زبردست × 1
  17. یاقوت

    یاقوت محفلین

    مراسلے:
    320
    موڈ:
    Breezy
    زبردست (زبرکے اوپر دولاکھ زبریں) کیا کہنے واہ جی واہ معرکہ مار لیا آپ نے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  18. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    10,802
    جھنڈا:
    Pakistan
    صاحب محض پروپیگنڈے پر مشتمل مضمون ہے جیسا کہ ان لوگوں کا وطیرہ ہے۔۔۔
    شر کی پھلجھڑیاں چھوڑتے رہو کوئی نہ کوئی ان جیسا ہم جنس ان کے جال میں پھنس ہی جاتا ہے!!!
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
    • متفق متفق × 1
  19. یاقوت

    یاقوت محفلین

    مراسلے:
    320
    موڈ:
    Breezy
    عشق کی تيغ جگردار اڑا لی کس نے
    علم کے ہاتھ ميں خالی ہے نيام اے ساقی
    سينہ روشن ہو تو ہے سوز سخن عين حيات
    ہو نہ روشن ، تو سخن مرگ دوام اے ساقی
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  20. محمداحمد

    محمداحمد لائبریرین

    مراسلے:
    21,673
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Depressed
    مصنف یا تو خود کنفیوز ہیں یا دوسروں کا "کنفیوزن" میں مبتلا کرنے کا عزم رکھتے ہیں۔
     
    • پر مزاح پر مزاح × 3
    • متفق متفق × 2

اس صفحے کی تشہیر