سلیم احمد کیا محبت میں مجھے طالع بیدار ملا - سلیم احمد

فرحان محمد خان نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏مئی 23, 2018

  1. فرحان محمد خان

    فرحان محمد خان محفلین

    مراسلے:
    2,138
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheeky
    کیا محبت میں مجھے طالعِ بیدار ملا
    دل ملا ، جان ملی ،درد ملا ، یار ملا

    اپنی تنہائی کے اندوہ میں رہتے بستے
    میری خاموش وفا کو لبِ اظہار ملا

    دل کو اقرارِ محبت کی تمنا نہ رہی
    ایسا اس شوخ کو پیرایہءِ انکار ملا

    نیند آئی تو تجھے خواب میں لے کر آئی
    کیا شبِ ہجر مجھے طالعِ بیدار ملا

    جاگتے شہر کے کوچوں میں جسے بھی دیکھا
    اپنے ہی خواب کے زنداں میں گرفتار ملا

    فیض پہونچا ترے گیسو کے پرستاروں کو
    حشر کی دھوپ میں اک سایہءِ دیوار ملا

    غم کا مضمون سناتا ہے اگر ان کو سلیم
    اس میں کچھ اور بھی تو لذتِ گفتار ملا​
    سلیم احمد
     
    آخری تدوین: ‏مئی 23, 2018

اس صفحے کی تشہیر