کس بلڈ گروپ والوں کو کرونا وائرس کا زیادہ خطرہ ہے۔

La Alma نے 'ویڈیوز (غیر سیاسی و غیر مذہبی)' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏مارچ 24, 2020 7:26 شام

  1. La Alma

    La Alma محفلین

    مراسلے:
    1,893

    یعنی ہم تو گئے۔:(
     
    • غمناک غمناک × 2
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  2. La Alma

    La Alma محفلین

    مراسلے:
    1,893
  3. زاہد لطیف

    زاہد لطیف محفلین

    مراسلے:
    204
    اللہ سب بہترکرے گا۔ پریشان ہونے کی قطعی ضرورت نہیں۔ احتیاط جاری رکھیں۔
     
    آخری تدوین: ‏مارچ 24, 2020 7:42 شام
    • دوستانہ دوستانہ × 2
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  4. محمد وارث

    محمد وارث لائبریرین

    مراسلے:
    25,874
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Depressed
    اربوں کی آبادی اور لاکھوں مریضوں میں سے چند سو کی تعداد لے کر کوئی نتیجہ اخذکر لینا تو خیر درست نہیں ہے اور نہ ہی نتائج میں کوئی اتنا بڑا فرق ہے کہ جس سے کوئی نتیجہ اخذ کیا جا سکے، یعنی ایک ہسپتال میں 1775 مریضوں میں 38% کا بلڈ گروپ اے اور 26% کا گروپ او، دوسرے ہسپتال میں 113 مریضو ں میں 40% اے اور 25% او، جب کہ تیسرے ہسپتال میں 285 مریضوں میں 29 % اے اور 28% او گروپ۔ سنسنی خیز یا پھر توجہ حاصل کرنے والی رپورٹ ہی ہے۔ :)
     
    • متفق متفق × 3
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  5. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    9,923
    فوری طور پر دس بارہ غزلیں کہنے کی منت مان لیجیے۔ اسٹے لینے کی کوشش کیجیے۔
     
    • پر مزاح پر مزاح × 5
  6. La Alma

    La Alma محفلین

    مراسلے:
    1,893
    جزاک اللہ‎!
    خدا سب کو اس وبا سے محفوظ رکھے۔ آمین۔
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
    • متفق متفق × 1
  7. La Alma

    La Alma محفلین

    مراسلے:
    1,893
    یعنی ہم بال بال بچ گئے۔ :)
    آپ درست کہہ رہے ہیں۔ معمولی اعداد و شمار سے کوئی حتمی نتیجہ اخذ کرنا واقعی انتہائی مشکل ہے۔ اس رپورٹ میں مریض کی عمر، عمومی صحت، ہائیجن کی صورتحال، احتیاطی تدابیر اور دیگر کئی عوامل کو مکمل طور پر نظر انداز کیا گیا ہے۔ ویسے بھی کسی کنٹرولڈ انوائرونمنٹ میں ابھی اس وائرس پر ایسی کوئی تحقیق نہیں کی گئی۔
    بلڈ گروپس اور بیماریوں کا یقینی طور باہمی تعلق بھی ہوتا ہے۔ لیکن یہ ایک انتہائی پیچیدہ جنیاتی نظام کا حصہ ہے۔ بلڈ گروپ اینٹیجنز بھی بعض اوقات کئی موروثی بیماریوں کا سبب ہو سکتے ہیں۔ کسی مخصوص بلڈ گروپ میں Rh factor کے پازیٹو یا نیگیٹو ہونے سے بھی نومولود بچہ مختلف بیماریوں جیسے اینیمیا، یرقان، دماغ میں پانی کا بھر جانا وغیرہ کا شکار ہو سکتا ہے۔ جنیٹک سسٹم چونکہ کافی کمپلیکس ہوتا ہے لہذا اتنی آسانی سے کوئی رائے قائم نہیں کی جا سکتی_
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • متفق متفق × 1
  8. La Alma

    La Alma محفلین

    مراسلے:
    1,893
    غزلیں تو ہم کہہ لیں لیکن اگر کرونا ہمیں داد دینے آ گیا تو ۔۔۔:)
     
    • پر مزاح پر مزاح × 4
  9. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    9,923
    آپ کمال بے نیازی سے کہہ دیجیے گا،

    داد و تحسین کا یہ شور ہے کیوں
    ہم تو خود سے کلام کر رہے ہیں
     
    آخری تدوین: ‏مارچ 25, 2020 2:46 شام
    • زبردست زبردست × 1
    • دوستانہ دوستانہ × 1

اس صفحے کی تشہیر