چند اقتباسات - میرا مطالعہ

محمد تابش صدیقی نے 'مطالعہ کتب' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جنوری 11, 2020

  1. عمار نقوی

    عمار نقوی محفلین

    مراسلے:
    402
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Bookworm
    ہاؤسنگ سوسائٹی تو مجھے یاد پڑتا ہے میرے لیپ ٹاپ میں ہے۔تلاش کرتا ہوں ملی تو ارسال کر دوں گا
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  2. سیما علی

    سیما علی لائبریرین

    مراسلے:
    10,000
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    بڑی نوازش ۔۔مجھے یہ پڑھے بہت عرصہ ہو ا لیکن جتنی یاد ہے یہ یقیننا انڈیا سے آنے والے لوگوں کے متعلق لکھی گئی بٹیا جنکا تعلق انڈیا کے انتہائی معتبر گھرانے سے ہوتا ہے لیکن پاکستان آکر بے حد تکالیف کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔۔۔۔
    جیتے رہیے ڈھیروں دعائیں۔۔۔:)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  3. سیما علی

    سیما علی لائبریرین

    مراسلے:
    10,000
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    غم روزگار نے ایم بی اے اور ماسڑز تو کروا دیا ڈپلومہ آئی بی پی بھی پر بس یہ خواب ہی رہ گیا:crying3:
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  4. صابرہ امین

    صابرہ امین لائبریرین

    مراسلے:
    1,223
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    آداب
    تابش بھائ ،
    "سفر نصیب از مختار مسعود" کیا محفل میں کہیں موجود ہے ۔ ۔ پی ڈی ایف کی صورت میں ۔ ۔ ۔ رہنمائ کیجیئے ۔ ۔ شکریہ
     
  5. صابرہ امین

    صابرہ امین لائبریرین

    مراسلے:
    1,223
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    واہ واہ ۔ ۔ ۔ کتنی ساری سچائیاں ایک ساتھ ۔ ۔
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  6. صابرہ امین

    صابرہ امین لائبریرین

    مراسلے:
    1,223
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    سیما جی،
    "آگ کا دریا"، "چاندنی بیگم" اور میرے بھی صنم خانے" تو سمجھ آ گئیں مگر "کار جہاں دراز ہے" سمجھنے میں واقعی مشکل ہے ۔ ۔ عرصہ پہلے کوشش کی پر کچھ بہت دقیق معلوم ہوئ ۔ ۔ ۔ ہندی زبان پر عبور نہیں اس لیئے ۔ ۔ اب دوبارہ شروع کی ہے ۔ ۔

    آپ کا ذوق خاصا عمدہ ہے ۔ ۔
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  7. سیما علی

    سیما علی لائبریرین

    مراسلے:
    10,000
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    صابرہ جی!
    جیتی رہیے،خوش رہیے،
    قرة العين حيدر شروع میں آپکو مشکل لگیں گی پھر آہستہ آہستہ آپکو سمجھ میں آنے لگیں گی تو آپکو لطف آئے گا۔ ارے باذوق لوگ تو اردو محفل میں ہم تو ادنیٰ سے لوگ ہیں ہم کیا اور ہمارا ذوق کیا۔
    بہت اچھا لگتا ہے آپ سے بات کرکے۔۔:)
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
    • متفق متفق × 1
  8. سیما علی

    سیما علی لائبریرین

    مراسلے:
    10,000
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    بڑا اِنسان وہی ہوتا ہے جو دوسروں کے سارے تضاد، اُن کی طبیعتوں کا فرق، حالات، خیالات سارے رنگوں کو خوش دلی سے قبول کرے۔ مسلک مختلف ہو تو اپنا مسلک چھوڑے بِنا دوسرے کے اعتقادات کی تعظیم کرتا رہے۔ کلچر مختلف ہو تو اعتراضات کیے بغیر دوسرے کے کلچر کو بھی اچھا سمجھتا رہے، رنگ، نسل، طبقاتی اُونچ نیچ، لباس، زبان غرضیکہ زیادہ سے زیادہ تضاد اور فرق کو زِندگی کا حصہ اور اِنسان کو اِنسان سے ممیّز کرنے کی سہولت سمجھ لے۔ اِن امتیازات کی وجہ سے نفرت کا شکار نہ ہو۔

    (بانوقدسیہ کے افسانے "کتنے سوسال"سے اقتباس)
     
    • زبردست زبردست × 1
    • متفق متفق × 1
  9. سیما علی

    سیما علی لائبریرین

    مراسلے:
    10,000
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool


    جہنم کی آگ


    پہاڑ کی کھوہ میں ایک فقیر رہتا تھا جو دن رات عبادت میں مصروف رہتا تھا اس کے ساتھ ایک بالکا بھی تھا۔ فقیر حقہ پینے کا شوقین تھا، اس لیے اس نے اپنے بالکے کو حکم دے رکھا تھا ہر وقت آگ کا انتظام رکھے۔ ایک روز آدھی رات کے وقت فقیر نے بالکے کو حکم دیا کہ چلم بھر دے۔ بالکے نے دیکھا کہ بارش کی وجہ سے آگ بجھ چکی تھی۔ اتفاق سے ماچس بھی ختم ہو چکی تھی۔ بالکا گھبرا گیا کہ اب کیا کرے۔

    اس نے فقیر سے کہا "جناب آگ تو بجھ چکی ہے، ماچس ہے نہیں کہ سلگا لوں، بتایئے اب کیا کروں؟" فقیر جلال میں بولا "ہم تو چلم پیے گے چاہے آگ جہنم سے لاؤ"

    بالکا چل پڑا چلتے چلتے جہنم کے صدر دروازے پر جا پہنچا دیکھا کہ صدر دروازے پر ایک چوکیدار بیٹھا اونگھ رہا ہے۔ بالکے نے اسے جھنجھوڑا پوچھا "کیا یہ جہنم کا دروازہ ہے؟" چوکیدار بولا "ہاں یہ جہنم کا دروازہ ہے۔" بالکے نے کہا "لیکن یہاں آگ تو دکھائی نہیں دیتی" چوکیدار نے کہا "ہر جہنمی اپنی آگ اپنے ساتھ لاتا ہے"

    تلاش۔۔۔۔۔۔ ممتاز مفتی
     
    • زبردست زبردست × 1
  10. سیما علی

    سیما علی لائبریرین

    مراسلے:
    10,000
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    میں سوچتا ہوں محمد صلی اللہ علیہ وسلم جو دو جہانوں کے بادشاہ تھے۔ ان کا چولہا ٹھنڈا کیوں رہتا تھا؟ وہ چٹائی پر کیوں سوتے تھے؟ اور ایک کچے مکان میں کیوں رہتے تھے۔ کھانے کے لیے ان کے چنگیر میں صرف دو کھجوریں ہوتی تھیں۔ کھانے لگتے تو دروازہ بجتا۔

    ‘‘میں بھوکا ہوں‘‘ اور وہ ایک کھجور سائل کو دے دیتے اور خود ایک ہی کھا لیتے۔ میں سوچتا ہوں آپ جو دو عالم کے بادشاہ تھے انہوں نے کیوں غربت کو منتخب کیا؟

    کیا آپ صلی اللہ علیہ وسلم نعوذ باللہ کم فہم‘ کم عقل یا کم علم تھے؟ پھر؟ اگر وہ عقلِ کل تھے تو ہمیں ماننا پڑے گا کہ غربت میں کوئی بڑی عظمت ہے۔ ورنہ حضور صلی اللہ علیہ وسلم کبھی غربت منتخب نہ کرتے. عمامیت میں کوئی بڑی خوبی ہے ورنہ عمومیت کی زندگی بسر نہ کرتے۔ عام لوگوں جیسا لباس استعمال نہ کرتے۔ بوریا نشین نہ ہوتے اور ایک عام سے کچے مکان میں رہائش نہ رکھتے۔

    اقتباس :ممتاز مفتی کی کتاب "تلاش" سے
     
  11. عمار نقوی

    عمار نقوی محفلین

    مراسلے:
    402
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Bookworm
    لو جی ہم سمجھتے تھے یہ ہمارے گاؤں کی بگڑی ہوئی مخلوط اردو-ہندی کا جملہ ہے۔آج پتہ چلا یہ تو دہلی کی ٹکسالی اردو کا محاورہ ہے۔
     

اس صفحے کی تشہیر