پاکستان سٹیزن پورٹل ایپلی کیشن کی ورلڈ گورنمنٹ سمٹ میں دوسری پوزیشن

جاسم محمد نے 'انفارمیشن ٹیکنالوجی کی دنیا' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏فروری 13, 2019

  1. زیک

    زیک محفلین

    مراسلے:
    38,724
    جھنڈا:
    UnitedStates
    موڈ:
    Bookworm
    پرمزاح
     
  2. سعدیہ افضال

    سعدیہ افضال محفلین

    مراسلے:
    62
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    یہ آپکا ذاتی تجربہ ہے یا پھر فیس بُک سے کاپی پیسٹ والا کام؟
     
    • غیر متفق غیر متفق × 2
  3. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    23,807
     
  4. سعدیہ افضال

    سعدیہ افضال محفلین

    مراسلے:
    62
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    یہ لائن بھی تو کاپی پیسٹ ہوسکتی ہے۔ اصل میں ہمارے سوشل میڈیا کا جہاں بہت فائدہ ہے وہیں یہ نقصان بھی ہے کہ بلا تحقیق بات کو آگے پھیلا دیا جاتا ہے۔ اگر یہ وارث صاحب کا ذاتی تجربہ ہے تو بہت اچھی بات ہے، اور اگر یہ ذاتی تجربہ نہیں تو اس پر یقین کرتے ہوئے تھوڑا ڈر محسوس ہوتا ہے کیونکہ بحرحال ہمارے ادارے ایسے نہیں کہ اتنی جلدی ان سے کوئی اچھی امید رکھی جائے۔
     
  5. محمد تابش صدیقی

    محمد تابش صدیقی منتظم

    مراسلے:
    25,313
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    اگر آپ وارث بھائی سے واقف ہوتیں تو یہ سوال نہ کرتیں۔
    وارث بھائی اور کاپی پیسٹیے دو مختلف دنیاؤں کے باسی ہیں۔ :)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • زبردست زبردست × 1
    • دوستانہ دوستانہ × 1
    • متفق متفق × 1
  6. محمد وارث

    محمد وارث لائبریرین

    مراسلے:
    26,564
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Depressed
    جی اپنا ہی تجربہ ہے، انتہائی ذاتی!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
  7. محمد وارث

    محمد وارث لائبریرین

    مراسلے:
    26,564
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Depressed
    یقین تو مجھے بھی نہیں آیا تھا اور نہ ہی میرے بیوی بچوں کو (ہم میاں بیوی نے تحریک کو ووٹ دیا تھا لیکن تینوں بچے کٹر نون لیگی ہیں اور "تبدیلی آ گئی" کے نام پر اپنی ماں کو خوب تنگ کرتے ہیں، میرے منہ پر تو لحاظ کر جاتے ہیں لیکن سنا ہے کہ بعد میں آوازے کستے ہیں)۔

    اور اتنے دن ہو گئے میں نے اسے کہیں شیئر بھی نہیں کیا تھا سوائے دفتری کولیگز کو سنانے کو لیکن یہ تھریڈ دیکھ کر سوچا کہ لکھ ہی دوں۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
    • دوستانہ دوستانہ × 1
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  8. محمدصابر

    محمدصابر محفلین

    مراسلے:
    7,159
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Brooding
    میں ہمیشہ اس طرح کی ایپس اور سہولیات سے فائدہ اٹھانے کی کوشش کرتا ہوں۔ 10 نومبر کو روٹیاں خریدنے تنور پر پہنچا تو نیا نرخنامہ لگا ہوا تھا جو 11 نومبر سے نافذ ہو رہا تھا ۔ قیمتوں میں 20 سے 25 فیصد اضافہ تھا۔ اسی دن ایپ انسٹال کی اورلکھا کہ قیمتوں میں اس اضافے کو روکا جائے یا کم کیا جائے۔ 10نومبر کو یہ شکایت کمشنر کے پاس پہنچی جس نے اسی وقت اسے ڈپٹی کمشنر کے حوالے کر دیا۔ 14 نومبر کو ڈپٹی کمشنر صاحب نے اسے اے ڈی سی کے حوالے کرتے ہوئے لکھا کہ تین دن میں ضروری اقدامات کیے جائیں۔ 17 جنوری کو اے ڈی سی صاحب نے اسے اسسٹنٹ کمشنر کے حوالے کیا اور لکھا کہ تین دن میں اسے مثبت طور پر دیکھیں۔ 23 جنوری کو اسسٹنٹ کمشنر صاحب لکھتے ہیں کہ قیمتوں میں کمی کی ڈرائیو پہلے ہی چل رہی ہے اور جلد یہ مسئلہ حل ہو جائے گا اور شکایت گزار کو چاہیے کہ وہ اس دکان کا پتہ بتائے۔
    بہرحال ایک ہفتہ پہلے صرف سادہ نان کی قیمتوں میں کمی کر دی گئی ہے۔ اور روغنی نان و دیگر نان جو 20 روپے میں دستیاب تھے وہ اب 25 کے مل رہے ہیں۔

    28 جنوری کو میں نے ایک اور کمپلینٹ درج کروائی جس میں لکھا کہ گوجرانوالہ میں بنائے گئے سگنل لیس برج کے ساتھ پیڈسٹیرین برجز کی تعمیر کے لئے بنیادوں کی کھدائی کے بعد سڑک کی مرمت نہیں کی گئی۔ جس سے ہر طرف سے آنے والی گاڑیاں پل پر چڑھنے اور اترنے سے پہلے ان کھڈوں سے ٹکراتی ہیں ۔ لہذا اس کی مرمت کی جائے۔ 29 جنوری کو سیکرٹری کمیونیکشن اور ورکس نے اس کو چیف انجینئر پنجاب ہائی وے ڈیپارٹمنٹ کو سونپ دیا۔ جس نے اسی دن ایگزیکٹو انجینئر ہائی وے ڈویژن گوجرانوالہ 1 کے حوالے کر دیا۔ 31 جنوری کو اس نے لکھا کہ یہ ہائی وے روڈ کنسٹرکشن ڈویژن کا کام ہے۔ اور آج اس نے دوبارہ لکھا ہے کہ یہ ریلیف مجھے نہیں دیا جا سکتا ہے۔ اور ایپلیکشن بند کر دی ہے۔ اب میں سوچ رہا ہوں۔ کہ متعلقہ محکمہ کو خود ہی گوجرانوالہ میں تلاش کر کے ایک نئی درخواست دفتر بھجوا دوں۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
    • معلوماتی معلوماتی × 2
  9. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    10,183
    زبردست! کمال است! :) جب بھی کوئی اچھا کام کرے تو ستائش لازم ہے ۔۔۔!
     
    • متفق متفق × 2
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  10. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    23,807
    متفق۔ یہ شکایتی ایپ ہے، عوام اسے فرمائشی ایپ نہ سمجھے۔ اصل نکتہ یہ ہے کہ تاریخ میں پہلی بار وزیر اعظم کے دفتر کا عام عوام سے براہ راست رابطہ قائم ہوا ہے۔ جو کہ نہایت خوش آئین بات ہے۔ ترقی یافتہ جدید مغربی ممالک کو بھی اس ایپ جیسی سہولت میسر نہیں ہے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  11. سعدیہ افضال

    سعدیہ افضال محفلین

    مراسلے:
    62
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    لیکن پوچھنے میں حرج بھی کوئی نہیں، تصدیق ہوجائے تو اچھا رہتا ہے۔ ویسے بھی ابھی شاید ایک ماہ بھی نہیں ہوا مجھے اس فورم میں تو کیسے تمام احباب کو جان سکتی ہوں :)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  12. سعدیہ افضال

    سعدیہ افضال محفلین

    مراسلے:
    62
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    بہت خوب۔۔۔ بچوں کو بھی آہستہ آہستہ سمجھ آجائے گی انشاءاللہ۔ 70 سال کی خرابیوں کو درست سمت دینے کے لیے بھی کم سے کم 4 سے 5 سال لگ جائیں گے۔
    اللہ پاکستان کے حق میں سب بہتر کرے گا انشاءاللہ۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  13. سعدیہ افضال

    سعدیہ افضال محفلین

    مراسلے:
    62
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    تصدیق کا شکریہ، بس پوچھنے کا مقصد یہ تھا کہ اگر میں نے آگے بیان کرنا ہو تو میرے پاس ایک گواہی موجود ہو۔ :)
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
  14. سعدیہ افضال

    سعدیہ افضال محفلین

    مراسلے:
    62
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    ویسے میرا خیال ہے مجھے بھی یہ ایپ انسٹال کر لینی چاہیے۔۔۔۔۔ 12 سال سے زیرِ تعمیر اسپتال کی شکایت بھی ہونی چاہیے۔ جہاں 12 ماہ میں میٹرو بن جائے وہاں 12 سال سے ایک اسپتال کو گرانے کے بعد دوبارہ تعمیر نہ کیا جا سکے تو اس سے بڑی زیادتی اور کیا ہوگی۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
  15. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    23,807
    عجیب مسئلہ ہے۔ جن کی شکایات حل ہو رہی ہیں وہ کہہ رہے ہیں ایپ ٹھیک کام کر رہی ہے۔ جن کی حل نہیں ہو رہی وہ کہہ رہے ہیں ایپ خراب ہے
     
  16. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    23,807
    [​IMG]
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  17. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    10,183
    گو کہ اس ایپ کو کبھی استعمال نہیں کیا ہے تاہم عام طور پر عامۃ الناس کی رائے بہت اچھی ہے۔ کم از کم حکومت کی طرف سے اس طرح کے آپشن فراہم کر دینا بھی ایک مثبت اقدام ہے جس کی ستائش نہ کی جائے تو بلاشبہ زیادتی ہو گی۔ آہستہ آہستہ یہ ایپ مزید بہتر ہوتی جائے گی؛ امکان غالب ہے۔
     
    • متفق متفق × 1
  18. زیک

    زیک محفلین

    مراسلے:
    38,724
    جھنڈا:
    UnitedStates
    موڈ:
    Bookworm
    یعنی اب آسٹریلیا کے ہسپتال بھی اس سسٹم کا حصہ بن گئے ہیں؟
     
  19. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    23,807
    غالبا ان صاحب کو آسٹریلیا میں پاکستانی سفارت کاروں سے مدد کی ضرورت تھی جو اس ایپ کے ذریعہ پوری ہو گئی۔
     
    • متفق متفق × 1
  20. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    23,807
    پاکستان سیٹیزن پورٹل کے توسط سے ایک اغوا شدہ بچی بازیاب کروا لی گئی۔ مظلوم ماں کی زبانی سنئے:


    شکایت ملتے ہی وزیر اعظم نے پولیس کو بچی کی فوری بازیاب کا حکم دیا۔ اس پر پنجاب پولیس نے روایتی جھوٹ بولتے ہوئے یہ کہہ کر کیس بند کر دیا کہ بچی بازیاب ہو چکی ہے۔ جس پر وزیر اعظم خود چل کر لاہور آئے اور پنجاب حکومت کی کھنچائی کی۔ جس کے بعد بچی بازیاب کروا لی گئی۔
    جو قوم اس وقت حکومتی نا اہلی کا رونا رو رہی ہے وہ سابقہ حکمرانوں سے کیوں نہیں پوچھتے جو ملک کا ہر ادارہ اور محکمہ اتنا کرپٹ چھوڑ کر گئے ہیں کہ ان میں بھرتی افسران کو ملک کے وزیر اعظم سے جھوٹ بولتے کوئی شرم محسوس نہیں آتی۔ لیکن پھر بھی عوام کی ڈھٹائی دیکھیں کہ توقع کئے بیٹھے ہیں کہ نئی حکومت اسی فرسودہ اور کرپٹ نظام سے ان کو ریلیف فراہم کرے۔
     

اس صفحے کی تشہیر