شاذ تمکنت وفا کا ذکر ہی کیا ہے جفا بھی راس آئے ۔ شاذ تمکنت

عندلیب نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏نومبر 17, 2015

  1. عندلیب

    عندلیب محفلین

    مراسلے:
    15,022
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Amused
    وفا کا ذکر ہی کیا ہے جفا بھی راس آئے
    وہ مسکرائے تو جرمِ خطا بھی راس ائے

    وطن میں رہتے ہم یہ شرف ہی کیا کم ہے
    یہ کیا ضرور کہ آب و ہوا بھی راس آئے

    ہتھیلیاں ہیں تری لوحِ نور کی مانند
    خدا کرے تجھے رنگِ حنا بھی راس آئے

    دوا تو خیر ہزاروں کو راس آئے گی
    مزہ تو جینے کا جب ہے شفا بھی راس آئے

    تو پھر یہ آدمی خود کو خدا سمجھنے لگے
    اگر یہ عمرِ گریزاں ذرا بھی راس آئے

    اب اس قدر بھی نہ کر جستجوئے آبِ بقا
    گلِ ہنر ہے تو بادِ فنا بھی راس آئے

    یہ ترا رنگِ سخن ترا بانکپن اے شاذ
    کہ شعر راس تو آئے انا بھی راس آئے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
    • زبردست زبردست × 3
  2. طارق شاہ

    طارق شاہ محفلین

    مراسلے:
    10,631
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm

    وطن میں رہتے ہیں ہم، شرف یہ ہی کیا کم ہے
    یہ کیا ضرور کہ آب و ہوا بھی راس آئے

    یہ تیرا رنگِ سخن تیرا بانکپن، اے شاذ !
    کہ شعر راس تو آئے انا بھی راس آئے

    :):)
     
    • متفق متفق × 1
  3. عمر سیف

    عمر سیف محفلین

    مراسلے:
    36,612
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Where

اس صفحے کی تشہیر