نیوزی لینڈ کے شہر کرائسٹ چرچ میں دو مساجد پر حملہ، متعدد افراد ہلاک

جاسم محمد نے 'آج کی خبر' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏مارچ 15, 2019

  1. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    12,312
    نیوزی لینڈ نے بحیثیت قوم مسلمانوں اور اسلام کے ساتھ کھڑے ہو کر یہ ثابت کر دیا ہے کہ پوری مغربی دنیا ایک اکائی نہیں ہے۔

    نیوزی لینڈ کی فضاؤں میں اللہ اکبرکی گونج

    سانحہ کرائسٹ چرچ، ہمارے دل ٹوٹے ہیں لیکن ہم نہیں ٹوٹے، خطبہ جمعہ فوٹو: اے ایف پی

    کرائسسٹ چرچ: النورمسجد کے پیش امام نے خطبہ جمعہ میں کہا کہ نیوزی لینڈ کی سوچ کوشیطانی نظریے کے تحت نقصان کی کوشش ناکام بنادی اورنفرت اورانتہا پسندی کوشکست ہوگئی۔

    دنیا بھرکے مسلمانوں سے یکجہتی کرتے ہوئے پورے نیوزی لینڈ کے سرکاری ٹی وی اورریڈیو پرآج براہ راست اذان نشرکی گئی۔ کرائسٹ چرچ کے ہیگلے پارک میں جمعہ کی اذان کے بعد دومنٹ کی خاموشی اختیارکی گئی۔ نمازجمعہ کی ادائیگی کے بعد وزیراعظم جیسنڈا آرڈرن اوردیگروزرا سمیت مختلف مذاہب کے افراد مسلمانوں سے اظہاریکجہتی کے لیے پارک میں موجود رہے۔

    [​IMG]

    [​IMG]

    نیوزی لینڈ میں خطبہ جمعہ میں النورمسجد کے پیش امام نے خطبہ دیتے ہوئے کہا کہ سانحہ کرائسٹ چرچ نیوزی لینڈ کے لیے نئی زندگی ثابت ہوا، نیوزی لینڈ کی سوچ کوشیطانی نظریے کے تحت نقصان کی کوشش ناکام بنادی، نفرت اورانتہا پسندی کوشکست ہوگئی، ہمارے دل ٹوٹے ہیں لیکن ہم نہیں ٹوٹے، نیوزی لینڈ کوتوڑا نہیں جاسکتا، ہم ایک ہیں اورنیوزی لینڈ کےعوام کا اظہاریکجہتی غیرمعمولی ہے۔

    پیش امام نے وزیراعظم نیوزی لینڈ سے اظہاریکجہتی اوراتحاد کا مظاہرہ کرنے پرشکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ اسلام دشمنی ایک دن کی بات نہیں، آپ کی قیادت دنیا بھرکے لیے سبق ہے، کوئی ہمیں تقسیم کرے ہم ایسی اجازت نہیں دیں گے۔

    نیوزی لینڈ کی وزیراعظم نے پارک میں جمعے کی ادائیگی کے بعد مسلمانوں سے اظہاریکجہتی کی اورکہا کہ آج پورا نیوزی لینڈ خوف زدہ ہے جب کہ انہوں نے حضورپاک ﷺ کی حدیث مبارک بھی پڑھ کرسنائی۔
     
  2. خالد محمود چوہدری

    خالد محمود چوہدری محفلین

    مراسلے:
    11,609
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Festive
    انتہائی معذرت خواہ ہوں مجھے پہلے ہی ربط پیش کرنا چاہئیے تھا۔ رب غفور الرحیم مجھےمعاف کرے۔
    {{ PageTitle.title() }}
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  3. خالد محمود چوہدری

    خالد محمود چوہدری محفلین

    مراسلے:
    11,609
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Festive
    جی درست فرمایا تمام اقتباسات اسی ربط سے لئےہیں
     
    آخری تدوین: ‏مارچ 22, 2019
  4. الف نظامی

    الف نظامی لائبریرین

    مراسلے:
    13,975
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    [​IMG]
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • متفق متفق × 1
  5. الف نظامی

    الف نظامی لائبریرین

    مراسلے:
    13,975
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    [​IMG]
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  6. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    12,312
    حملہ آور ساری عمر تنہا جیل میں سڑے گا، نائب وزیراعظم نیوزی لینڈ کا او آئی سی میں خطاب
    ویب ڈیسک 3 گھنٹے پہلے

    [​IMG]
    ترکی کی درخواست پر او آئی سی کا ہنگامی اجلاس استنبول میں طلب کیا گیا (فوٹو : ٹویٹر)

    استنبول: او آئی سی کے اجلاس میں مسلم ممالک اور نیوزی لینڈ کے وزرائے خارجہ نے دہشت گردی کی مذمت کی اور شہداء کو خراج تحسین پیش کیا۔

    بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق ترکی کی درخواست پر آج او آئی سی کا ہنگامی اجلاس استنبول میں ہوا جہاں نیوزی لینڈ کے وزیر خارجہ نے اپنے خطاب کا آغاز السلام علیکم سے کرتے ہوئے کہا کہ مساجد پر حملہ کرنے والے دہشت گرد کو ساری عمر جیل کی سلاخوں کے پیچھے قید تنہائی میں سڑنا ہوگا۔

    اس موقع پر میزبان ملک ترکی کے وزیر خارجہ میولت چاوش اوغلو کا کہنا تھا کہ نفرت آمیز تقاریر، تشدد اور دہشت گردی کے خلاف ہم سب متحد ہیں اور اصولوں کی بنیاد پر ہمیں اپنے عمل اور کردار سے یہ ثابت بھی کرنا ہوگا۔

    وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے او آئی سی کا ہنگامی اجلاس بلانے پر ترکی کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ سانحہ نیوزی لینڈ مغرب میں فروغ پاتے اسلامو فوبیا لہر کی غماز ہے جس کے خلاف متحدہ محاذ تشکیل دینے کی ضرورت ہے۔

    او آئی سی کے سیکریٹری جنرل ڈاکٹر یوسف بن احمد العثیمیں نے کہا کہ دہشت گرد کا کوئی مذہب، فرقہ، رنگ یا نسل نہیں، یہ صرف امن کے دشمن دہشت گرد ہوتے ہیں جنہیں دنیا صرف مشترکہ حکمت عملی کے ساتھ شکست فاش دے سکتی ہے۔
     
  7. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    11,163
    جھنڈا:
    Pakistan
    یہ بات آپ ہماری کس تحریر سے نکال کر لارہے ہیں کہ ہم ہر یہودی عیسائی کو ایسا کہہ رہے ہیں؟؟؟
    ہر قوم میں بروں کے ساتھ اچھے بھی ہوتے ہیں...
    ہماری آنکھوں پر تعصب کی نہیں حقیقت کی پٹی چڑھی ہے...
    تعصب آپ میں ہیں...
    جو لاکھوں مسلمانوں کا قتل عام کرنےوالوں کا نہایت بھونڈے انداز میں دفاع کررہے ہیں!!!
     
    • متفق متفق × 1
  8. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    11,163
    جھنڈا:
    Pakistan
    ہائے بے بس و بے کس اسرائیلی فوج!!!
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  9. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    12,312
    یہ الفاظ آپ کے نہیں ہیں؟
     
  10. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    11,163
    جھنڈا:
    Pakistan
    حملہ آور تو کئی تھے ...
    باقی کہاں ہیں؟؟؟
    واحد حملہ آور کی تصویر کیوں بلر کی گئی؟؟؟
    کیا اصلی قاتل کو فرار کروادیا گیا؟؟؟
    مسجد سے پولیس اسٹیشن دو چار منٹ کے فاصلے پر تھا پھر پولیس آدھے گھنٹے بعد کیوں پہنچی؟؟؟
    ساری سازش شکوک کے دھندلکوں میں چھپی نظر آرہی ہے!!!
     
    • متفق متفق × 1
  11. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    12,312
    اس سانحہ پر اسرائیل نے کاہان کمیشن انکوائری بٹھائی تھی۔ اور چند ماہ بعد ہی رپورٹ پبلک میں جاری کر دی تھی۔ رپورٹ کے مطابق کیمپ میں فلسطینیوں کا قتل عام لبنانی مسیحی دہشت گردوں نے کیا تھا۔ اور چونکہ کیمپ کی حفاظت کی ذمہ داری اسرائیلی فوج کے پاس تھی اس لئے وہ بھی قصور وار ہیں۔ رپورٹ جاری ہوتے ہی اسرائیل میں مظاہرے شروع ہو گئے اور دباؤ میں آکر وزیر دفاع ایریل شیرون کو عہدہ سے استعفیٰ دینا پڑا تھا۔
    کاہان کمیشن رپورٹ
     
  12. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    11,163
    جھنڈا:
    Pakistan
    کبھی مجازا بھی بات کی جاتی ہے...
    جیسے حدیث ہے کہ الکفر ملۃ واحدہ...
    اسلام کے خلاف سارا عالم کفر ملت واحد ہے...
    ان میں اچھے لوگ بھی ہیں لیکن بہت کم...
    کیا صلیبی جنگوں میں سارے عیسائی یہودی اسلام کے خلاف ایک نہیں ہوگئے تھے!!!
     
    • متفق متفق × 1
  13. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    11,163
    جھنڈا:
    Pakistan
    ہاہاہا...
    چت بھی میری پٹ بھی میری!!!
     
    • متفق متفق × 1
  14. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    12,312
    کیا اِس وقت بھی بارہویں صدی عیسوی چل رہی ہے؟
     
  15. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    12,312
    مشرقی پاکستان میں بنگالیوں کے قتل عام پر آج تک کسی وزیر یا فوجی نے استعفیٰ دیا ہے؟ اسرائیل لولی لنگڑی ہی سہی، جمہوریہ تو ہے۔
     
    • زبردست زبردست × 1
  16. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    11,163
    جھنڈا:
    Pakistan
    کیا گرگے وہی نہیں؟؟؟
     
  17. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    11,163
    جھنڈا:
    Pakistan
    جمہوریہ ہونے پر سات خون معاف؟؟؟
     
    • متفق متفق × 1
  18. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    12,312
    نہیں۔ اسرائیل بشمول ہر ملک انسانی حقوق کی خلاف ورزی پر جواب دہ ہے۔ چاہے وہ جمہوریت ہو یا نہ ہو۔
     
  19. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    12,312
    اسلام انسانیت کا درس دیتا ہے، نیوزی لینڈ کی وزیراعظم کا اسلام قبول کرنے کی دعوت پر جواب
    ویب ڈیسک اتوار 24 مارچ 2019
    [​IMG]
    نوجوان نے دوران ملاقات نیوزی لینڈ کی وزیراعظم کو اسلام قبول کرنے کی دعوت دی۔ فوٹو : ویڈیو گریب

    ویلنگٹن: نیوزی لینڈ کی وزیراعظم نے اسلام قبول کرنے کی دعوت دینے والے مسلم نوجوان کو کہا کہ ’ اسلام انسانیت کا درس دیتا ہے اور میرا خیال ہے میں نے وہی کیا ہے۔

    بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق اپنے حسن سلوک، ہمدردانہ رویے اور ذمہ دارانہ برتاؤ سے ساری دنیا کے دل جیت لینے والی نیوزی لینڈ کی وزیراعظم جیسنڈرا آرڈرن سے ایک مسلمان نوجوان نے ملاقات کی اور مسلمانوں کی دلجوئی پر اُن کا شکریہ ادا کرتے ہوئے اسلام قبول کرنے کی دعوت دی۔

    مسلمان نوجوان کی خواہش پر کیوی وزیراعظم نے مسکراتے ہوئے نوجوان کا کندھا تھپتھپایا اور جواب دیا کہ ’ اسلام انسانیت کا درس دیتا ہے اور میرا خیال ہے میں نے اسی پر عمل کیا ہے۔

    مسلم نوجوان نے کہا کہ آپ نے جس طرح زخم خوردہ مسلمانوں کی دلجوئی کی اور ان کا خیال رکھا، یہ دنیا کے دیگر قائدین کے لیے نمونہ عمل ہونا چاہیے۔ میری خواہش ہے مسلم دنیا میں آپ جیسا لیڈر ہو، اس لیے میں آپ کو اسلام قبول کرنے کی دعوت دیتا ہوں۔

    مسلم نوجوان کی نیوزی لینڈ کی وزیراعظم کو دعوت اسلام کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوگئی، جس میں دیکھا جا سکتا ہے کہ قمیض شلوار میں ملبوس وزیراعظم جیسنڈرا آرڈن نے سر پر دوپٹہ لیا ہوا ہے اور نوجوان کی بات کو بغور سن رہی ہیں۔
     
  20. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    12,312
    مغربی ممالک میں انتہائی دائیں بازو کی انتہا پسندی کے رجحان میں اضافے کی وجہ کیا ہے؟

    [​IMG]
    تصویر کے کاپی رائٹGETTY IMAGES
    نیوزی لینڈ کی دو مساجد میں فائرنگ کے نتیجے میں 50 افرد کی ہلاکت اور درجن زخمیوں نے انتہائی دائیں بازو کی شدت پسندی سے متلعق نئے سوالات کو جنم دیا ہے۔

    برطانیہ کے سیکورٹی وزیر نے کہا ہے کہ ’بالکل ممکن‘ ہے کہ برطانیہ میں بھی انتہائی دائیں بازو کا حملہ ہو سکتا ہے اور انھوں نے آن لائن افراد کی بنیاد پرستی پر تشویش کا اظہار بھی کیا ہے۔

    تو اس قسم کی پرتشدد شدت پسندی کس حد تک پھیل چکی ہے؟

    آسٹریلیا اور نیوزی لینڈ
    کرائسٹ چرچ میں ہونے والے حالیہ حملے سے قبل نیوزی لینڈ اور آسٹریلیا دونوں نے کہا تھا کہ ان کی سکیورٹی کو اصل خطرہ اسلام کے نام پر کی جانے والی دہشت گردی سے ہے۔

    اور نیوزی لینڈ سکیورٹی انٹیلیجنس سروس کی حالیہ رپورٹ میں بھی انتہائی دائیں بازو کی شدت پسندی کا کوئی حوالہ نہیں دیا گیا۔

    سال 2017 میں آسٹریلیا کی سکیورٹی انٹیلیجنس آرگنائزیشن نے کہا تھا کہ ملک میں فرقہ ورانہ تشدد انتہائی کم سطح پر موجود ہے تاہم 2016 میں صرف ایک شخص پر انتہائی دائیں بازو کی شدت پسندی کا الزام تھا۔

    رپورٹ میں حملوں کے امکانات کو مسترد نہیں کیا گیا تھا لیکن یہ کہا گیا تھا کہ انتہائی دائیں بازو کے شدت پسند مسلمانوں یا بائیں بازو کی برادری کو نشانہ بنا سکتے ہیں، اور یہ حملے کسی اکیلے شخص یا منظم گروہوں سے منسلک چھوٹے گروپس کی جانب سے کیے جا سکتے ہیں۔

    [​IMG]
    تصویر کے کاپی رائٹAFP
    Image captionمغربی ممالک میں انتہائی دائیں بازو کی انتہاپسندی میں اضافے کے خلاف امریکی شہر نیو یارک میں احتجاج ہو رہا ہے
    یورپ میں انتہائی دائیں بازو کی شدت پسندی
    یورپی یونین کے قانون نافذ کرنے والے ادارے یوروپول نے سنہ 2017 میں دائیں بازو کے پانچ دہشت گردی کے منصوبوں کو ریکارڈ کیا، جو سب برطانیہ میں تھے۔

    یہ پانچ حملے یورپین انٹیلی جنس ایجنسیوں کی جانب سے ریکارڈ کردہ 205 ممکنہ یا کامیاب حملوں میں سے تھے، جن میں 137 ’علیحدگی پسند‘، 24 ’بائیں بازو‘ اور 33 ’جہادیوں‘ کے منصوبے بھی شامل تھے۔

    سنہ 2017 میں دہشت گردی کے الزام میں مجموعی طور پر 1219 مشتبہ افراد کو گرفتار کیا گیا۔ جن میں سے 20 انتہائی دائیں بازو کے شدت پسند جبکہ 705 جہادی تھے۔

    [​IMG]
    دہشتگردی کی عالمی فہرست، ایک سالانہ رپورٹ جسے آزاد ذرائع کے ایک ڈیٹا بیس سے یونیورسٹی آف میری لینڈ میں مرتب کیا گیا، مغربی یورپ کے انتہائی دائیں بازو سے متعلق واقعات کی بھی نگرانی کرتا ہے۔

    اس ڈیٹابیس کے مطابق 2017 میں مغربی یورپ میں دہشتگردی کے 28 واقعات ہوئے جبکہ 2007 میں صرف ایک ایسا واقعہ رونما ہوا تھا۔

    [​IMG]
    برطانیہ
    برطانیہ میں انسداد دہشتگردی کی کمشنر سارہ خان نے برطانوی اخبار آبزرور کو بتایا کہ برطانیہ میں مقیم انتہائی دائیں بازو کے کارکن "منظم، پیشہ ورانہ اور فعال طور پر بھرتی کیے جاتے ہیں‘، تاہم ان کی تعداد ابھی تک جاری نہی کی گئی ہے۔

    تاہم انٹیلی جنس ایجنسیوں نے انکشاف کیا ہے کہ مارچ 2017 تک برطانیہ میں 18 حملوں کو ناکام بنایا گیا جن میں سے چار کی منصوبہ بندی انتہائی دائیں بازو کے شدت پسندوں نے کی تھی۔

    حکومت کے انسداد انتہا پسندی پروگرام ’پریوینٹ‘ کے حوالہ جات کے مطابق اس قسم کی شدت پسندی میں حالیہ برسوں میں اضافہ ہوا ہے۔

    سنہ 2017-18 کے درمیان ملک بھر میں ایسے 7318 کیسز سامنے آئے جن میں سے 1312 کا تعلق انتہائی دائیں بازو سے تھا۔

    [​IMG]
    سنہ 2012-13 کی درمیان انتہائی دائیں بازو کے گروپ کو ملنے والی حمایت میں 300 فیصد اضافہ ہوا جبکہ اسلام کے نام پر انتہا پسندی میں 80 فیصد اضافہ ہوا ہے۔

    جرمنی اور ہالینڈ
    جرمنی میں حکومت نے ’سیاسی حوصلہ افزائی‘ والے جرائم کو ریکارڈ کیا ہے۔

    سنہ 2017 میں اس طرح کے 39505 جرائم ریکارڈ کیے گئے جن میں سے آدھے کیسز کا تعلق دائیں بازو کے نظریات سے تھا، ان میں 1130 پرتشدد کارروائیاں بھی شامل تھیں تاہم زیادہ تر پر تشدد کارروائیوں کا تعلق انتہائی بائیں بازو سے تھا۔

    2017 میں دائیں بازو کے افراد نے پناہ گزینوں کے مراکز پر 300 حملے کیے جو کہ گزشتہ برس سے دو تہائی کم تھے۔

    ہالینڈ کے وزارت داخلہ کا کہنا ہے کہ: ’انتہائی دائیں بازو کے منشور میں عدم تشدد یا معمولی تباہی شامل ہے۔تاہم دائیں بازو کے انتہا پسندوں کو بہت کم تعداد میں تشدد کے لیے تیار کیا جاتا ہے۔‘

    وزارت داخلہ کے ساتھ تحقیق کرنے والی تنظیم اینے فرینک کے مطابق اس نے دائیں بازو کے انتہا پسند گروہوں میں تیزی سے اضافے کی نشاندہی کی ہے جو کہ 2011 میں 90 سے بڑھ کر 2016 کے اختتام تک 250 تک پہنچ چکی ہے۔

    امریکہ
    دہشت گردی کی عالمی فہرست کے مطابق 2002 سے 2017 کے درمیان شمالی امریکہ میں دائیں بازو کی دہشتگردی کے 86 واقعات ہوئے جن میں 62 ہلاکتیں ہوئیں۔

    ان میں سے زیادہ تر ہلاکتیں گزشتہ تین برسوں میں ہوئیں، جن میں سے نو ہلاکتیں 2015 میں جنوبی کیرولینا کے علاقے چارلسٹن میں ایمینوئیل افریقی میتھوسٹسٹ ایپیسکال چرچ میں ایک مسلح شخص کی فائرنگ سے ہوئیں جبکہ 11 ہلاکتیں 2018 میں پٹسبرگ کی ایک عبادت گاہ پر فائرنگ سے ہوئیں۔

    تمام قسم کی انتہا پسندی کا مقابلہ کرنے کے لیے امریکی محکمہ داخلہ سیکورٹی نے 2011 میں ایک قومی حکمت عملی جسے ’انسداد انتہا پسندی‘ کہا جاتا ہے، کا اعلان کیا جس کے لیے ایک کروڑ گرانٹ کا اعلان بھی کیا گیا۔

    سنہ 2018 کے اختتام پر، پٹسبرگ کے قتل عام کے گیارہ دن بعد اس پروگرام کے لیے فنڈز کو منسوخ کر دیا گیا۔

    [​IMG]
    تصویر کے کاپی رائٹGETTY IMAGES
    انتہائی دائیں بازو کی انتہا پسندی کا سراغ لگانا
    رائل یونائیٹڈ سروسز انسٹی ٹیوٹ میں انٹرنیسنل سیکورٹی سروسز کے ڈائریکٹر رفیلیلو پینٹکی کے مطابق تاریخی اعتبار سے مغرب میں دائیں بازو کی دہشت گردی اس قدر منتشر نوعیت کی ہے کہ اس کا سراغ لگانا مشکل ہے۔

    ان کی تنظیم کی تحقیق نے یورپ میں دائیں بازو کے دہشت گردوں کے لئے ’تنہا ذمہ دار‘ ہونے کے رجحان پر روشنی ڈالی ہے جس میں اسلامی انتہاپسندوں کے مقابلے دائیں بازو کی دہشت گردی میں رویے میں قابل ذکر تبدیلیوں کو ظاہر کرنا یا اپنے دوستوں اور خاندان والوں کے ساتھ منصوبوں پر تبادلہ خیال کرنے کا امکان نہیں ہے.

    اعدادوشمار کے مطابق دائیں بازو کے 40 فیصد ’تنہا ذمہ دار‘ اتفاقاً پکڑے گئے جبکہ اسلام کے نام پر دہشت گردی کرنے والے افراد کی اتفاقیہ نشاندہی کی تعداد 12 فیصد ہے۔

    ان کا کہنا ہے کہ ’ہم آن لائن کمیونٹی کے ذریعے ایک دوسرے سے رابطہ کرنے والے افراد کو دیکھ رہے ہیں جس سے انٹیلیجنس ایجنسیوں کو انتہائی دائیں بازو کی دہشت گردی کی نشاندہی کرنے میں مدد مل سکتی ہے۔‘

    تاہم ان کا کہنا ہے: ’(انٹیلیجنس ایجنسیاں) ابھی بھی اسلام کے نام پر انتہا پسندی کے مقابلے میں اسے کم خطرہ سمجھتی ہیں۔‘
    انتہائی دائیں بازو کی انتہا پسندی میں اضافے کی وجوہات
     

اس صفحے کی تشہیر