بشیر بدر ::::::نَظر سے گُفتگُو، خاموش لَب تمُھاری طرح:::::: Dr. Bashir Badr

طارق شاہ نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جنوری 11, 2020

  1. طارق شاہ

    طارق شاہ محفلین

    مراسلے:
    10,626
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm

    غزلِ

    بشیر بدر
    نَظر سے گُفتگُو، خاموش لَب تمھاری طرح
    غزل نے سِیکھے ہیں انداز سب تمھاری طرح

    جو پیاس تیز ہو تو ریت بھی ہے چادرِ آب​
    دِکھائی دُور سے دیتے ہیں سب تمھاری طرح

    بُلا رہا ہے زمانہ، مگر ترستا ہُوں
    کوئی پُکارے مُجھے بے سَبَب تمھاری طرح

    ہَوا کی طرح مَیں بیتاب ہُوں، کہ شاخِ گُلاب​
    لہکتی ہے مِری آہٹ پہ اب تمھاری طرح

    مِثالِ وقت میں، تصوِیرِ صُبح و شام ہُوں اب​
    مِرے وجود پہ چھائی ہے شب، تمھاری طرح

    سُناتے ہیں مُجھے خوابوں کی داستاں اکثر​
    کہانیوں کے پُراسرار لَب تمھاری طرح

    ڈاکٹر بشیر بدر​

     

اس صفحے کی تشہیر