1. اردو ویب کے سالانہ اخراجات کی مد میں فراخدلانہ تعاون پر احباب کا بے حد شکریہ نیز ہدف کی تکمیل پر مبارکباد۔ مزید تفصیلات ملاحظہ فرمائیں!

    $500.00
    اعلان ختم کریں

رئیس امروہوی نظم : بحضرتِ یزادں - رئیس امروہوی

فرحان محمد خان نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏نومبر 4, 2018

  1. فرحان محمد خان

    فرحان محمد خان محفلین

    مراسلے:
    2,095
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheeky
    بحضرتِ یزادں

    حالِ بشر بحضرتِ یزداں کہا گیا
    پوچھیں ملائکہ تو کہو ہاں کہا گیا

    رودادِ بدنصیبیِ آدم سنی گئی
    افسانۂ خرابیِ دوراں کہا گیا
    علمِ بشر پہ جہل کی پھبتی کسی گئی
    دانائے روزگار کو ناداں کہا گیا
    مظلومِ کُن کو ظلم کے طعنے دیئے گئے
    فکر و نظر کو جراَتِ عصیاں کہا گیا
    جوہر طرازِ آئینۂ کائنات کو
    آئینہ دارِ دیدۂ حیراں کہا گیا
    منزل شناس مرحلۂ ہست و بود کو
    عفریتِ مرگ و غولِ بیاباں کہا گیا

    اُف رے ستم طرازیِ قدرت کہ جبر کو
    آزادیِ ارادۂ انساں کہا گیا
    اُف رے فریب کاریِ خلقت کہ خلق کو
    نیرنگ آفرنیشِ دوراں کہا گیا
    آبِ بقا میں لُطفِ بقا کیا کہ موت کو
    زہرِ غمِ حیات کا درماں کہا گیا
    لُطفِ حیات کیا کہ نمودِ حیات کو
    افسونِ جسم و شعبدۂ جاں کہا گیا
    پھر خیر و شر میں فرق کریں بھی تو کس لئے؟
    ہر شر کو خیرِ محض کا عنواں کہا گیا
    صدحیف اے قبیلۂ عرفان و آگہی!
    ہر جہل کو ذریعۂ عرفاں کہا گیا
    افسوس اے مجائدۂ علم و اعتقاد
    ہر وہم کو وسیلۂ ایقاں کہا گیا

    اے کفر! ناز کر کے تجھے بھی بطورِ خاص
    من جملۂ لوازمِ ایماں کہا گیا

    اے شرک مرحبا کہ تجھے بھی بہ احتیاط
    توحید کی حقیقتِ پنہاں کہا گیا
    سامانِ صد تجلی و اسبابِ صد جمال
    پھر بھی نظر کو بے سر و ساماں کہا گیا
    پیغامِ صد تسلّی و پیمانِ صد وصال
    پھر بھی طلب کو مایۂ حرماں کہا گیا
    اک قلبِ درد مند کو بخشا گیا جنوں
    اک جانِ نامراد کو جاناں کہا گیا
    اک حادثے سے ارض کو تشبیہہ دی گئی
    اک واہمے کو گنبدِ گرداں کہا گیا
    کچھ ذرہ ہائے خاک کو چن کر بہ لطف و ناز
    ماہِ منیر و مہرِ درخشاں کہا گیا
    کچھ قطرہ ہائے آب کو لے کر بہ فیض و جود
    گرداب و بحر و ساحل و طوفاں کہا گیا
    تکمیل جب مراحلِ دوزح کی ہو چکی
    ہر مرحلے کو روضۂ رضواں کہا گیا

    عبرت کہ ایک بندۂ ایماں سرشت کو
    زرتشتی و یہود و مسلماں کہا گیا
    حیرت کہ اک مکالمۂ لا کلام کو
    سرِّ زبور و آیۂ قرآں کہا گیا
    لکھنے کو اک صحیفۂ معنیٰ ! لکھا گیا
    کہنے کو ایک دفترِ عرفاں کہا گیا

    لیکن اساسِ علم و خبر معتبر کہاں؟
    سب کچھ بہ ذیل خوابِ پریشاں کہا گیا
    رئیسؔ امروہوی
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • زبردست زبردست × 1

اس صفحے کی تشہیر