1. اردو ویب کے سالانہ اخراجات کی مد میں فراخدلانہ تعاون پر احباب کا بے حد شکریہ نیز ہدف کی تکمیل پر مبارکباد۔ مزید تفصیلات ملاحظہ فرمائیں!

    $500.00
    اعلان ختم کریں

رئیس امروہوی نظم : امیر خسرؒو - رئیس امروہوی

فرحان محمد خان نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏نومبر 2, 2018

  1. فرحان محمد خان

    فرحان محمد خان محفلین

    مراسلے:
    2,095
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheeky
    امیر خسرؒو
    ترانۂ روحِ دو جہاں ہیں نوائے جاں ہیں امیر خسرؒو
    حیات خود نغمہ خواں ہے جن کی وہ نغمہ خواں ہیں امیر خسرؒو

    سکھی پیا کو جو میں نہ دیکھوں تو کیسے کاٹوں اندھیری رتیاں
    اندھیری رتیاں نہ کیوں ہوں روشن کہ ضُوفشاں ہیں امیر خسرؒو

    وہ ہندی الاصل فارسی گو وہ برج بَھاشا وہ کہہ مکرنی
    مگر جو کہہ کر کبھی نہ مُکری وہی رباں ہیں امیر خسرؒو

    وہ شاعر و عارف و قلندر وہ خسروی شان وہ فقیری
    نہ کیوں ہوں جانِ جہاں کہ آخر جہانِ جاں ہیں امیر خسرؒو

    جمالِ اجمیر و حسنِ دہلی کہ جس پہ ہندوستاں ہے نازاں
    اُسی جمالِ ابد نما کے قصیدہ خواں ہیں امیر خسرؒو

    رئیسؔ ان کا دوامِ عظمت نہ کیوں ہو اک عظمتِ دوامی
    دوام خود ترجمہ ہے جس کا وہ ترجماں ہیں امیر خسرؒو ​
    رئیس امروہوی
     
    آخری تدوین: ‏نومبر 2, 2018
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • زبردست زبردست × 1

اس صفحے کی تشہیر