1. احباب کو اردو ویب کے سالانہ اخراجات کی مد میں تعاون کی دعوت دی جاتی ہے۔ مزید تفصیلات ملاحظہ فرمائیں!

    ہدف: $500
    $453.00
    اعلان ختم کریں

ناز خیالوی ""نظر فریب نظاروں کو آگ لگ جائے"" ناز خیالوی

فرحان محمد خان نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏مئی 7, 2017

  1. فرحان محمد خان

    فرحان محمد خان محفلین

    مراسلے:
    2,081
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheeky
    نظر فریب نظاروں کو آگ لگ جائے
    مری دعا ہے بہاروں کو آگ لگ جائے

    خوشی کو چھین لیں،مشکل میں کام آ نہ سکیں
    یہی ہیں یار تو یاروں کو آگ لگ جائے

    پناہیں دامنِ طوفاں میں مل گئیں مجھ کو
    مری بلا سے کناروں کو آگ لگ جائے

    جلا رہے ہیں مجھے بے بسی کے دوزخ میں
    خدا کرے کہ سہاروں کو آگ لگ جائے

    کچھ ایسا زمزمہ چھیڑو نواگرو جس سے
    رُبابِ زیست کے تاروں کو آگ لگ جائے

    سکونِ زیست کی ٹھندک نصیب ہو انکو
    نہیں تو درد کے ماروں کو آگ لگ جائے

    چھپی ہے نازؔ وہ آتش مِرے نشیمن میں
    اگر چھوئیں تو شراروں کو آگ لگ جائے
    نازؔ خیالوی
     
    آخری تدوین: ‏مئی 7, 2017
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
  2. اَبُو مدین

    اَبُو مدین معطل

    مراسلے:
    695
    خیالوی صاحب کی ہر غزل لاجواب ہے۔
     
    • متفق متفق × 1
  3. فرحان محمد خان

    فرحان محمد خان محفلین

    مراسلے:
    2,081
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheeky
    آپ نے اس میں ٹائپو بھی دیکھنا ہے
     
  4. اَبُو مدین

    اَبُو مدین معطل

    مراسلے:
    695
    جی جی ضرور۔ وہ آپ نے خود ہی درست کر لیا ہے۔ :)
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1

اس صفحے کی تشہیر