1. احباب کو اردو ویب کے سالانہ اخراجات کی مد میں تعاون کی دعوت دی جاتی ہے۔ مزید تفصیلات ملاحظہ فرمائیں!

    ہدف: $500
    $418.00
    اعلان ختم کریں

ملالہ نہیں ڈاکٹر عافیہ ہیرو ہے

متلاشی نے 'اسلام اور عصر حاضر' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جولائی 22, 2013

  1. صادق انصاری

    صادق انصاری محفلین

    مراسلے:
    158
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Daring
    مگر سارے الزام جھوٹے تھے اور گواہ بھی لیکن عدالت نے اسے سچ مان لیا آخر کیوں?
     
  2. عادل اسحاق

    عادل اسحاق محفلین

    مراسلے:
    171
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Confused
    تو بھائی آپ کونسا ڈاکٹرز کیساتھ آپریشن تھیٹر میں تھے . ایک خبر کو بنیاد بنا کر آپ قیاس کر رہے دوسری خبر کو بنیاد بنا کر میں نے رائے دی .
     
  3. squarened

    squarened معطل

    مراسلے:
    325
    جھنڈا:
    Pakistan
    جتنی شدید سنسر شپ یہاں عائد کی گئی ہے اس کا تو عشر عشیر بھی سوشل میڈیا پر دیکھنے کو نہیں ملا ویسے تو فورم بھی سوشل میڈیا کا حصّہ ہے مگر یہاں تنقید دیگر میڈیا پر تو ملتی ہے مگر خود آگہی کا تصور نہیں ہے
     
    • متفق متفق × 1
  4. محمود احمد غزنوی

    محمود احمد غزنوی محفلین

    مراسلے:
    6,435
    موڈ:
    Torn
    حیرت ہے۔۔۔یار لوگ ابھی بھی مذہبی طور پر گمراہ اور نفسیاتی طور پر شدت پسند جنونیوں کو ہیرو سمجھنے پر مصر ہیں۔۔۔
    خدا تجھے مُلا فصل اللہ سےآشنا کردے ۔۔۔۔
    جو تیرے چودہ طبق زبردستی روشن کردے
    اور اس بے وزن شعر میں وزن بھردے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  5. زیک

    زیک محفلین

    مراسلے:
    37,159
    جھنڈا:
    UnitedStates
    موڈ:
    Amused
    آپ نے خبر نہیں بلکہ افواہ کا سہارا لیا ہے
     
    • متفق متفق × 1
  6. Fawad -

    Fawad - محفلین

    مراسلے:
    2,157
    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    اس معاملے کے حوالے سے يہ ابہام دور کرنا ضروری ہے کہ امريکی حکومت يا اسٹيٹ ڈيپارٹمنٹ کو اس بات کا اختيار نہيں تھا کہ وہ اس کيس کی کاروائ اور فيصلے پر اثر انداز ہو۔ امريکی نظام قانون اس بات کی اجازت نہيں ديتا کہ امريکی حکومت يا يہاں تک کہ صدر بھی ايک قانونی مقدمے کی کاروائ ميں عدالت پر اپنا اثرورسوخ استعمال کرے۔ ڈاکٹر عافيہ کا کيس اس اصول سے مبرا نہيں تھا۔

    اس کے علاوہ اس مقدمے کی کاروائ کے ضمن ميں نہ ہی کوئ نيا قانون تشکيل ديا گيا اور نہ ہی کوئ نئے قواعد وضوابط تشکيل ديے گئے۔ جو بھی طريقہ کار اختيار کيا گيا، وہ ملک ميں رائج قوانين کے عين مطابق تھا۔ ملک ميں کسی بھی دوسرے قانونی مقدمے کی طرح ڈاکٹر عافيہ کے وکيل اور ان کی ٹيم کو يہ حق اور اختيار حاصل تھا کہ وہ جج کے سامنے اس کيس کے کسی بھی پہلو کو چيلنج کر سکتے تھے۔

    جيسا کہ ميں نے پہلے واضح کيا کہ امريکی اسٹيٹ ڈيپارٹمنٹ اس طرح کے قانونی معاملات ميں مداخلت نہيں کرتا۔

    ميں آپ کو يہ بھی ياد دلا دوں کہ چند برس قبل پاکستان ميں 5 امريکی شہريوں کو 10 سال قید کی سزا سنائ گئ جو کہ اس وقت پاکستان کے قانون نافذ کرنے والے اداروں کی قيد ميں ہيں۔ امريکی حکومت نے ان کو قواعد و ضوابط کے مطابق کونسلر کی سطح پر معاونت بھی فراہم کی تھی ليکن ہم نے نا تو پاکستان ميں نظام قانون اور متعلقہ کاروائ ميں کوئ رخنہ ڈالا اور نہ ہی قانونی عمل پر اثرانداز ہو ئے۔

    5 N.Va. men convicted on terrorism charges in Pakistan, given 10 years in prison

    جس طرح سے امريکی حکومت کی جانب سے پاکستان ميں عدالتی کاروائ کا احترام کيا جاتا ہے، اسی طرح سے ہم پاکستان کی عوام سے بھی يہ اميد اور توقع رکھتے ہيں کہ وہ امريکی عدالتی کاروائ کا احترام ملحوظ رکھيں۔

    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1

اس صفحے کی تشہیر