1. اردو محفل سالگرہ شانزدہم

    اردو محفل کی سولہویں سالگرہ کے موقع پر تمام اردو طبقہ و محفلین کو دلی مبارکباد!

    اعلان ختم کریں

مشین ریڈایبل اردو رسم الخط: حروف کی کَشتیاں، اِعراب، نقطے، شوشے اور کش

محبوب خان نے 'ٹائپو گرافی اور خطاطی' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جون 3, 2008

  1. عبدالمجید

    عبدالمجید محفلین

    مراسلے:
    933
    اچھا چلو میں تو انتظار کرتا ہوں دال بانٹنے کی خیر ہے جو گرو پتلی گلی سے نکل گیا ہے :grin:
     
  2. اکبر سجاد

    اکبر سجاد محفلین

    مراسلے:
    46
    نبیل صاحب شکریہ!
    یہ چارج شیٹ نہیں۔ ریکارڈ کی باتیں ہیں اگر غلط ہیں تو محسن صاحب اور آپ آکر مرکز کے ریکارڈ سے تصدیق کر سکتے ہیں۔
    ہاں مجید صاحب!
    جو نہیں جانتے اسے سیاسی کہہ سکتے ہیں۔ کیونکہ جب ظہور احمد سولنگی نے نومبر 2007ء میں اوپن فانٹ لائبریری میں پاک نستعلیق "محسن حجازی، شعیب نواز اور ظہور احمد سولنگی" کے نام سے رجسٹرڈ کرایا تھا تو اس وقت پہلے دو رکن تو ادارے میں موجود ہی نہیں تھے (بقول محسن صاحب موصوف نے اکتوبر 2007ء میں استعفی دیا تھا)۔ سولنگی صاحب یہ حقیقت بھی جانتے ہیں کہ شعیب نواز نے کبھی بھی فانٹ پر مرکز کی طرف سے کام نہیں کیا تو پھر موصوف کا نام کس چکر میں۔ محسن صاحب فانٹ ٹیم کا چارج ان کے حوالے کر چکے تھے تو ان کا نام کس حیثیت سے جبکہ کہ پاک نستعلیق فانٹ کی بجائے سولنگی صاحب ان دنوں پاک نوری نستعلیق پر کام کر رہے تھے۔ اس طرح مذکورہ تاریخ میں ان تینوں کا پاک نستعلیق فانٹ کی بیٹا ریلیز سے دفتری ریکارڈ کے مطابق فردا فردا تعلق نہیں تھا۔ وہ ادارے (مرکز فضیلت، مقتدرہ قومی زبان) کی چیز تھی اور عوامی فلاح کے لیے بلامعاوضہ جاری کر دی گئی۔ موصوف نے بغیر کسی اتھارٹی کی اجازت کے اس کو اپنے اور اپنے ساتھیوں کے نام سے رجسٹر کروا دیا۔ تمام باتیں ریکارڈ پر ہیں اور سولنگی صاحب بھی بخوبی جانتے ہیں۔
    لہذا وہ جو حقیقت آشنا نہیں وہ "اگر من میدانستم کہ این چہ چکر است چرا از شما می پرسیدم البتہ حالی کم کم فہمیدم کہ این چہ چکر سیاسی ھست"۔ کہہ سکتے ہیں۔
    نبیل صاحب کا ایک بار پھر شکریہ
     
  3. عبدالمجید

    عبدالمجید محفلین

    مراسلے:
    933
    محترم اکبر سجاد صاحب معذرت کہ آپکو برا لگا لیکن میں اس بارے میں میرے خیال میں کچھ کچھ جان گیا ہوں اور میرے خیال میں یہاں اس پر بحث بھی لاحاصل ہے آپ کچھ بھی ثابت نہیں کرسکیں گے آپ اندازہ کرسکتے ہیں ;)
     
  4. ظہور احمد سولنگی

    ظہور احمد سولنگی محفلین

    مراسلے:
    1,388
    شکر ہے بلی تھیلی سے باہر آگئی ہے
    میری تمام صاحبان عقل سے گذارش ہے کہ وہ اس http://openfontlibrary.org/ سائٹ کو غور سے دیکھیں اس کے بعد مرکز میں جو کچھ ہو رہا ہے وہ سب کچھ سامنے لایا جائے گا، یہ جو فونٹ کا قصہ ہے وہ بھی اور وہ کام جو مرکز میں اردو کے نام پر ہو رہا ہے اور موصوف اس کے انچارج ہیں وہاں پر جو پرائیویٹ کمپنی کا کام ہورہا ہے اور کتنے لوگ کام پر لگے ہوئے ہیں سب کچھ لایا جائے گا اور کون کیا کام کر رہا ہے وہ بھی بتایا جائے گا موصوف کو میرے سامنے اس کے باس نے آفس میں یونسکو کے کام کے پئسے دیے تھے نہ صرف اس کو بلکہ اور افسران کو بھی اور پاک نستعلیق کا پاک نوری نستعلیق کی جانب کیوں سفر ہوا وہ بھی سب کچھ ثبوتوں کے ساتھ سارے ڈاکیومینٹ اسکین فارمیٹ میں یہاں اپلوڈ کیے جائیں گے۔ لہٰذا تھوڑا انتظار کیا جائے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 6
  5. نبیل

    نبیل محفلین

    مراسلے:
    16,847
    جھنڈا:
    Germany
    موڈ:
    Depressed
    اکبر سجاد صاحب، مجھے انتہائی دکھ ہوا ہے آپ کے اس الزام کو دیکھ کر۔ مجھے ابھی تک اس معاملے کا قطعی علم نہیں تھا لیکن اب مجھے اس کی حقیقت کا اندازہ ہو رہا ہے۔ آپ نے جس رجسٹریشن کی بات کر رہے ہیں وہ دراصل اس ربط پر محض پاک نستعلیق فونٹ کو اپلوڈ کیا گیا ہے۔ کیا ظہور سولنگی کو اسی 'سنگین جرم' کی پاداش میں ملازمت سے برطرف کیا گیا ہے؟ میں چاہتا ہوں کہ ایک مرتبہ آپ کی جانب سے اس کا جواب دیکھ لوں پھر اس موضوع پر کھل کر بات کروں۔ بلکہ میں اب یہ بھی چاہوں گا کہ کچھ مقتدر حلقوں کی توجہ بھی اس جانب مبذول کروائی جائے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 8
  6. shoaibnawaz

    shoaibnawaz محفلین

    مراسلے:
    30
    سب سے پہلے یہ واضح ہو جائے کہ اوپن فانٹ لائبریری کون سی ایسی ایجنسی یا ادارہ ہے جس کے پاس پیٹینٹ رجسٹر کرنے کے اختیارات ہیں،یہ تو اوپن کلپ آرٹ کے تحت چلنے والا ایک پراجیکٹ ہے جسے ہم جیسے رضاکار لوگ مل جل کر چلاتے ہیں؟
    ملاحضہ ہو:
    The Open Font Library is a sister project of the Open Clip Art Library. The goal of this project
    is to collect public domain fonts so that they may be used freely.
    حوالہ:‌اوپن فانٹ لائبریری
    جہاں تک اوپن فانٹ لائبریری پر فانٹ شائع کرنے کا سوال ہے ۔۔۔۔
    مرکز کی ویب سائیٹ ایک عرصے سے بند چلی آ رہی تھی، اس کمیونیٹی پلیٹ فارم کو پاک نستعلیق فانٹ کی ترویج کے لیے استعمال کیا گیا ۔ چند ڈالر سالانہ کے عوض اچھی ہوسٹنگ سروس خریدنےکی بجائے کئی ہزار ڈالر کے ویب سرور یونٹ کا خریدا جانا کوئی اچھی نیت کی نشان دہی نہیں کرتا جبکہ آپ کے پاس اس کی دیکھ بھال کی اہلیت نہ ہو اس سے بڑھ کہ آپ کو اسکی سرے سے ضرورت ہی نہ ہو۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 6
  7. محسن حجازی

    محسن حجازی محفلین

    مراسلے:
    2,513
    موڈ:
    Breezy
    میں نے اپنے گزشتہ چند پیغامات میں اس بات کا تذکرہ کیا ہے کہ کیا آپ اس محفل کو یہ بتانا پسند فرمائیں گے کہ پروگرام مینیجر مشینی ترجمہ بننے کے بعد آپ نے 30 جون 2007ء کو جو پروٹائپ مرکز کے حوالے کرنا تھا وہ آخر وقت تک کیوں حوالے نہیں کیا گیا یا بنا نہیں سکے؟
    یہ پروٹو ٹائپ تو میں اب بھی پیش کر سکتا ہوں مع سورس کوڈ اور اسی پر مجھے ڈگری بھی دی گئی ہے، لاہور سے تصدیق کروائی جاسکتی ہے۔

    2۔کیا آپ کی پسند کے مطابق آپ کے اپنے ساتھی منتخب کرنے کا موقع نہیں دیا گیا؟
    کیا دو آدمی مل کر خاک بھاڑ جھونکیں گے؟ آپ ادارے میں میرٹ کا بول بالا کیوں نہیں کرتے؟ واقعی با صلاحیت افراد کیوں نہیں رکھتے؟ کیوں؟ کیوں ایسا ہے کہ میرا ایک کارکن کسی اور کام میں مشغول رہا؟

    3۔کیا آپ نے انتظامیہ کہ تبدیلی کے بعد تمام تر کام روک نہیں دیا تھا کہ جب تک آپ کو پراجیکٹ مینیجر نہیں بنایا جاتا آپ ادارے کے حوالے کچھ نہیں کریں گے؟
    مکمل جھوٹ کا پلندہ۔ میں یہاں ٹیم ممبر کی حیثیت سے آیا تھا قلیل تنخواہ پر، میں نے کبھی تنخواہ میں اضافے یا ترقی کا مطالبہ نہیں کیا آج تک۔ سوال کرنا میری سرشت میں داخل ہی نہیں۔ مجھے بتائیے کہ پراجیکٹ منیجر بن کر کیا مجھے بعد میں انڈسٹری میں ہم پلہ ملازمت مل جاتی؟ میں اپنی کیرئیر پلاننگ کے بارے میں بہت محتاط ہوں۔ انتظامیہ کی تبدیلی کے باوجود میں نے اپنی کوششیں مختلف انداز میں جاری رکھیں، میں اس بارے میں بھی تفصیلی عرض کرتا ہوں

    4۔آپ نے ebmt میں موجود ڈیٹا کو کیوں داخل نہیں کیا تھا؟
    آپ کو میرے گرم مزاج کا اندازہ بھی غالبا اسی ڈیٹا ہی کی سبب ہوا ہو گا کیونکہ میں افسران بالا کے سامنے کم سے کم تین بار آپ کو اس ڈیٹا کے معیار و صحت کے حوالے سے بری طرح لتاڑ چکا ہوں، ثبوت کے لیے ڈیٹا ابھی پیش کر سکتا ہوں، دودھ کا دودھ پانی کا پانی ہو جائے گا۔تاہم اس کے باوجود یہ ڈیٹا استعمال کیا گيا۔

    5۔کمپیوٹیشنل گرامر کی موجودگی سے کیوں انکار کیا تھا؟
    آپ یہ جانتے بھی ہیں کہ کمپیوٹیشنل گرامر ہوتی کیا ہے؟؟؟ چلیئے یہ تو اچھا ہوا اس بابت آپ نے خود اشارہ کر دیا۔ قارئین کرام! دھوکہ دہی میں ایک یہ بات بھی شامل ہے کہ کیبنیٹ کو رپورٹ کیا گیا تھا کہ کمپیوٹیشنل گرامر دسمبر 2006 میں تیار کی جا چکی ہے۔ لطف کی بات ہے کہ اس بات کا مجھے بھی علم نہیں تھا کہ یہ اوپر یہ بتایا گيا ہے۔ وہ تو بعد ازاں جب اہم عہدے پر براجمان افراد کو ہٹائے جانے کے بعد فائلیں میرے سامنے لائی گئیں اور مجھے کہا گیا کہ اس کی تصدیق کرتے ہیں آپ؟ میرے تو پاؤں تلے سے زمین نکل گئی میں نے صاف انکار کر دیا کہ یہ صریحا ریاست کے ساتھ دھوکہ دہی ہے، میں کمپیوٹیشنل گرامر کو جانتا ہوں ایسی کوئی چیز تیار نہیں ہوئی یہاں پر۔ اور میں نے ارباب اقتدار کو بھی کہا کہ بہتر ہوگا کہ کیبنیٹ کو صاف بتا دیا جائے کہ غلط بیانی کی گئی ہے وگرنہ کبھی بھی غیر جانبدارانہ تحقیقات ہوئیں تو آپ کو لینے کے دینے پڑ جائیں گے۔ سو اوپر یہ اطلاع دے دی گئی کہ سابق عہدے داران نے غلط بیانی کی ہے۔ موقع پر اکبر صاحب بنفس نفیس بھی موجود تھے اگر ضمیر نما کوئی چیز ہے تو انہیں یاد ہو گا کہ میرے مزاج کی گرمی کا پہلا اندازہ انہیں اس روز اس دھوکہ دہی پر میرا جلال دیکھ کر ہو گیا ہوگا۔
    کمپیوٹیشنل گرائمر اسے کہتے ہیں:
    اردو کی کمپیوٹیشنل گرائمر
    ڈچ کی کمپیوٹیشنل گرائمر

    کیا آپ کے پاس اس قسم کی کوئی چیز موجود ہے؟؟؟ اگر ہے تو پیش کیجئے
    شاکر عزیر! آپ لسانیات کے طالب علم کی حیثیت سے میری بیان کی تصدیق یا تردید کیجئے کہ میں صحیح کہہ رہا ہوں کمپیوٹیشنل گرائمر کی بابت تاکہ بات صاف ہو جائے۔

    6۔ڈیٹا کی موجودگی سے کیوں انکار کیا تھا۔ اور صرف 260 فقرات پر کیوں رک گئے تھے؟
    اور اس پر ری آردڑنگ کا کام مکمل نہ کر سکنے کی بنیادی کیا تھی؟
    ڈیٹا میرے پاس موجود ہے جو آپ نے ٹائپ کیا ہے، اغلاط سے بھرپور، فحش اغلاط! یہیں پیش کر دیتا ہوں دودھ کا دودھ پانی کا پانی ہو جائے گا۔ دیگر جس طریقے سے کام کرنے کی کوشش کی جارہی ہے، وہ قطعی لغو و لایعنی ہے، میرا چیلنج ہے کہ اس کے ذریعے کامل مشینی ترجمہ کاری نہیں ہو سکتی، اس کے لیے تدریج کا طریقہ کار ہی اپنانا ہوگا۔ میں احباب کو مرکز کی حکمت عملی کے بارے میں الگ سے بتاؤں گا۔ یہ آپ کا ایک اور جھوٹ ہے کہ 260، اصل تعداد 600 جملوں کے قریب تھی۔

    7۔آپ کے بقول آپ نے استعفی 27 اکتوپر 2007ء کو دیا تھا تو چابی جنوری 2008ء تک آپ کے پاس کس حیثیت سے رہی تھی؟
    میرا استعفی قبول نہیں کیا گیا تھا مجھے کہا جا رہا تھا کہ آپ ادارہ چھوڑ کر نہ جائیں اس بات کی بھی تصدیق کروائی جا سکتی ہے، تفصیلات بعد میں پیش کرتا ہوں۔

    8۔کیا کا استعفی دیتے وقت سابق پی ڈی پر الزام تراشی نہیں کی تھی کہ وہ آنے پر آپ کو نکال دیں گے، حالانکہ کہ عمران رزاق کے سامنے و ۔آپ کو ناراض ہوئے تھے کہ محسن جاؤ اور 30۔جون 2008ء پر وعدہ کے مطابق پروٹوٹائپ حوالے کرو۔
    الزام تراشی کیا؟ آپ نے جس جس کو اٹھا کر پھینکنا تھا پھینک دیا۔ وجہ یہ تھی کہ ہمیں دبے لفظوں میں کہا گیا تھا نئی انتظامیہ کے ساتھ کام نہ کیا جائے ان کے لیے مشکلات پیدا کی جائیں اور انہیں بتایا جائے کہ 'فلاں' کے بغیر کام نہیں چل سکتا تو میں نے کہہ دیا تھا کہ:
    I'm loyal to the authority not to the personality.
    یہ غالبا عمران رزاق وہی ہیں جنہوں نے میرا سی پلس پلس پر مشتمل بصری حرف شناسی کا منصوبہ محض 70 لائنوں کے MatLab سکرپٹ تک محدود کر دیا تھا اور میرے اصرار پر کہا تھا کہ سی پلس پلس بہت مشکل ہے؟
    تکنیکی افراد کے لیے:
    میں نے بصری حرف شناسی کی بنیاد اس Fast Articifial Neural Network Library پر رکھی تھی جو کرہ ارض کی تیز ترین implementation ہے۔ امیج پراسینگ کے لیے ابتدائی طور پر CxImage کو MFC کے ساتھ استعمال کیا جانا تھا لیکن افسوس صد افسوس۔۔۔
    دیگر پروٹو ٹائپ تو میں بہت پہلے ہی تیار کر چکا تھا،اس بابت بھی انشا اللہ ثم انشا اللہ مزید ثبوت پیش کروں گا۔
    9۔کیا آپ جس اسامی پر کام کر رہے اس سے متعلقہ ڈگری کے لیے دفتر کی طرف سے نوٹس جاری نہیں ہوئے تھے؟
    بالکل جاری ہوئے، جب کبھی تنبیہ کی ضرورت کسی اور معاملے میں پیش آئی تب تب جاری ہوئے، یہی تو میں کہہ رہا ہوں کہ نظریہ ضرورت کے لیے کچھ بھی کر سکتے ہیں آپ۔ میں اس عہدے کے لیے عمر کی لحاظ سے بھی کم تھا اور تعلیم کے اعتبار سے بھی۔ یہ اور بات کہ آپ کو all in one ملنا مشکل تھا۔ تب آپ کو یہ باتیں کیوں یاد نہ آئيں؟

    10۔ کیا ایک شخصیت نے آپ کے شروع شروع کے قرضے ایڈجسٹ کروا کر اس کے علاوہ مکمل تنخواہ نہیں دی تھی؟
    یہ ذاتی سوال ہے۔ تاہم لیکن میں حق گوئی سے نہیں گھبراتا۔ بالکل کیا تھا، دونوں اصحاب میرے محسن ہیں، ان کی شفقت ہے، لیکن کسی احسان کی وجہ سے جھوٹ کو سچ اور سچ کو جھوٹ نہیں کہا جا سکتا۔ یہ دو باتیں الگ ہیں۔ خلط مبحث مت کیجئے۔

    11۔ کیا آپ نے طارق حمید سے حاصل کردہ یورو میں رقم واپس کی تھی؟
    یہ پھر ذاتی سوال ہے تاہم جواب دیتا ہوں۔ جی بالکل نہیں کی، میری پانچ ماہ کی تنخواہ سے دفتر کی طرف سے ادائیگی کی گئی تھی۔ اس کے لیے شکریہ۔ میں تعصب یا بغض میں اندھا ہرگز نہیں ہوں کہ ہر چیز کی نفی کرتا چلا جاؤں، میں مشکور ہوں۔ اجرکم من اللہ احسن الجزا۔ یہاں جو بات ہو رہی ہے وہ تو اور پہلو اور نہج پر ہے۔ کیا میں نے کبھی آپ کے یہاں کئے گئے مراسلات سے تعرض کیا کبھی؟ اگرچہ مجرمانہ غفلت ہی سہی لیکن کیا یہ مروت اور احسان مندی کا خاموش اعتراف نہیں؟ ایسی باتوں کو محسوس کرنے کے لیے حساس دل درکار ہے۔ ویسے کل رقم دو سو یورو تھی۔
    یہاں بھی میں نے نہیں دیگر احباب نے سوال کئے ہیں اس کے بعد مجھے کہا گیا کہ میں کیوں خاموش ہوں اور اس کے بعد آپ میری ذاتیات کے پیچھے محض خوف میں لٹھ لے کر پڑ گئے ہیں۔

    12۔ آپ کے بقول یہ ساری باتیں تو قصہ پارینہ ہو گئی ہیں، نہیں محسن صاحب اداروں میں ریکارڈ موجود رہتا ہے؟
    آپ کے ہاں ریکارڈ کا کوئی تقدس نہیں، ابھی یہ تو کل ہی کی بات ہے کہ آپ کے ہاں خریداری کی فائلوں کے نوٹ پورشن پھاڑ کر دوبارہ لکھے گئے خرد برد چھپانے کے لیے۔ مجھے دستخط کے لیے کہا گیا، میں دو روز کے لیے چھٹی کر گیا تاآنکہ افسران بالا پشاور کے دورے سے واپس آجائیں تو مجھ پر کسی قسم کا دباؤ نہیں ڈالا جا سکے گا۔ اب کس کس چیز کی تفصیل لکھی جائے۔۔۔

    13۔ کیا آپ کو ادارے کی طرف سے پیغام نہیں ملا کہ آپ کے جمع کرائے جانے والے کوائف درست کام نہیں کر رہے؟
    لایعنی سوال محض طوالت کے لیے کیا گيا ہے۔ اگر ادارے کی پاس کوائف نہیں تھے تو پھر ادارہ کیا ہے۔

    14۔ کیا آپ نے آ کر ان کوائف کی صحت کے بارے میں بتانے سے انکار نہیں کیا؟
    لایعنی سوال محض طوالت کے لیے کیا گيا ہے۔ ایضا۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 6
  8. محسن حجازی

    محسن حجازی محفلین

    مراسلے:
    2,513
    موڈ:
    Breezy
    سولنگی صاحب! بہت اہم نکات اٹھائے ہیں آپ نے۔ حاضرین محفل کو ضرور آگاہ کیا جانا چاہئے ان تمام باتوں کے بارے میں۔ آپ کو سکینر کی ضرورت ہو تو میں مہیا کر سکتا ہوں۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 5
  9. محسن حجازی

    محسن حجازی محفلین

    مراسلے:
    2,513
    موڈ:
    Breezy
    اکبر صاحب کا یہ بیان محض غلط بیانی ہے کہ شعیب صاحب نے فونٹ پر کام نہیں کیا۔ وہ پاک نستعلیق پر نہیں کیا ۔
    پاک نوری نستعلیق پر میرے اس قابل محنتی دوست نے میری ہدایات کے مطابق جاوا کے وہ پروگرامز لکھے جن کے سبب او ٹی ایف ٹیبل جنریٹ کئےگئے۔
    اور سولنگی صاحب جیسا شخص مشین کی طرح انتھک کام نہ کرتا تو یہ منصوبہ کبھی تکمیل تک نہ پہنچتا۔ پوچھا گیا تھا کہ میں نے دو سال میں کیا کیا ہے، اس بارے میں بھی جلد ہی لکھتا ہوں۔
    میرےدوست جناب شعیب نواز میری نگاہ اتخاب میں اسی لیے تھے کہasthetic sense میں کافی پہنچے ہوئے ہیں میں ان سے بہت سے فونٹ اور خطوط ڈیزائن کروانا چاہتا تھا کہ خطاطی اور innovation میں ان کا جواب نہیں۔
    لیکن قدرت کا کوئی کام رکتا نہیں۔۔۔ میں یہ کام نہیں کروا سکا تو قدرت نے ضلع اٹک کی ایک بزرگ و درویش منش ہستی کو اپنی جانب سے یہ علم عطا فرما دیا ۔ قسم لے لیجئے جو میں نے شاکر القادری صاحب کو کبھی فونٹ کے حوالے سے کوئی تربیت دی ہو یا اس حوالے سے ملاقات ہوئی ہو لیکن دیکھئے کہ نت نئے ڈیزائین چلے آ رہے ہیں نہ کوئی تنخواہ نہ عہدہ نہ لالچ۔۔۔ اللہ اکبر۔۔۔۔ ثم اللہ اکبر! اس زبان اور اس کے بولنے والوں کے لیے اللہ رب العزت نے کوئی بڑی ذمہ داری چھپا رکھی ہے اور مجھے محسوس ہوتا ہے کہ یہ سارے کام اسی بڑے مقصد کی تکمیل کے لیے اللہ کروا رہا ہے۔۔۔ ادارے نہیں کرتے نہ کریں کہ اللہ جہانوں سے بے نیاز ہے۔۔۔ میرا رب شہد کی مکھی کو ہنر سکھا سکتا ہے تو اس کے لیے قادری صاحب جیسے تڑپ رکھنے والے افراد کو ہنر عطا رکرنا کیا مسئلہ ہے۔۔۔ وہ کوئی بڑی تبدیلی چھپائے ہوئے ہے پردہ غیب میں۔
    سبحان اللہ وبحمدہ سبحان اللہ العظیم و بحمدہ استغفراللہ۔۔۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 10
  10. arifkarim

    arifkarim معطل

    مراسلے:
    29,828
    جھنڈا:
    Norway
    موڈ:
    Happy
    جی ہاں تبھی تو مرکز فضیلت کی سائٹ اکثر بند رہتی ہے :grin:
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 9
  11. منصور میرانی

    منصور میرانی محفلین

    مراسلے:
    10
    یہاں پر جس کمپنی کا لنک دیا گیا ہے ان کی ویب سائٹ پر درج ہے:
    We use "special tools" such as Govertment approved Standard Localization Glossary for Urdu and Pashto Languages, Standard Urdu Spell Checker, Unicode based Nastleeq Font for Desktop Publishing, We are the only company to provide DTP services in Urdu Script, Commputational Grammar Code of Urdu for Machine Translation Softwares. Transliteration Codes for Middle Eastern Languages, To know further please, CLICK..HERE. ​
    مجھے یہ پوچھنا ہے کیا اردو کی کمپیوٹیشنل گرائمر تیار ہو چکی ہے؟ اگر ہو چکی ہے تو شاید اسی سرکاری ادارے نے تیار کی ہوگی؟ اور اگر اسی ادارے نے تیار کی ہے تو پھر ایک پرائیویٹ کمپنی اسے کس حیثیت میں بیچ رہی ہے؟ اور یہ کتنے میں مل جائے گی؟
     
  12. arifkarim

    arifkarim معطل

    مراسلے:
    29,828
    جھنڈا:
    Norway
    موڈ:
    Happy
    منصور یہ پرائویٹ کمپنی اندر خانے سرکاری افسران چلا رہے ہیں، حکومت کے خرچے پر ;)
     
  13. نبیل

    نبیل محفلین

    مراسلے:
    16,847
    جھنڈا:
    Germany
    موڈ:
    Depressed
    السلام علیکم،
    میری تمام دوستوں سے گزارش ہے کہ یہاں ہم کسی پر کیچڑ اچھالنے کی بجائے صرف حقائق جاننے پر غور کریں۔ اس لیے بہتر یہ ہو گا کہ گفتگو ادارے کے نمائندگان اور ان کے سابق کولیگز یعنی محسن، ظہور اور شعیب نواز کے درمیان رہے، کیونکہ معاملے کی اصل حقیقت کو یہی جانتے ہیں۔ یہ دھاگہ مناسب موقعے پر مقفل کر دیا جائے گا۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
  14. محمد کاشف مجید

    محمد کاشف مجید محفلین

    مراسلے:
    476
    نبیل یہاں پر کسی نے بھی کسی پر کیچڑ اچھالنے کے لئے کچھ نہیں لکھا۔ مقتدرہ نے چند پراجیکٹ شروع کر رکھے تھے / ہیں اور ان پر قوم کا کروڑوں روپیہ ابھی تک خرچ ہو چکا ہے اور نتیجہ ندارو۔ کیا یہ ہمارا حق نہیں بنتا کہ ہم جان سکے آخر کیا عوامل تھے جن کی وجہ سے یہ پراجیکٹ کھٹائی کا شکار رہے۔ نبیل برادر خواہ مرکزی گفتگو مقتدرہ کے عہدیداران اور محسن، ظہور اور شعیب کے درمیان رہے لیکن اطراف کو ان باتوں کو پڑھنا اور ان کا جواب دینا چاہئیے جو ہمارے اذہان میں انکی اس بحث سے پیدا ہو رہی ہیں۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
  15. محسن حجازی

    محسن حجازی محفلین

    مراسلے:
    2,513
    موڈ:
    Breezy
    ہاں البتہ میری ذات، حالات اور مزاج پر کافی کیچڑ اچھالنے کی کوشش کی گئی ہے اور قوی امید ہے کہ مزید اچھالا جائے گا لیکن و تعز من تشا و تذل من تشا۔
    مجھے اب اندازہ ہوا کہ انصار عباسی اور صالح ظافر قسم کے صحافیوں کو کیا کچھ سہنا پڑتا ہوگا یہاں میں نے تو ایک چھوٹے سے ادارے کی بابت ابھی کچھ خاص کہا بھی نہیں۔ اور تکنیکی باتوں کا کوئی جواب نہیں ہنوز۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  16. دوست

    دوست محفلین

    مراسلے:
    13,086
    جھنڈا:
    Germany
    موڈ:
    Fine
    مجھ نے محسن نے چونکہ تصدیق چاہی ہے اس لیے اپنے ناقص علم کے مطابق جواب دینے کی کوشش کروں گا۔
    پہلی بات تو یہ ہے کہ گرامر کیا ہے۔ گرامر کے بعد ہی ہم کمپیوٹیشنل گرامر کی طرف بڑھ سکیں گے۔ سادہ الفاظ میں‌گرامر کسی زبان کے ان قوانین کا نام ہے جو الفاظ اور حروف کو اکٹھا کرتے ہیں اور ایسے اکٹھا کرتے ہیں کہ ان سے معانی پیدا ہوسکیں۔ کسی زبان کی گرامر ریاضی سے مشابہہ ہے لیکن ریاضی نہیں‌۔ اس میں ہمیشہ دو جمع دو چار نہیں‌ہوتا۔ گرامر میں کئی استثنائی صورتیں ہوتی ہیں جنھیں‌ ہم روزمرہ سمجھ کر آگے بڑھ جاتے ہیں‌ لیکن یہی استثنائی صورتیں جب زبان کی کمپیوٹر سے عمل کاری کے ذیل میں‌ آتی ہیں‌تو ہمیں‌کمپیوٹر کو یہ صورتیں سمجھانے کے لیے اچھی خاصی تگ و دو کرنی پڑتی ہے۔
    استثنائی صورتوں کی انگریزی میں سادہ سی مثال فعل حال مطلق میں‌ He, She, it کی صورت میں فعل کے ساتھ s یا es کا اضافہ ہے جو صرف سادہ فقروں میں ہوگا۔ جب ہم کمپیوٹری گرامر کی بات کرتے ہیں تو اس کا مطلب یہ ہے کہ کمپیوٹر متعلقہ زبان کو "سمجھ" رہا ہے۔ اس سمجھنے کے پیچھے عملی کاری کی ایک لائن ہوتی ہے جو قدم بہ قدم لاگو کی جاتی ہے۔ جملے کو پہچاننا، اس کے بعد جملے میں مختلف حصوں کو پہچاننا۔ جن میں فعلی حصہ، مفعولی حصہ اور فاعلی حصہ شامل ہیں۔ میں نے "حصہ" اس لیے استعمال کیا چونکہ فاعل، فعل اور مفعول یک لفظی نہیں کثیر لفظی بھی ہوسکتے ہیں۔ ملاحظہ کیجیے
    اسلم | نے کار | دھوئی۔
    میرے بھائی اسلم | نے بڑے تایا ابو کی | کار دھوئی۔
    یہ اردو کی ایک مثال ہے۔ آپ دیکھ سکتے ہیں کہ نچلے فقرے میں فاعل اور مفعول یک لفظی نہیں، یہ کثیر لفظی حصے ہیں۔ اگرچہ اسلم اور تایاابو ہی اصل "مرکز" ہیں لیکن ان کے معاون الفاظ بھی اسی حصے میں شامل ہونگے۔ کمپیوٹر کے لیے ان الفاظ کو ان کے "فعل" یعنی فنکشن کے لحاظ سے جاننا بہت ضروری ہے۔ اسکے لیے ہر ہر تفصیل کو گرامر کے قوانین کی صورت میں بطور کوڈ لکھا جاتا ہے۔ متعلقہ حصہ شناخت کیسے کرنا ہے، اس میں موجود ہیڈ کیسے نکالنا ہے، اس کے آگے پیچھے کے الفاظ کو کیا ٹیگ دینے ہیں، آیا وہ اسم صفت ہیں یا حروف جار ہیں ۔۔۔۔ اس کے علاوہ استثنائی صورتیں جو قدم قدم پر رستہ روکتی ہیں۔ اگر فاعل مذکر ہے تو دھوتا ہے آئے گا، مونث ہے تو دھوتی ہے آئے گا۔ وغیرہ وغیرہ۔ یعنی کمپیوٹر کو گرامر سمجھانے کے لیے لسانیات اور کمپیوٹر کا گہرا علم ہونا ضروری ہے۔ لسانیات میں میں سادہ پارٹس آف سپیچ ٹیگنگ سے لے کر ترجمے تک میں گرامر کا استعمال ہوتا ہے۔ موخر الذکر میں کام بڑھ جاتا ہے۔ آپ کو بیک وقت دو زبانوں کو پروسیس کرنا پڑتا ہے۔ جس کا ترجمہ کرنا ہے پہلے اسکے لیے۔ جملوں کو توڑیں۔الفاظ کو آبائی حالتوں میں لائیں، یعنی اگر" کرتا ہے" تو اس کی آبائی حالت "کرنا" ہوگی یعنی نارمل فعل۔ الفاظ کو ٹیگ کریں، اس کے بعد ان کا فنکشن نکالیں، یعنی آیا یہ اسم صفت ہے، فعل ہے، حرف جار ہے کیا ہے۔ اس کے بعد دوسری زبان میں اسی لحاظ سے تلاش کریں۔ پہلے لغت کے لحاظ سے کہ متعلقہ لفظ کے کیا کیا معانی بن سکتے ہیں، پھر ہر ایک "امیدوار" کو اس جملے کے سیاق و سباق کے لحاظ سے چیک کرکے موزوں ترین منتخب کیا جائے اور اس کے بعد اس پر متعلقہ "حالات" لاگو کیے جائیں۔ یعنی زمانہ، جنس کے لحاظ سے تخصیص کی صورت میں متعلقہ inflextion کا استعمال، اس کے ساتھ موزوں حروف جار کا اضافہ وغیرہ۔
    کمپیوٹری گرامر کا سافٹویر تخلیق کرنے کے بعد اسے "تربیت" دی جاتی ہے۔ اس سے جملے پروسیس کروائے جاتے ہیں اور جہاں یہ غلطی کرتا ہے اسے ڈی بگ کرکے کوڈ میں ردو بدل و ترمیم کی جاتی ہے۔ زبان ایک وسیع علم ہے، کمپیوٹر سافٹویر کو اسے سیکھنے کے لیے ناصرف گرامر کے قوانین درکار ہیں بلکہ الفاظ کا ذخیرہ بھی درکار ہے جس کو بطور ڈیٹابیس استعمال کرتے ہوئے یہ ترجمہ وغیرہ کرنے کی صلاحیت حاصل کرے۔ تین سو یا چھ سو یا ہزار جملوں اور چند سو الفاظ سے ترجمہ کرنا ممکن نہیں۔ اس کے لیے روزمرہ میں استعمال کے تمام الفاظ کا ذخیرہ درکار ہوگا، ان کی مختلف صورتیں بھی اسی ڈیٹابیس کا حصہ ہونگی، اس کے علاوہ ٹیگ شدہ مواد بھی اس کا حصہ ہوسکتا ہے۔
    باقی اللہ بہتر جانتا ہے یا "مقتدرین" کہ کونسی اردو کمپیوٹیشنل گرامر تیار کی گئی ہے اور کیسے تیار کی گئی ہے۔ یہ بھی جان لیجیے کہ کمپیوٹیشنل گرامر ایک مبہم اصطلاح ہے۔ اس کے کئی ماڈل موجود ہیں جو اپنے لحاظ سے پروسیسنگ، ٹیگنگ وغیرہ کرتے ہیں اور جملے کو اپنے حساب سے تقسیم کرتے ہیں اور ضروری نہیں کہ کمپیوٹر کی گرامر اس گرامر سے لگّا کھائے جو آپ کتابوں میں پڑھتے ہیں۔ کمپیوٹر پر کام کرنے کے لیے بہت سی چیزوں کی قربان دینا پڑتی ہے اور بہت سے تصورات کو نئے انداز سے لاگو کرنا پڑتا ہے۔
    آخر میں دو رابط۔ اردو مافولوجی اطلاقیہ بیرون ملک مقیم ایک پاکستانی طالب علم محمد ہمایوں نے بطور ریسرچ پروجیکٹ مکمل کیا تھا۔ اس کی استعداد کار بہت محدود ہے اور کام صرف اتنا ہے کہ الفاظ کو ان کے اصل کی طرف لوٹا دیتاہے۔ یعنی اس کی lemmatization کردیتا ہے۔ "لوٹا دیتا" کو یہ "لوٹانا" کردے گا۔ یاد رہے یہ صرف مارفولوجی پر کام کرتا ہے اور بغیر کسی سیاق و سباق کے۔ یہ صرف ڈیٹابیس سے لفظ کو ملاتا ہے اگر وہ موجود ہے تو اس کا ٹیگ اور لیماٹائزیشن کا سیٹ اٹھا کر پیش کردیتا ہے۔
    ڈاکٹر مریم بٹ جرمنی میں مقیم ہیں، ان کے والد کا تعلق لاہور پاکستان سے تھا، ان کا شعبہ بھی کمپیوٹری لسانیات ہے اور انھوں نے اردو گرامر پر خاصا کام کیاہے۔ ان کے ایک آرٹیکل کا ربط یہاں دے رہا ہوں جس سے آپ کو گرامر کے تصورات سمجھنے میں مزید مدد ملے گی۔
    معذرت کے ساتھ ۔۔ میرا علم خاصا محدود سا تھا اور مجھے ابھی بھی کئی پہلو تشنہ محسوس ہورہے ہیں تاہم ایک بات واضح کرنے میں امید ہے کامیاب رہا ہوں کہ گرامر کا اطلاق کردینا بچوں کا کھیل نہیں اور وہ بھی مشینی ترجمہ کاری کے لیے۔ اس کے لیے بہت سے ذرائع، ڈھیر سارا وقت اور زرخیز دماغ والے ماہر درکار ہیں جو ہردو شعبوں میں اچھی سلام دعا رکھتے ہوں۔
    وسلام
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 6
  17. محسن حجازی

    محسن حجازی محفلین

    مراسلے:
    2,513
    موڈ:
    Breezy
    بہت شکریہ عزیر معلومات کی فراہمی کے لیے۔ اس کے لیے کرلپ میں خاصا کام ہوا ہے اور معمولی نوعیت کی گرائمر ان کے ہاں موجود بھی ہے۔ محض لسانیات ہی نہیں، کمپیوٹر سائنس اور ریاضی پر بھی عبور لازم ہے وگر نہ ہم نے بہت سے نام نہاد ماہر لسانایات کو محض باتیں بناتے اور کاغذوں کے پلندے چھاپتے دیکھا ہے جس میں محض یہ ثابت کیا جاتا ہےکہ صاحبو اردو بہت پیچیدہ زبان ہے، ہم ماہر لسانیات ہیں ہماری آرتی اتاری جائے تو ممکن ہے کہ کچھ ہو سکے۔ آپ کا یہ نکتہ بے حد اہم ہے کہ اس کے لیے کمپیوٹر سائنس اور ریاضی بھی شامل ہیں۔
    اور میں یہ بات واضح کرتا چلوں کہ کمپیوٹیشنل گرائمر تو ایک طرف، یہاں گرائمر پر بھی کوئی کام نہیں ہوا ثبوت کے لیے ترجمان کے بیانات پڑھ لیجئے وہ مسلسل مبنی بر تمثیل ترجمہ کاری کی بات کر رہے ہیں جس میں گرائمر تو ہوتی ہی نہیں پہلے سے رٹے رٹائے فقرے موجود ہوتے ہیں اور ان کی مماثلت سے ترجمہ کیا جاتا ہے پھر کونسی کمپیوٹیشنل گرائمر کا دعوی کیا جا رہا ہے۔ اس چیز کا مظاہرہ میں 7 جون 2007 کو مرحوم ترجمان کے موجودہ وارثین کی موجودگی میں ہی کر چکا ہوں لیکن دروغ گو را حافظہ نیست۔ اس کے سکرین شاٹس بھی پیش کرتا ہوں جلد جیسے ہی فراغت ملتی ہے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 5
  18. اکبر سجاد

    اکبر سجاد محفلین

    مراسلے:
    46
    محسن صاحب!

    بہت خوب!

    سوال گندم جواب چنا۔

    آپ خوب جانتے ہیں کہ پاک نستعلیق فانٹ کے بعد مرکز فضیلت برائے اردو اطلاعیات کا اگلا ٹارگٹ دفتری انگریزی۔ اردو مشینی ترجمہ کا سافٹ ویئر تھا۔ جس کا پروٹوٹائپ آپ نے 30۔ جون 2007ء کو دینا تھا، مگر آپ اپنے استعفی تک بھی ایسا نہ کر سکے۔ سوال صرف یہ تھا۔

    باقی اگر کوئی بانس پر چڑھتا اور اترتا رہے تو اس سے اہداف پورے نہیں ہو جاتے۔

    آخر میں میں اس محفل کو بتا دینا چاہتا ہوں کہ انشاء اللہ جس کام کے لیے قبلہ محسن صاحب ایک سال سے زائد عرصہ کے تڑخاتے رہے وہ اسی سہ ماہی میں پاکستان کے دفاتر کے لیے جاری کر دیا جائے گا۔ یہ سارا کام ان کے جانے کے بعد نئی ٹیم نے از سر نو کیا ہے۔

    اس طرح یہ تو کہا جا سکتا ہے کہ محسن صاحب نے مقررہ اہداف پورے نہیں کیے بلکہ زائد وقت میں بھی پورے نہیں کیے (کیونکہ موصوف کسی عام عہدہ پر نہیں تھے، پروگرام مینیجر مشینی ترجمہ تھے)۔ یہ نہیں کہا جا سکتا کہ سرکاری وسائل یا پراجیکٹ میں دیے گئے اہداف پورے نہیں ہوئے۔

    فضلنا بعضکم علی بعض

    اسی آیہ مبارک کے مصداق اللہ تبارک و تعالی نے مرکز فضیلت کو جو نئی ٹیم عطا فرمائی ہے انھوں نے پچھلے تمام ضائع کیے ہوئے وقت کا تقریبا ازالہ کر دیا ہے۔

    یہاں میں یہ بات بھی واضح کرنا چاہتا ہوں کہ محسن صاحب آپ کی ذات کو میں اور آپ خوب جانتے ہیں۔ وہ باتیں محفل پر زیب نہیں دیتیں۔ اس لیے میں نے صرف ادارے کے حوالے سے بات کی ہے۔

    نبیل صاحب!

    یہ میری آخری پوسٹ ہے۔ اس کے بعد میں اس موضوع پر حاضر نہیں ہو سکوں گا۔ اللہ حامی و ناصر ہو۔

    اکبر سجاد
     
  19. محسن حجازی

    محسن حجازی محفلین

    مراسلے:
    2,513
    موڈ:
    Breezy
    بالکل! آپ کی آپ بیتی کی طرح یہ بات بھی آپ پر عین صادق آتی ہے، لوگ پوچھتے ہیں کہ فونٹ کا نیا ورژن کب آئے گا جواب آتا ہے کہ کیا آپ نے طارق حمید کے پیسے واپس کر دیے؟ :grin: :grin: :grin:

    یہیں محفل پر سکرین شاٹس آتے ہی ہوں گے بطور ثبوت فکر مت کیجئے۔ مورخہ سات جون 2007 کو میں پروٹو ٹائپ پیش کر چکا ہوں، ڈیڈ لائن سے لگ بھگ تین ہفتے سے بھی پہلے اور اس بات کو تو سال ہو چکا۔
    پھر کیوں بانس پر اترنے چڑھنے کا عمل جاری ہے؟

    وہ سب میرا ہی کیا ہوا کام ہے جسے آپ نئی ٹیم کا کام بتا رہے ہیں، نئی ٹیم تو اگر چھوٹا سا stack ہی implement کر کے دکھا دے تو بہت بڑی بات ہوگی کجا کہ اتنی بڑی کوشش۔

    حاضرین کرام! ایک ہی جملے میں دو متضاد باتیں! :grin: :grin: :grin: محسن صاحب نے اہداف پورے نہیں کیے لیکن سرکاری پراجیکٹ کے اہداف پورے ہو گئے ہیں۔ :eek:
    کوئی بات نہیں ہاتھ پاؤں پھول جائیں تو ایسا ہوتا ہے۔ الفاظ بے ربط ہو جاتے ہیں۔

    جناب آپ اور آپ کا آقاؤں سے متعلق باتیں محفل پر تو کیا تنہائی میں بھی زیب نہیں دیتیں! :grin: :grin: :grin:

    انا اللہ و انا الیہ راجعون!
    مرکز کے دوسرے ترجمان کے انتقال پر ملال پر ہم اہل محفل سے تعزیت کرتے ہیں۔ اللہ مرحوم کے درجات کو مزید پست ہونے سے بچائے۔

    تاہم ابھی تو کچھ کہا ہی نہیں گیا، میں اپنی کارکردگی سے متعلق لگائے گئے الزامات کی بابت بھی لکھتا ہوں۔ اس میں مزید باتیں سامنے آئیں گی۔

    قارئین کرام! سچ جھوٹ کا اندازہ خود لگا لیجئے فیصلہ ہم آپ کی عقل پر چھوڑتے ہیں لیکن درخواست ہے کہ چند ایک امور پر بحث کے بعد بے شک دھاگے کو مقفل کر دیا جائے، ہم یقین دہانی کرواتے ہیں کہ ذاتیات پر کوئی بات نہ ہوگی محض چند تکنیکی باتیں اور ہیں۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 6
  20. عبدالمجید

    عبدالمجید محفلین

    مراسلے:
    933
    مجھے تو امید نہیں تھی کہ مقتدرہ والے اتنی جلدی بھاگ جائیں گے لیکن خیر اب کیا کہا جاسکتا ہے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1

اس صفحے کی تشہیر