مذہب انسانیت: میں مسلمان، میراخون عیسائی اور دل یہودی ہے

سید رافع نے 'اسلام اور عصر حاضر' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جون 13, 2020

ٹیگ:
  1. سید رافع

    سید رافع محفلین

    مراسلے:
    1,271
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    انسانیت کوئی مذہب نہیں کہ جس سے انسان چین پائیں اور سکون و اطمینان سے اپنے رب کے بھید کو جاننے میں مصروف ہوں۔بعض مسلمان اسلام میں داخل ہونے کے بجائے یہ جاننے کی کوشش میں ساری عمر لگے رہتے ہیں کہ کیسے ساری دنیا کے دیگر انسانوں کے ساتھ صلح کلی کے ساتھ رہا جائے۔ حالانکہ انسانوں میں بعض جانوروں سے بدتر ہیں اور بعض کھلے شیاطین ہیں۔ ان سے دوستی انسانیت سے دشمنی ہے۔ ان کے جرائم سے رعایت انسانیت کا قتل ہے۔ جو جانور سے بدتر ہیں وہ خواہشات نفس کے پیچھے چلتے ہیں۔ جو شیاطین ہیں وہ وسوسے ڈالتے ہیں۔

    25:43 کیا آپ نے اس شخص کو دیکھا ہے جس نے اپنی خواہشِ نفس کو اپنا معبود بنا لیا ہے؟ تو کیا آپ اس پر نگہبان بنیں گے۔

    25:43 کیا آپ یہ خیال کرتے ہیں کہ ان میں سے اکثر لوگ سنتے یا سمجھتے ہیں؟ (نہیں) وہ تو چوپایوں کی مانند (ہو چکے) ہیں بلکہ ان سے بھی بدتر گمراہ ہیں۔


    آپ خود ہی سوچیں کہ ایسی صلح کلی کس کام کی جس میں سامنے والا انسان سننے سمجھنے نہ والا ایک چوپایہ ہے۔ ایسے انسان نما چوپایوں کے لیے انکا دین اور مومن کے اسکا دین۔ اب جس کا دین بھی صلح و صفائی، عدل و انصاف اور اللہ کے بھید جاننے میں سب سے بڑھ کر ہو گا اسی کی ہی اس دنیا میں حکمرانی ہو گی۔

    انسانوں کے شیاطین وہ ہیں جو دوسرے انسانوں کو وسوسے میں ڈالتے ہیں۔ وہ شک سے بھری گفتگو کرتے ہیں۔ ایمان داروں کا مذاق اڑاتے ہیں۔یوں وہ لوگوں کو راہ راست سے گمراہ کرتے ہیں۔

    114: 4 وسوسہ انداز (شیطان) کے شر سے جو (اﷲ کے ذکر کے اثر سے) پیچھے ہٹ کر چھپ جانے والا ہے

    114: 6 خواہ وہ (وسوسہ انداز شیطان) جنات میں سے ہو یا انسانوں میں سے۔


    ایسی صلح کلی میں مبتلا انسان کہتے ہیں کہ میں ایک ایسا مسلمان ہوں جس کا عیسائی خون اور یہودی دل سے ہوں۔ یہ دل اس سے ہندو مذہب کو میرے بدھ مت کے ذہن میں پمپ کر کےسکھ ازم کے بلند تصورات پیدا کرتا ہے۔ میرے جذبات یزیدی ہیں ، رگیں جین ہیں۔ میں زرتشتی کی سانس لیتا ہوں ، اور سوچتا ہوں بہائی جیسا۔ نیند میں میں غیر مذہبی ہوں ، میرے خواب روحانی ہیں اور جب میں بیدار ہوتا ہوں تو میں انسان ہوں۔

    انسانیت کو اسلام سے بلند درجہ دینے کا نتیجہ یہ ہوتا ہے کہ انسان اسلام مخالف قلب سینے میں رکھ کر اللہ کی زمین پر گھومتا پھرتا ہے۔ اسکے دل میں عدل کے لیے کھڑا ہونے کی چاہت لوگوں کی شخصی آزادیوں کے سامنے کوئی حیثیت نہیں رکھتی۔ وہ مسلمان نہیں جانتا کہ اسکو عدل کے لیے کھڑا ہونے کے لیے پیدا کیا گیا ہے۔ وہ نہیں سمجھ پا رہا ہوتا کہ اقوام عالم میں وہ اس امت کا حصہ ہے جو لوگوں کے درمیان عدل کرنے کے لیے نکالی گئی ہے۔

    اسلام ایک نعمت ہے۔ اللہ سے دعا ہے کہ اس نعمت کی باریک سے باریک حکمت کو سمجھنے کی ہمیں توفیق عطا فرمائے۔ آمین۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • غیر متفق غیر متفق × 1
  2. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    26,475
    ہر مذہب انسانیت سکھاتا ہے اس لئے انسانیت مذہب ہی ہے
     
  3. عبدالقیوم چوہدری

    عبدالقیوم چوہدری محفلین

    مراسلے:
    18,354
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    ہر مذہب انسانیت سکھاتا ہے لیکن 'انسانیت سب سے بڑا مذہب ہے' نامی جملہ دور جدید کا سب سے بڑا فتنہ ہے۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  4. سید رافع

    سید رافع محفلین

    مراسلے:
    1,271
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    لفظ مذہب کے معنیٰ راستہ یا طریقہ ہے۔ ہر انسان مذہبی ہے۔ ہر انسان کسی راستہ یا طریقہ پر چل رہا ہے۔ یہ بات ہر ہر انسان کو مذہبی بنا دیتی ہے۔

    الہامی مذہب بھی محض ایک راستہ یا طریقہ ہی ہیں۔ یہ کر لو یہ نہ کرو۔ اس کو مان لو اس کو نہ مانو۔ گفتگو میں یہ طرز عمل ہر ہر انسان اپناتا ہے۔ اس لیے ہر ایک انسان جو اس کرہ ارض پر ہے وہ کسی نہ کسی راستہ یا طریقہ پر ہے سو مذہبی ہے۔

    کچھ افراد کا طریقہ ہے کہ اللہ کے بھید جاننے میں لگنے کو صحیح طریقہ جانتے ہیں۔ بعض اس طریقے کو صحیح نہیں سمجھتے۔ یہ انسانوں کی سب سے بڑی تقسیم ہے۔ جو اللہ کے بھید کو جاننے میں مصروف ہیں وہ کہتے ہیں کہ ہم نے اگر بھید جاننے کے عمل میں یکسوئی نہ دکھائی اور اس میں نہ لگے تو ہمیں دردناک عذاب ہو گا:

    3:91 بیشک جو لوگ کافر ہوئے اور حالتِ کفر میں ہی مر گئے سو ان میں سے کوئی شخص اگر زمین بھر سونا بھی (اپنی نجات کے لئے) معاوضہ میں دینا چاہے تو اس سے ہرگز قبول نہیں کیا جائے گا، انہی لوگوں کے لئے دردناک عذاب ہے اور ان کا کوئی مددگار نہیں ہو سکے گا

    اس پر دوسرے طریقے پر چلنے والا گروہ ہنسی مذاق میں اس بات کو اڑاتا ہے۔ چنانچہ اللہ کے راز جاننے میں منہمک لوگ ان سے کہتے ہیں:

    5:57 اے ایمان والو! ایسے لوگوں میں سے جنہیں تم سے پہلے کتاب دی گئی تھی، ان کو جو تمہارے دین کو ہنسی اور کھیل بنائے ہوئے ہیں اور کافروں کو دوست مت بناؤ، اور اﷲ سے ڈرتے رہو بشرطیکہ تم (واقعی) صاحبِ ایمان ہو
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  5. سید رافع

    سید رافع محفلین

    مراسلے:
    1,271
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    لفظ مذہب کے معنیٰ راستہ یا طریقہ ہے۔ ہر انسان مذہبی ہے۔ ہر انسان کسی راستہ یا طریقہ پر چل رہا ہے۔ یہ بات ہر ہر انسان کو مذہبی بنا دیتی ہے۔

    الہامی مذہب بھی محض ایک راستہ یا طریقہ ہی ہیں۔ یہ کر لو یہ نہ کرو۔ اس کو مان لو اس کو نہ مانو۔ گفتگو میں یہ طرز عمل ہر ہر انسان اپناتا ہے۔ اس لیے ہر ایک انسان جو اس کرہ ارض پر ہے وہ کسی نہ کسی راستہ یا طریقہ پر ہے سو مذہبی ہے۔

    کچھ افراد کا طریقہ ہے کہ اللہ کے بھید جاننے میں لگنے کو صحیح طریقہ جانتے ہیں۔ بعض اس طریقے کو صحیح نہیں سمجھتے۔ یہ انسانوں کی سب سے بڑی تقسیم ہے۔ جو اللہ کے بھید کو جاننے میں مصروف ہیں وہ کہتے ہیں کہ ہم نے اگر بھید جاننے کے عمل میں یکسوئی نہ دکھائی اور اس میں نہ لگے تو ہمیں دردناک عذاب ہو گا:

    3:91 بیشک جو لوگ کافر ہوئے اور حالتِ کفر میں ہی مر گئے سو ان میں سے کوئی شخص اگر زمین بھر سونا بھی (اپنی نجات کے لئے) معاوضہ میں دینا چاہے تو اس سے ہرگز قبول نہیں کیا جائے گا، انہی لوگوں کے لئے دردناک عذاب ہے اور ان کا کوئی مددگار نہیں ہو سکے گا

    اس پر دوسرے طریقے پر چلنے والا گروہ ہنسی مذاق میں اس بات کو اڑاتا ہے۔ چنانچہ اللہ کے راز جاننے میں منہمک لوگ ان سے کہتے ہیں:

    5:57 اے ایمان والو! ایسے لوگوں میں سے جنہیں تم سے پہلے کتاب دی گئی تھی، ان کو جو تمہارے دین کو ہنسی اور کھیل بنائے ہوئے ہیں اور کافروں کو دوست مت بناؤ، اور اﷲ سے ڈرتے رہو بشرطیکہ تم (واقعی) صاحبِ ایمان ہو
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1

اس صفحے کی تشہیر