1. اردو ویب کے سالانہ اخراجات کی مد میں فراخدلانہ تعاون پر احباب کا بے حد شکریہ نیز ہدف کی تکمیل پر مبارکباد۔ مزید تفصیلات ملاحظہ فرمائیں!

    $500.00
    اعلان ختم کریں

مجاز مجاؔز لکھنوی :::::: رَہِ شوق سے، اب ہَٹا چاہتا ہُوں::::::Majaz Lakhnawi

طارق شاہ نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏فروری 7, 2017

  1. طارق شاہ

    طارق شاہ محفلین

    مراسلے:
    10,616
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm

    [​IMG]
    غزل
    رَہِ شوق سے، اب ہَٹا چاہتا ہُوں
    کشِش حُسن کی دیکھنا چاہتا ہُوں

    کوئی دِل سا درد آشنا چاہتاہُوں
    رَہِ عِشق میں رہنُما چاہتا ہُوں

    تجھی سے تجھے چِھیننا چاہتا ہُوں
    یہ کیا چاہتا ہُوں، یہ کیا چاہتا ہُوں

    خطاؤں پہ، جو مجھ کو مائل کرے پھر
    سزا ، اور ایسی سزا چاہتا ہُوں

    وہ مخمُور نظریں، وہ مدہوش آنکھیں
    خرابِ محبّت ہُوا چاہتا ہُوں

    وہ آنکھیں جُھکِیں، وہ کوئی مُسکرایا
    پیامِ محبّت سُنا چاہتا ہُوں

    تجھے ڈُھونڈتا ہُوں، تِری جستجُو ہے
    مَزا ہے ، کہ خود گُم ہُوا چاہتا ہُوں

    یہ موجوں کی بے تابیاں کون دیکھے
    مَیں ساحِل سے اب لَوٹنا چاہتا ہُوں

    کہاں کا کَرَم، اور کیسی عنایت
    مجاؔز اب جَفا ہی جَفا چاہتا ہُوں

    اسرارالحق مجاؔز لکھنوی

    1911-1955
    لکھنؤ، انڈیا

     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2

اس صفحے کی تشہیر