1. احباب کو اردو ویب کے سالانہ اخراجات کی مد میں تعاون کی دعوت دی جاتی ہے۔ مزید تفصیلات ملاحظہ فرمائیں!

    ہدف: $500
    $413.00
    اعلان ختم کریں

مال و زر کی قدر کیا خون جگر کے سامنے ٭ طالب حسین طالب

محمد عدنان اکبری نقیبی نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اگست 6, 2019

  1. محمد عدنان اکبری نقیبی

    محمد عدنان اکبری نقیبی محفلین

    مراسلے:
    17,159
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    مال و زر کی قدر کیا خون جگر کے سامنے
    اہل دنیا ہیچ ہیں اہل ہنر کے سامنے

    دیر تک میں نے نہیں دیکھی پرندوں کے اڑان
    دیر تک بیٹھا تھا کوئی میرے گھر کے سامنے

    پاؤں پڑ جاتی ہیں لہریں پیچھے پڑ جاتی ہے شام
    روز سورج ڈوب جاتا ہے نظر کے سامنے

    جھیل پر کاٹی ہیں کتنی چاندنی راتیں مگر
    شعر کی دیوی نہیں آئی اتر کے سامنے

    یہ جلوس رنگ اپنے ساتھ کیا کچھ لے گیا
    قتل گل ہوتا رہا دیوار و در کے سامنے

    وقت مرہم ہے مگر مرہم کا بھی اک وقت ہے
    رو پڑا ہوں اک پرانے ہم سفر کے سامنے

    طالب حسین طالب
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1

اس صفحے کی تشہیر