نوشی گیلانی غزل

ہارون اعجاز نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏نومبر 18, 2016

  1. ہارون اعجاز

    ہارون اعجاز محفلین

    مراسلے:
    183
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Brooding
    رُکتا بھی نہیں ٹھیک سے ، چلتا بھی نہیں ھے
    یہ دل کہ تیرے بعد ، سنبھلتا بھی نہیں ھے

    اک عمر سے ھم اُس کی تمنا میں ھیں بے خواب
    وہ چاند جو آنگن میں ، اُترتا بھی نہیں ھے

    پھر دل میں تیری یاد کے ، منظر ھیں فروزاں
    ایسے میں کوئی ، دیکھنے والا بھی نہیں ھے

    ھمراہ بھی خواھش سے ، نہیں رھتا ھمارے
    اور بامِ رفاقت سے ، اُترتا بھی نہیں ھے

    اِس عمر کے صحرا سے ، تری یاد کا بادل
    ٹلتا بھی نہیں ، اور برستا بھی نہیں ھے

    نوشی گیلانی
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  2. صاحب عالم

    صاحب عالم محفلین

    مراسلے:
    1
    صنف نازک کی عکاسی کرتی ہے یہ غزل !
    بہت خوب ۔صاحب عالم
     
  3. دائم

    دائم محفلین

    مراسلے:
    200
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    InLove
    بے حد خوب صورت غزل، ترنم اور نزاکت کی ملی جلی کیفیات اور رنگِ یاس و قنوط میں گُندھی ہوئی شاندار غزل
     
  4. سردار محمد نعیم

    سردار محمد نعیم محفلین

    مراسلے:
    1,838
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Aggressive

اس صفحے کی تشہیر