1. اردو محفل سالگرہ شانزدہم

    اردو محفل کی سولہویں سالگرہ کے موقع پر تمام اردو طبقہ و محفلین کو دلی مبارکباد!

    اعلان ختم کریں

غزل

رشید حسرت نے 'آپ کی شاعری (پابندِ بحور شاعری)' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جون 18, 2021

ٹیگ:
  1. رشید حسرت

    رشید حسرت محفلین

    مراسلے:
    181
    جھنڈا:
    Pakistan
    میں ہُوں ذرّہ تُو اگر آفتاب اپنے لیئے
    تیرے سپنے ہیں، مِرے ٹُوٹے سے خواب اپنے لیئے

    میں نے سوچا ہے کِسی روز چمن کو جا کر
    چُن کے لاؤں گا کوئی تازہ گُلاب اپنے لیئے

    جِن کی تعبِیر نہِیں خواب وہ دیکھے میں نے
    شب گُزشتہ ہی تو سُلگائے وہ خواب اپنے لیئے

    تِیس پاروں کے تقدُّس کی قسم کھاتا ہوں
    نُور کا دھارا ہے یہ پاکِیزہ کتاب اپنے لیئے

    وقت کی دُھوپ کو چھاؤں میں بدل لیتے ہیں
    میں ہوں خیمہ تو مِرے دوست تناب اپنے لیئے

    کیوں بھلا کچّے گھڑوں پہ بھی بھروسہ رکھیں
    چھوڑ دے راستہ، دریائے چنابؔ! اپنے لیئے

    بہتے دریاؔ پہ روانی ہے، ابھی زندہ ہیں
    لے ہی لیجے گا کوئی توشہ جناب اپنے لیئے

    لوگ، لوگوں کا لہو پِیتے ہیں تو کُچھ بھی نہِیں
    اور ہوتی ہے حرام صِرف شراب اپنے لیئے

    میں اُٹھاتا ہوں ابھی اپنے گُناہوں کا بوجھ
    تُم نے تو چُن کے کتابوں سے ثواب اپنے لِیئے

    آپ کے پاس حویلی ہے اگر،
    ہوگی جناب
    ماورا محل سے ہے جھونپڑا، صاب اپنے لیئے

    ہم بھی اک روز ترقّی کی ڈگر پر ہوں گے
    بات یہ گویا ہے صحرا کا سراب اپنے لیئے

    کوئی جانے سے کِسی کے نہِیں مرتا حسرتؔ
    صِرف یادیں ہی تو ہوتی ہیں عذاب اپنے لیئے

    رشید حسرتؔ
     

اس صفحے کی تشہیر