سلیم احمد غزل : زندگی عشق کے سب سود و زیاں بھول گئی - سلیم احمد

فرحان محمد خان نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جنوری 22, 2019

  1. فرحان محمد خان

    فرحان محمد خان محفلین

    مراسلے:
    2,138
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheeky
    غزل
    زندگی عشق کے سب سود و زیاں بھول گئی
    کارِ دل بھول گئی کارِ جہاں بھول گئی

    دربدر ٹھوکریں کھا کر مری آشفتہ سری
    لوٹ کر آئی تو خود اپنا مکاں بھول گئی

    اب کبھی آئے تو بیکانہ گزر جاتی ہے
    شامِ فرقت تری یادوں کا سماں بھول گئی

    کیا خبر سوچتے ہوں ماؤں کے بھیگے آنچل
    ذائقہ دودھ کا بچوں کی زباں بھول گئی

    جنسِ راحت کا خریدار بنا کر مجھے عمر
    لے کے بازار میں آئی تو دکاں بھول گئی

    یادِ یاراں شبِ تنہائیِ ہجراں میں سلیمؔ
    اک دیا تھا کہ جلا کر سرِ جاں بھول گئی
    سلیمؔ احمد
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1

اس صفحے کی تشہیر