ابن انشا غزل : راز کہاں تک راز رہے گا منظرِ عام پہ آئے گا - ابنِ انشا

فرحان محمد خان نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏فروری 22, 2019

  1. فرحان محمد خان

    فرحان محمد خان محفلین

    مراسلے:
    2,144
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheeky
    غزل
    راز کہاں تک راز رہے گا منظرِ عام پہ آئے گا
    جی کا داغ اُجاگر ہو کر سورج کو شرمائے گا

    شہروں کو ویران کرے گا اپنے آنچ کی تیزی سے
    ویرانوں میں مست البیلے وحشی پُھول کھلائے گا

    ہاں یہی شخص گداز و نازک ، ہونٹوں پر مسکان لیے
    اے دل اپنے ہاتھ لگاتے پتھر کا بن جائے گا

    دیدہ و دل نے درد کی اپنے بات بھی کی تو کس سے کی
    وہ تو درد کا بانی ٹھہرا وہ کیا درد بٹائے گا

    تیرا نور ظہور سلامت ، اک دن تجھ پر ماہِ تمام
    چاند نگر کا رہنے والا چاند نگر لکھ جائے گا
    ابنِ انشا
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
    • زبردست زبردست × 3
  2. رفعت رضا_

    رفعت رضا_ محفلین

    مراسلے:
    12
    جھنڈا:
    Pakistan
    بہت اعلیٰ
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  3. محمد خلیل الرحمٰن

    محمد خلیل الرحمٰن مدیر

    مراسلے:
    9,904
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Festive
    اردو محفل میں خوش آمدید رفعت بہنا!
     
  4. منذر رضا

    منذر رضا محفلین

    مراسلے:
    366
    جھنڈا:
    Pakistan
  5. Muhmmad Abrar

    Muhmmad Abrar محفلین

    مراسلے:
    5
    دیدہ و دل نے درد کی اپنے بات بھی کی تو کس سے کی
    وہ تو درد کا بانی ٹھہرا وہ کیا درد بٹائے گا

    کیا کہنے انشاء جی کے خوبصورت انتخاب
     
  6. نیرنگ خیال

    نیرنگ خیال لائبریرین

    مراسلے:
    18,068
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Dunce
    اعلی
     

اس صفحے کی تشہیر