1. احباب کو اردو ویب کے سالانہ اخراجات کی مد میں تعاون کی دعوت دی جاتی ہے۔ مزید تفصیلات ملاحظہ فرمائیں!

    ہدف: $500
    $453.00
    اعلان ختم کریں

غزل برائے اصلاح

محمد فائق نے 'اِصلاحِ سخن' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جولائی 11, 2019

  1. محمد فائق

    محمد فائق محفلین

    مراسلے:
    299
    ہنر حیات کا تدبیر کے نصاب میں تھا
    میں بد نصیبی سے قسمت کے پیچ وتاب میں تھا

    خود اپنے آپ سے آگاہی ہوسکی نہ مری
    مرا وجود خدا جانے کس سراب میں تھا

    یہ اور بات نہ تھا انتخاب میں شامل
    وگرنہ ذکر مرا بھی تری کتاب میں تھا

    اٹھایا جاتا نہ کیوں بزمِ شاد مانی سے
    میں مجلسِ غمِ دوراں کے انتخاب میں تھا

    رہا جواب سے محروم عمر بھر فائق
    وہ اک سوال کہ جو زندگی کے باب میں تھا
     
  2. محمد فائق

    محمد فائق محفلین

    مراسلے:
    299
  3. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    33,523
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    درست ہے غزل
    بس اس شعر میں
    خود اپنے آپ سے آگاہی ہوسکی نہ مری
    مرا وجود خدا جانے کس سراب میں تھ
    پہلا مصرع آگاہی کی ی کے اسقاط کے ساتھ 'ہی ہو' سے پیدا شدہ تنافر کے باعث رواں نہیں ۔ پہچان استعمال کرنے میں کیا مشکل ہے؟
     
    • زبردست زبردست × 1
  4. محمد فائق

    محمد فائق محفلین

    مراسلے:
    299
    بہت شکریہ سر رہنمائی کے لیے
     

اس صفحے کی تشہیر