شاہنامہء فردوسی میں نافہمیدنی الفاظ و جملات سے متعلق سوالات۔

اریب آغا نے 'ادبیات و لسانیات' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جون 23, 2018

  1. اریب آغا

    اریب آغا محفلین

    مراسلے:
    744
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    سلامت باشید۔
    فارسی شاعری کے بلند شاہکاروں میں سے ایک شاہنامہء فردوسی ہے۔ البتہ شاہنامہ‌خوانی کے دوران جن چیزوں کا میں فہم نہ کرسکا، اس لڑی میں مَیں برادرم حسان خان سے ان چیزوں کے متعلق سوالات کروں گا۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  2. اریب آغا

    اریب آغا محفلین

    مراسلے:
    744
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    هم آرام ازویست و هم کار ازوی
    هم انجام ازویست و فرجام ازوی
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

    سپاس از جهاندارِ پیروزگر
    کزویست نیرو و فر و هنر

    ان دونوں ابیات میں 'از' اور 'وے' یا 'ویست' جدا واژے ہیں یا انہیں یکجا ہی تلفظ کیا جائے گا؟
     
  3. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    14,725
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    شاہنامۂ فردوسی کے ذخیرۂ الفاظ اور دستورِ زبان میں ذرا قدامت ہے، کیونکہ وہ بہر حال ہزار سال قدیم منظومہ ہے، اِس لیے اُس کی خوانِش میں مُبتَدیوں کو مسئلہ ہو سکتا ہے۔ میں بھی کئی مقامات پر سردرگُم (اُلجھن کا شکار) رہ جاتا ہوں، اور کئی ابیات کا مفہوم دُرستی سے سمجھ نہیں آ پاتا۔ میں بھی آپ کی طرح شاہنامۂ فردوسی کا طالبِ علم ہوں۔ آپ کے جن سوالات کا جواب دینا میرے لیے ممکن ہوا، دوں گا۔
     
    آخری تدوین: ‏جون 23, 2018
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  4. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    14,725
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    ازُویست = از + او + است
    ازُوی = از + او(ی)
    کزُویست = کہ + از + او + است

    اِن تینوں کا تلفُّظ مِلا کر یکجا کیا جائے گا۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  5. اریب آغا

    اریب آغا محفلین

    مراسلے:
    744
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    کیا یہاں او کے بجائے وے نہیں ہے؟
     
  6. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    14,725
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    اگرچہ 'وَی' اور 'اُو' مترادف ہیں، لیکن یہاں پر 'اُو(ی)' ہے۔

    بیت کو یوں بھی لکھا جا سکتا ہے:
    هم آرام از اُویست و هم کام از اُوی
    هم انجام از اُویست و فرجام از اُوی
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  7. اریب آغا

    اریب آغا محفلین

    مراسلے:
    744
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    زمانه به مردم شد آراسته
    و زو ارج گیرد همی خواسته
    --------------


    یہاں خواستہ سے مراد مطلوب و مقصود ہے یا مال و زر؟
     
  8. اریب آغا

    اریب آغا محفلین

    مراسلے:
    744
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    ز فرمان و رایش کسی نگذرد
    پی مور بی‌او زمین نسپرد
    ------------------------

    دوسرے مصرعے کا معنی یہ ہے کہ خدا کے بدوں زمین چیونٹی کو پامال نہیں کرسکتی؟ یا خدا کے بدوں چیونٹی زمین میں نہیں جاسکتی؟
     
  9. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    14,725
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    میرے خیال سے یہاں 'خواستہ' کا معنی مال و زر ہے، اور فردوسی مصرعِ ثانی میں کہہ رہے ہیں کہ مال و ثروت مردُم ہی کے باعث/ذریعے قدر و قیمت حاصل کرتی ہے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  10. حسان خان

    حسان خان لائبریرین

    مراسلے:
    14,725
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    [خدا کے فرمان] کے بغیر چیونٹی کا پیر زمین طے نہیں کر سکتا۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1

اس صفحے کی تشہیر