سانحہ ماڈل ٹاؤن : لاہور سیشن کورٹ نے وزیر اعظم اور وزیر اعلیٰ کے خلاف مقدمہ درج کرنے کا حکم دے دیا

زرقا مفتی نے 'آج کی خبر' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اگست 16, 2014

  1. زرقا مفتی

    زرقا مفتی محفلین

    مراسلے:
    3,591
    جھنڈا:
    Pakistan
    لاہور: سانحہ ماڈل ٹاؤن لاہور کے حوالے سے تشکیل دی گئی مشترکہ تحقیقاتی ٹیم نے اپنی رپورٹ مکمل کرلی ہے جس میں وزیر اعلیٰ شہباز شریف، رانا ثنا اللہ اور ڈاکٹر توقیر شاہ کے خلاف مقدمہ درج کرنے کی سفارش کی گئی ہے۔

    ایکسپریس نیوز کے مطابق تحقیقاتی ٹیم کی رپورٹ میں وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف، سابق وزیر قانون رانا ثنا اللہ اور ڈاکٹر توقیر شاہ کے خلاف مقدمہ درج کرنے کی سفارش کی گئی ہے جبکہ رپورٹ میں پولیس افسران کو بھی شامل تفتیش کرنے کی سفارش بھی کی گئی ہے۔ رپورٹ آج اعلیٰ حکام کو پیش کی جائے گی۔

    http://www.express.pk/story/282660/
     
    • غیر متفق غیر متفق × 1
  2. x boy

    x boy محفلین

    مراسلے:
    6,208
    جھنڈا:
    UnitedArabEmirates
    موڈ:
    Breezy
    کچھ نہیں ہوگا، یہ تو مشرف سے بچ جانے والا شاہکار ہے پھر انکے جانے کے بعد دوبارہ اسی جگہہ پر۔
     
  3. زرقا مفتی

    زرقا مفتی محفلین

    مراسلے:
    3,591
    جھنڈا:
    Pakistan
    • غیر متفق غیر متفق × 1
  4. زرقا مفتی

    زرقا مفتی محفلین

    مراسلے:
    3,591
    جھنڈا:
    Pakistan
    • غیر متفق غیر متفق × 1
  5. زرقا مفتی

    زرقا مفتی محفلین

    مراسلے:
    3,591
    جھنڈا:
    Pakistan
    [​IMG]
     
    • متفق متفق × 3
    • غیر متفق غیر متفق × 1
  6. زرقا مفتی

    زرقا مفتی محفلین

    مراسلے:
    3,591
    جھنڈا:
    Pakistan
    LAHORE: In what is bound to provide fodder for protest rallies already calling for heads to roll, a number of members of a joint investigation team (JIT) investigating the Model Town shootings held the Shahbaz Sharif-led government responsible for the tragic incident, The Express Tribune has learnt.

    According to sources, a few members of the JIT – which comprises representatives of the Inter Services Intelligence (ISI), Military Intelligence (MI), Intelligence Bureau (IB), Police, Special Branch (SB) and Counter Terrorism Department (CTD) – have included an ‘Ikhtilafi’ (dissenting) note in the report, which pins the blame on the lower cadres of the police force.

    The note states that Punjab Chief Minister Shahbaz Sharif, then Punjab law minister Rana Sanaullah, then principal secretary to the chief minister Dr Tauqeer Shah and other senior police officers were directly or indirectly responsible for the killing of over a dozen PAT workers.

    At least 14 PAT workers were killed and over 100 people were injured when police clashed with PAT workers on June 17 in front of Tahirul Qadri’s residence in Model Town, Lahore.

    According to sources, Punjab police, the Special Branch, CTD and civilian spy agency, IB, tried to indict low-ranking police officials by convincing the Superintendent of Police (SP) Model Town to admit that he had only ordered policemen to open aerial fire after PAT workers opened fire on the police. The SP’s statement, however, could not be supported by any evidence because no weapons were recovered from PAT workers.

    Further, in the dissenting note, the officials said that the FIR registered by the police on the Model Town incident should be discharged because PAT had not accepted it, no witnesses of the aggrieved party had appeared and the police had hidden key facts pertaining to the case.

    Despite the JIT’s recommendations, Faisal Town police station has refused to register a case according to the PAT application in which 21 persons, including Prime Minister Nawaz Sharif, Punjab Chief Minister Shahbaz Sharif and Interior Minister Chaudhry Nisar Ali Khan, have been named.

    The 32-page JIT report has been submitted to the Punjab home secretary, Punjab inspector general of police and other concerned officials, sources familiar with the matter told The Express Tribune.

    On Thursday, due to the completion of the investigation and submission of a charge sheet, an Anti-Terrorism Court sent four policemen, including Station House Officer (SHO) Sheikh Amir Saleem, Elite Force Inspector Hafiz Athar and two other low-ranking officials, on a 14-day judicial remand for their alleged involvement in the Model Town tragedy. The police said that the investigation process had been completed and there was no need to remand any other officials.
    http://tribune.com.pk/story/753398/...ing-note-in-jit-report-pins-blame-on-shahbaz/
     
    • غیر متفق غیر متفق × 1
  7. زرقا مفتی

    زرقا مفتی محفلین

    مراسلے:
    3,591
    جھنڈا:
    Pakistan
    [​IMG]

    [​IMG]

    [​IMG]
     
    • متفق متفق × 2
    • معلوماتی معلوماتی × 1
    • غیر متفق غیر متفق × 1
  8. x boy

    x boy محفلین

    مراسلے:
    6,208
    جھنڈا:
    UnitedArabEmirates
    موڈ:
    Breezy
    پاکستان سانحہ والا ملک ہے ہر مہینے کچھ نہ کچھ سانحہ ہوتا ہے
     
  9. زرقا مفتی

    زرقا مفتی محفلین

    مراسلے:
    3,591
    جھنڈا:
    Pakistan


     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • غیر متفق غیر متفق × 1
  10. آبی ٹوکول

    آبی ٹوکول محفلین

    مراسلے:
    3,502
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Drunk
    لاہور(خصوصی رپورٹ) سانحہ ماڈل ٹاﺅن کی تحقیقات کرنیوالے جوڈیشل کمیشن کی رپورٹ کے اہم مندرجات سامنے آگئے ہیں جس میں قراردیاگیاہے کہ سابق صوبائی وزیرقانون کی زیرصدارت ہونیوالے اجلاس کے فیصلے سے پاکستان کی تاریخ کا بدترین قتل عام ہواہے جبکہ وزیراعلیٰ پنجاب کے بیان حلفی اور حقائق میں بھی واضح تضادپایاگیا، پنجاب پولیس بھی پوری طرح خون کی ہولی کھیلنے میں ملوث ہے ۔
    تفصیلات کے مطابق رپورٹ کے مندرجات میں جوڈیشل کمیشن نے کہاہے کہ 17جون کا صوبائی حکومت کا ماڈل ٹاﺅن میں ایکشن غیرقانون ، بیریئرقانونی تھے ، پولیس نے وہی کچھ کیا جس کا اُسے حکم دیاگیااورپولیس نے منظوری سے ہی آپریشن کیاجس سے بے گناہ لوگ قتل ہوئے ۔
    جوڈیشل کمیشن نے قراردیاہے کہ وزیراعلیٰ پنجاب نے اپنے بیان حلفی میں کہاہے کہ واقعہ علم میں آنے پر پیچھے ہٹنے کا حکم دیاتھا جس کا وزیراعلیٰ پنجاب نے سانحے کے روز کی گئی ہنگامی پریس کانفرنس میں ذکرکیا اور نہ ہی اُس وقت کے وزیرقانون و سیکریٹری ڈاکٹر توقیر شاہ نے اپنے بیان حلفی میں ذکر کیا،عجب بات ہے کہ اتنے اہم احکامات وزیراعلیٰ پنجاب اپنی پریس کانفرنس میں بیان کرناہی بھول گئے ؟ ثابت ہوگیا کہ وزیراعلیٰ پنجاب نے پولیس کو کبھی پیچھے ہٹنے کا حکم نہیں دیا۔
    دنیانیوز پر نشر ہونیوالے مندرجات میں عدالتی کمیشن نے کہاہے کہ کام کرنے میں مشکلات کا سامنا رہااور رکاوٹیں ڈالنے کی بھی کوشش کی گئی ، ذمہ داران کے تعین کا اختیار نہیں دیاگیالہٰذا مزید گہرائی میں جانے کا کمیشن کے پاس اختیار نہیں ۔

    رپورٹ پر اپنا ردعمل دیتے ہوئے رانا ثناءاللہ کاکہناتھاکہ جب سے اسلام آباد میں دھرنے جاری ہیں ، آئے روز ایسے ڈرامے ہورہے ہیں ، وزیراعلیٰ کے بیان پر کسی نے بھی جرح نہیں کی ۔
    http://dailypakistan.com.pk/national/26-Aug-2014/136774
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  11. زیک

    زیک محفلین

    مراسلے:
    38,232
    جھنڈا:
    UnitedStates
    موڈ:
    Amused
    14 لوگوں کو پولیس نے مار دیا اور اس پر ابھی تک کچھ نہیں ہو سکا یہ انتہائی ظلم ہے۔ مگر جو یہ کہے کہ یہ پاکستان کی تاریخ کا بدترین قتل عام ہے وہ تاریخ سے مکمل طور پر ناواقف ہے۔
     
    • متفق متفق × 3
  12. لئیق احمد

    لئیق احمد معطل

    مراسلے:
    12,179
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
     
  13. صرف علی

    صرف علی محفلین

    مراسلے:
    1,101
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    کچھ نہیں ہونا یہاں دہشت گردوں کو مارنے پر کیس ہوتا ہے 14 مظلوم مارے گئے تو کیا ہوا اگر یہ لوگ دہشت گرد ہوتے تو پھر کیس بنتا
     
    • متفق متفق × 1
  14. زرقا مفتی

    زرقا مفتی محفلین

    مراسلے:
    3,591
    جھنڈا:
    Pakistan
    [​IMG]
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
    • غیر متفق غیر متفق × 1
  15. ابن رضا

    ابن رضا لائبریرین

    مراسلے:
    4,236
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Brooding
    یہ رمدے صاحب وہی ہیں جن پر الیکشن میں دھاندلی کروانے کے الزامات منظرِ عام پر ہیں؟؟؟؟؟؟؟:surprise: اور انہیں ہی کمیٹی کا سربراہ بنا دیا گیا؟
     
  16. زرقا مفتی

    زرقا مفتی محفلین

    مراسلے:
    3,591
    جھنڈا:
    Pakistan
    جی ہاں بھروسے کا قابل نظر آئے ہونگے ۔ کیا ایسی کمیٹی کی سربراہی کے لئے کسی غیر جانبدار شخصیت کا انتخاب ضروری نہیں تھا
     
    • متفق متفق × 1
    • غیر متفق غیر متفق × 1
  17. زرقا مفتی

    زرقا مفتی محفلین

    مراسلے:
    3,591
    جھنڈا:
    Pakistan
    نواز شریف نے ماڈل ٹاؤن سانحے میں جاں بحق ہونے والے کے خون کی قیمت دو ارب روپے سے زیادہ لگا دی ۔ خواجہ سعد رفیق نے قومی اسمبلی میں خطاب کے دوران انکشاف کیا
    سوال یہ ہے کہ دیت کون ادا کرتا ہے ؟اور کیا شریعت دیت کی ادائیگی کے بعد قاتلوں کو حکومت کرنے کی رعایت بھی دیتی ہے ؟
    کیا
    قیمت ہر کسی کی ہے دوکاں پر لگی ہوئی
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
    • غیر متفق غیر متفق × 1
  18. ابن رضا

    ابن رضا لائبریرین

    مراسلے:
    4,236
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Brooding
    اگر دیت ادا کریں بھی تو دو ارب کی بولی لگائیں یا دس ارب کی انہوں نے کون سا اپنی جیب سے ادا کرنا ہے رانا مشہود جیسے لوگوں کی ذمہ داری لگائیں گے کہ مجرموں کے ساتھ ملی بھگت کرو اور ان سےسی ایم دیت فنڈ میں وصولیاں کرو۔
     
  19. آبی ٹوکول

    آبی ٹوکول محفلین

    مراسلے:
    3,502
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Drunk
    پہلے سانحہ ماڈال ٹاؤن کہ زمہ داران کے تعین کے لیے جوڈیشل کمیشن بنایا اور اب کمیشن ری پورٹ آنے کہ بعد اس ری پورٹ میں سے زمہ داروں کا تعین کرنے کے لیے ایک کمیٹی بنا دی پھر وہ کمیٹی جو تعین کرئے گی اس تعین کا تعین کرنے کے لیے ایک اس سے بھی بڑا جوڈیشل کمیشن اور پھر کمیشن کی ری پورٹ کو پھر ایک بار متعین کرنے کے لیے ایک اور لارج کمیٹی اور یوں یہ کمیٹی اور کمیشن کا کھیل جاری رہے گا عوام جمہوریت کے نام پر بے وقوف بنتے رہیں گے میڈیا کی دکانداری بھی چمکتی رہے گی اور اس پر آئینی اور قانونی ماہرین کی بھی چاندی رہے گی یہاں تک کہ شہباز شریف کا نام کسی طرح سے اس سارے کھیل سے نکال باہر کیا جائے اور پھر آخر میں جمہوریت زندہ باد آئین زندہ باد جبکہ عوام مردہ باد۔۔۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  20. زرقا مفتی

    زرقا مفتی محفلین

    مراسلے:
    3,591
    جھنڈا:
    Pakistan
    ماڈل ٹاؤن سانحے کے ایک اہم کردار کینیڈا چلے گئے
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
    • غیر متفق غیر متفق × 1

اس صفحے کی تشہیر