دکن کے معروف و منفرد شاعر جناب غیاث متین کا انتقال

حیدرآبادی نے 'اردو نامہ' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اگست 21, 2007

  1. حیدرآبادی

    حیدرآبادی محفلین

    مراسلے:
    154
    پرفیسر غیاث متین
    سابق صدر شعبہ اردو ، جامعہ عثمانیہ ، حیدرآباد ، انڈیا
    کا انتقال پُر ملال​


    السلام علیکم
    معزز قارئین
    ابھی کچھ دن قبل ہم نے پاکستان کی لال مسجد سانحے کے متعلق ایک نظم ’زمین والوں کے نام‘ ، اردو محفل پر یہاں لگائی تھی۔
    حیدرآباد کے جس معروف اور منفرد قادر الکلام شاعرِ محترم جناب غیاث متین کی وہ نظم تھی ، وہی محبی و محترمی شاعر مشیت یزدی سے آج بروز منگل 21۔اگست 2007ء بوقت شام چھ بجے (ہندوستانی معیاری وقت) انتقال فرما گئے۔
    انا للہ وانا الیہ راجعون۔

    معزز قارئینِ اردو محفل سے ادباََ گذارش ہے کہ جناب غیاث متین کے لیے دعائے مغفرت فرمائیں ۔ اللہ رب العزت سے دعا ہے کہ وہ پسماندگان کو صبر جمیل کی توفیق عطا فرمائے ، آمین۔

    غیاث متین کا انتخابِ کلام
     
  2. تلمیذ

    تلمیذ لائبریرین

    مراسلے:
    3,914
    موڈ:
    Cool
    الل۔ّھ تعالیٰ مغفرت فرمائیں

    دو روز میں تین ادبی شخصیات کے انتقال کی خبریں ملی ہیں ، لگتا ہے اُردو ادب پر بھاری وقت ہے۔

    گیان چند ، قرۃ العین حیدر اور اب پروفیسر غیاث متین۔

    باری تعالےٰ سے دعا ہے کہ ان سب کو اپنے جوارِ رحمت میں جگہ عطا فرمائیں۔ آؔمین !!
     
  3. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    35,986
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    اوہو۔ پچھلےاتوار کو ان سے ملاقات ہوئی تھی جب ہم دونوں ادارہ تہذیبِ ادب کی ایک نشست میں شریک تھے جو سعودی سے فہیم جاوید کی آمد اور ان کے اعزاز میں ہوئی تھی۔ غیاث متین صاحب نے جو غزل سنائی تھی، وہ اگرچہ دکنی اسلوب کی تھی، اور غیر دکنی کو سمجھنے میں دقت پیش آ سکتی تھی۔ اس کا ایک مصرعہ یہ یاد رہ گیا
    یہ منظر آنکھ کے پردے سے ہٹتے دن لگیں گے
    ردیف تھی دن لگیں گے۔ اور پہلا مصرعہ یاد نہیں رہا لیکن مرزد کچھ یہ تھی کہ محبوب ہر نم آنکھوں سے مسکرا رہا تھا۔ اور بعد میں میں نے ان کو اپنا یہ شعر سنایا تھا اسی قسم کے موضوع پر کہ
    گلے لگ کر مرے جانے وہ ہنستا تھا کہ روتا تھا
    نہ کھِل کر دھوپ پھیلی تھی، نہ بادل کھُل کے برسا تھا
    بہر حال موت پر کس کی ترستگاری ہے۔۔ اور یہ کہ عجب اک حادثہ سا پہو گیا ہے۔ عینی آپا اور گیان چند کے بعد۔
     
  4. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    35,986
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    حیدرآبادی۔ کیا ان کا کچھ اور مواد آپ مہیا کر سکتے ہیں۔ یہاں تمھارا پوسٹ کیا ہوا مواد بھی ہے، اس کے علاوہ کچھ اور مل جائے تو ’سمت‘ کے اگلے شمارے میں عینی آپا اور غیاث کے گوشے شامل کر دوں۔
     
  5. محمد وارث

    محمد وارث لائبریرین

    مراسلے:
    26,981
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Depressed
    انا للہ و انا الیہ راجعون

    پچھلے دو تین دنوں سے بہت بھاری خبریں آرہی ہیں اردو کیلیے۔

    اللہ تعالٰی مرحوم کو جنت الفردوس میں جگہ دیں، آمین یا رب العالٰمین۔
     
  6. قیصرانی

    قیصرانی لائبریرین

    مراسلے:
    45,875
    جھنڈا:
    Finland
    موڈ:
    Festive
    انا للہ و انا الیہ راجعون
     
  7. حیدرآبادی

    حیدرآبادی محفلین

    مراسلے:
    154
    محترم اعجاز اختر صاحب ! پروفیسر غیاث متین ، میرے ایک قریبی رشتہ دار بھی تھے۔
    یوں سمجھئے کہ ہم کچھ کزنز اور بھائی بہنوں کی اردودانی اور ادبی ذوق کی آبیاری میں مرحوم کا بھی کافی حصہ تھا۔ میرے بچپن کا کچھ حصہ ان کی گود میں بھی بیتا۔
    ان کا کافی مواد ہے میرے پاس ، لیکن ڈھونڈنے کا مسئلہ ہے اور شائد ان پیج فائلوں میں‌ہے۔ یہ سارا مواد میں‌ نے بہت پہلے اردوستان پر لگایا تھا۔
    بہرحال آپ کو بھیجتا ہوں اور ان شاءاللہ کل یا پرسوں تک مرحوم پر ایک تاثراتی مضمون بھی سمت کے لیے آپ کو ای۔میل کروں‌ گا۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  8. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    35,986
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    شکریہ حیدر‌آبادی۔ اپنے بارے میں تفصیل بھی ذ پ کریں، فون نمبرس وغیرہ۔
     
  9. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    35,986
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    غیاث صاحب کا شعر یوں تھا
    بچھڑتے وقت آنسو روک کر وہ ہنس رہا تھا
    یہ منظر آنکھ کے پردے سے ہٹنے دن لگیں گے
    دیکھیں آج کے منصف میں اس تقریب کی رپورٹ

    http://www.munsifdaily.com/NEWS/adab7.gif
     

اس صفحے کی تشہیر