جون ایلیا ::::: جون ایلیا مر مِٹا ہُوں خیال پر اپنے ::::: Jon Elia

طارق شاہ نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏مئی 21, 2015

  1. طارق شاہ

    طارق شاہ محفلین

    مراسلے:
    10,623
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    جون ایلیا

    مر مِٹا ہُوں خیال پر اپنے
    وجد آتا ہے حال پر اپنے

    ابھی مت دِیجیو جواب، کہ میں
    جُھوم تو لوُں سوال پر اپنے

    عُمر بھر اپنی آرزُو کی ہے
    مر نہ جاؤں وصال پر اپنے

    اِک عطا ہے مِری ہوس نِگہی
    ناز کر خدّ و خال پر اپنے

    اپنا شوق ایک حیلہ ساز، سو اب
    شک ہے اُس کو جمال پر اپنے

    جانے اُس دَم، وہ کِس کا مُمکن ہو
    بحث مت کر مُحال پر اپنے

    بس یُونہی میرا گال رکھنے دے
    میری جان آج گال پر اپنے

    کوئی حالت تو اعتبار میں ہے
    خوش ہُوا ہُوں ملال پر اپنے

    خود پہ نادم ہُوں جون، یعنی میں
    اِن دِنوں، ہُوں کمال پر اپنے

    جون ایلیا
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3

اس صفحے کی تشہیر