تصحیح

محمد عمیر پیرزادہ نے 'بزم سخن' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اپریل 4, 2020

  1. محمد عمیر پیرزادہ

    محمد عمیر پیرزادہ محفلین

    مراسلے:
    27
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    برائے اصلاح میں نے سہوا اسے براہ اصلاح لکھ دیا اپنی گزشتہ پوسٹ پر۔معزرت۔

    ایک وضاحت چاہوں گا۔ رباعی اور قطعات میں اک فرق تو یہ ہے کہ رباعی میں پہلا،دوسرا اور چوتھا مصرعہ ہم قافیہ ہے جبکہ قطعات میں دوسرا اور جوتھا۔ کیا کوئ اور فرق بھی ہے۔کوئ رہنمائ فرما دے۔شکریہ
     
  2. محمد خلیل الرحمٰن

    محمد خلیل الرحمٰن مدیر

    مراسلے:
    9,164
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Festive
    عمیر بھائی! رُباعی کی کچھ مخصوص مروجہ بحور ہیں جبکہ قطعہ کسی بھی بحر میں لکھ سکتے ہیں۔ رُباعی کی بحور مشکل بحور ہیں ۔ محمد وارث صاحب کی ویب سائیٹ پر ایک خوبصورت مضمون اس ضمن میں موجود ہے۔
    صریرِ خامۂ وارث: رباعی کے اوزان پر ایک بحث


    قطعہ علیحدہ بھی ہوسکتا ہے دو یا دو سے زیادہ اشعار پر مشتمل ہوسکتا ہے، یہاں تک کہ دیسوں اشعار پر بھی مشتمل ہوسکتا ہے ۔ قطعہ کسی غزل کا ایک حصہ بھی ہوسکتا ہے ( اس صورت میں ہم نے عام طور پر دو اشعار پر مشتمل ہی قطعہ دیکھا جو کسی غزل کا حصہ ہوتا ہے)۔
     
    آخری تدوین: ‏اپریل 4, 2020

اس صفحے کی تشہیر