1. احباب کو اردو ویب کے سالانہ اخراجات کی مد میں تعاون کی دعوت دی جاتی ہے۔ مزید تفصیلات ملاحظہ فرمائیں!

    ہدف: $500
    $453.00
    اعلان ختم کریں

ناز خیالوی "بہت عرصہ گنہگاروں میں پیغمبر نہیں رہتے" نازؔ خیالوی

فرحان محمد خان نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اپریل 27, 2017

  1. فرحان محمد خان

    فرحان محمد خان محفلین

    مراسلے:
    2,077
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheeky
    بہت عرصہ گنہگاروں میں پیغمبر نہیں رہتے
    کہ سنک و خشت کی بستی میں شیشہ گر نہیں رہتے

    ادھوری ہر کہانی ہے یہاں ذوقِ تماشہ کی
    کبھی نظریں نہیں رہتیں کبھی منظر نہیں رہتے

    بہت مہنگی پڑے گی پاسبانی تم کو غیرت کی !
    جو دستاریں بچا لیتے ہیں ان کے سر نہیں رہتے

    مجھے نادم کیا کل رات دروازے نے یہ کہہ کر
    شریف انسان گھر سے دیر تک باہر نہیں رہتے

    خود آگاہی کی منزل عمر بھر ان کو نہیں ملتی
    جو گوچہ گرد اپنی ذات کے اندر نہیں رہتے

    پٹخ دیتا ہے ساحل پر سمندر مُردہ جسموں کو
    زیادہ دیر تک اندر کے کھوٹ اندر نہیں رہتے

    بجا ہے زعم سورج کو بھی نازؔ اپنی تمازت پر
    ہمارے شہر میں بھی موم کے پیکر نہیں رہتے
    نازؔ خیالوی
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
  2. اَبُو مدین

    اَبُو مدین معطل

    مراسلے:
    695
    بہت عرصہ گنہگاروں میں پیغمبر نہیں رہتے
    کہ سنگ و خشت کی بستی میں شیشہ گر نہیں رہتے

    ادھوری ہر کہانی ہے یہاں ذوقِ تماشہ کی
    کبھی نظریں نہیں رہتیں، کبھی منظر نہیں رہتے

    بہت مہنگی پڑے گی پاسبانی تم کو غیرت کی!
    جو دستاریں بچا لیتے ہیں ان کے سر نہیں رہتے

    مجھے نادم کیا کل رات دروازے نے یہ کہ کر
    شریف انسان گھر سے دیر تک باہر نہیں رہتے

    خود آگاہی کی منزل عمر بھی ان کو نہیں ملتی
    جو کوچہ گرد اپنی ذات کے اندر نہیں رہتے

    پٹخ دیتا ہے ساحل پر سمندر مردہ جسموں کو
    زیادہ دیر تک اندر کے کھوٹ اندر نہیں رہتے

    بجا ہے زعم سورج کو بھی نازؔ اپنی تمازت پر
    ہمارے شہر میں بھی موم کے پیکر نہیں رہتے

    لہو کے پھول
    (نازؔ خیالوی)​
     
    آخری تدوین: ‏مئی 7, 2017
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • زبردست زبردست × 1
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  3. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    10,802
    جھنڈا:
    Pakistan
    مطلع کا پہلا مصرع غضب کا ہے...
     
    • متفق متفق × 1
  4. اَبُو مدین

    اَبُو مدین معطل

    مراسلے:
    695
    محمد وارث صاحب سے گزارش ہے کہ پسندیدہ کلام کے زمرے میں ناز خیالوی صاحب کا سابقہ بھی شامل کر دیا جائے تو عین نوازش ہو گی۔
     
    آخری تدوین: ‏مئی 7, 2017
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • متفق متفق × 1
  5. مریم افتخار

    مریم افتخار مدیر

    مراسلے:
    4,509
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Festive
    بعض اشعار کمال ہیں۔
    بہت خوب!

    اس شعر میں ردیف 'رہتے' کیوں نہیں نبھایا گیا ؟
    کیا ایسا ممکن ہے یا یہ ٹائپو ہے؟
     
  6. لاریب مرزا

    لاریب مرزا محفلین

    مراسلے:
    5,634
    خوب انتخاب ہے!!
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  7. اَبُو مدین

    اَبُو مدین معطل

    مراسلے:
    695
    زیادہ امکان ٹائپو ہی کے لگتے ہیں۔ کتاب سے دوبارہ چیک کر کے تبدیل کیے دیتا ہوں۔ پسند کرنے اور نہایت شائستگی سے توجہ دلانے کا بہت بہت شکریہ۔ جزاک اللہ۔
     
    آخری تدوین: ‏مئی 7, 2017
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  8. اَبُو مدین

    اَبُو مدین معطل

    مراسلے:
    695
    بہت شکریہ۔ جزاک اللہ۔
     
    آخری تدوین: ‏مئی 7, 2017
  9. فرحان محمد خان

    فرحان محمد خان محفلین

    مراسلے:
    2,077
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheeky
    جناب لہو کے پھول نہیں (تم اِک گورکھ دھندا ہو)
     
  10. فرحان محمد خان

    فرحان محمد خان محفلین

    مراسلے:
    2,077
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheeky
  11. فرحان محمد خان

    فرحان محمد خان محفلین

    مراسلے:
    2,077
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheeky
    نازؔ خیالوی کی کتاب "لہو کے پھول" تم اِک گورکھ دھندا ہو نام سے منظرِ عام پر آئے چکی ہے :) :) :)
     
  12. محمد عظیم الدین

    محمد عظیم الدین محفلین

    مراسلے:
    853
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    زبردست
     
  13. اَبُو مدین

    اَبُو مدین معطل

    مراسلے:
    695
    میں نے "سرچ" کرنے کی کوشش کی تھی لیکن رزلٹ میں نہیں آئی (شاید آپ کے عنوان میں لفظ پیغمبر کی وجہ سے) اور سابقہ نہ ہونے کی وجہ سے مجھے لگا شاید ناز خیالوی صاحب کی یہ غزل موجود نہیں ہے محفل میں۔ توجہ دلانے اور ضم کرنے کا شکریہ۔
     
  14. اَبُو مدین

    اَبُو مدین معطل

    مراسلے:
    695
    میرے پاس جو ناز خیالوی صاحب کی کتاب ہے اس کا عنوان "لہو کے پھول" ہی ہے محترم اور یہ اس کی پہلی غزل ہے۔
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  15. اَبُو مدین

    اَبُو مدین معطل

    مراسلے:
    695
    پیارے بھائی فرحان محمد خان آپ کی توجہ کا طلب گار ہوں۔

    عنوان پہ بھی ایک دفعہ پھر نظرِ ثانی فرما لیں۔
     
    • متفق متفق × 1
  16. فرحان محمد خان

    فرحان محمد خان محفلین

    مراسلے:
    2,077
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheeky
    پیارے بھائی ٹائپو :)
     
    • متفق متفق × 1
  17. فرحان محمد خان

    فرحان محمد خان محفلین

    مراسلے:
    2,077
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheeky
    ایک چھوٹی سی وضاحت کے خضرتِ نازؔ خیالوی نے کتاب کا نام لہو کے پھول ہی رکھا تھا لیکن ان کی وفات کے بعد ان کے شاگرد جناب جاوید اقبال زاہد چنیوٹی نے اُن کی کتاب منظرِ عام پر لائی اور کتاب کا نام تبدیل کر کے تم اِک گورکھ دھندا ہو کر دیا اس کتاب کی اشاعت 2014 میں ہوئی
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  18. اَبُو مدین

    اَبُو مدین معطل

    مراسلے:
    695
    میرے پاس جو کتاب ہے اس کی اشاعت سن 2012 کی ہے۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  19. محمد وارث

    محمد وارث لائبریرین

    مراسلے:
    25,144
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Depressed
    جی یہ کام تو ناظمین ہی کر سکتے ہیں۔ میرے خیال میں فرحان صاحب پہلے ہی اس سلسلے میں ناظمین سے رابطے میں ہیں۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • متفق متفق × 1

اس صفحے کی تشہیر