1. احباب کو اردو ویب کے سالانہ اخراجات کی مد میں تعاون کی دعوت دی جاتی ہے۔ مزید تفصیلات ملاحظہ فرمائیں!

    ہدف: $500
    $453.00
    اعلان ختم کریں

بھارت کا مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم، 2 حصوں میں تقسیم کرنے کا اعلان

جاسم محمد نے 'آج کی خبر' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اگست 5, 2019

  1. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    11,725
    جہادی چاہے جتنا بھی جذبہ شہادت سے سرشار کیوں نہ ہوں، وہ تربیت یافتہ پروفیشنل افواج کا مقابلہ نہیں کر سکتے۔ فلسطین، شام، افغانستان ، عراق جگہ جگہ جہادیوں نے کاروائیاں کر کے دیکھ لیں۔ نتیجہ ہر جگہ صفر ہی رہا۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
    • غیر متفق غیر متفق × 1
  2. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    8,737
    مذاکرات کسی نتیجے پر پہنچ سکتے ہیں، اگر دونوں اطراف نیت مسئلہ کو حل کرنے کی ہو۔ دراصل، فی الوقت، سب سے موزوں حل یہی معلوم ہوتا ہے کہ جو جہاں ہے، اسی پوزیشن کو مستقل سرحد تسلیم کر لے تاہم پاکستان میں ایسا کرنے والے حکمران کو بالخصوص غدار تصور کیا جائے گا اور اب تو ہندوستان میں بھی یہی صورت حال بنتی جا رہی ہے۔
     
    • متفق متفق × 2
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  3. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    8,737
    تاہم، ان ملکوں میں اور ان سے ملحق ممالک میں افراتفری کی صورت حال ہے، یا گاہے گاہے پیدا ہو جاتی ہے۔ اس صورت حال میں، صرف اس تصور کے سہارے جینا کس قدر معقول ہے کہ جہادی تربیت یافتہ افواج کا مقابلہ نہیں کر سکتے ہیں۔ نتیجہ بہرصورت صفر ہرگز نہ ہے۔ بہتر ہوتا ہے کہ مسئلہ کو جڑ سے ختم کیا جائے۔ اس کے لیے دانش مندانہ قیادت چاہیے ہوتی ہے۔ ایسی قیادت برصغیر میں، فی الوقت، دونوں طرف ناپید ہے۔ جنہوں نے کبھی کوشش کی کہ اس بدقسمت خطے کو اس مصیبت سے نکالیں، ان کا انجام سب نے ملاحظہ کیا۔ ان کوششوں کا انجام بھی ہمارے سامنے ہے۔ یہ جو ہم آئی ایم ایف میں گئے اور ٹرمپ نے عمران صاحب کو بلا لیا، اور آج بھی، جس طرح ٹرمپ عمران بات ہوئی ہے، اس سے کئی کڑیاں ملائی جا سکتی ہیں۔ معاملات کہیں نہ کہیں 'چل' ضرور رہے ہیں تاہم جنگی ماحول ٹھنڈا پڑے تو اصل معاملہ کھل پائے گا۔ شاید مذاکرات ہی ہوں گے مگر، اس وقت تک، ہر دو اطراف، عوامی ردعمل جانچا جائے گا۔

    ویسے، اب جو کچھ ہو رہا ہے، وہ کسی نہ کسی پلاننگ سے ہوتا دکھائی دیتا ہے الا یہ کہ ہماری قیادت 'عوامی امنگوں' کے مطابق چلنے پر مجبور ہو جائے یا مجبور کر دی جائے۔ امریکا کے دورے کے دوران ہمارے ساتھ کہیں نہ کہیں کچھ گڑبڑ ہوئی ہے۔ اس حوالے سے شاید مزید ریسرچ کی ضرورت ہے۔ ہمیں کچھ اور خواب دکھلائے گئے۔ اور ہمارے ساتھ کچھ 'اور ہی' ہو گیا ہے۔
     
    آخری تدوین: ‏اگست 16, 2019
    • زبردست زبردست × 1
    • متفق متفق × 1
  4. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    11,725
    اس کا ایک اور ممکنہ حل کشمیر کی تین حصوں میں تقسیم ہے۔
    [​IMG]
    • مشرقی کشمیر یعنی لداخ کی آبادی دیگر کشمیر سے نسبتاً کم ہے اور زیادہ تر بدھمتوں پر مشتمل ہے۔ یہ علاقہ بدھت مت اکثریت چین مانگ رہا ہے اور اسی کی خاطر اس نے بھارت سے 1962 میں جنگ کر کے اکسائی چن چھینا تھا۔ مذاکرات میں اسے چین کے حوالہ کیا جا سکتا ہے۔
    • شمالی اور وسطی کشمیر یعنی سری نگر آبادی کے لحاظ سے سب سے بڑا علاقہ ہے۔ مسلمان اکثریت ہونے کی وجہ سے اسے پاکستان کے حوالہ کیا جا سکتا ہے۔
    • جنوبی کشمیر یعنی جموں ہندو اکثریت ہے ۔ اس لئےبھارت اسے اپنے پاس رکھ سکتا ہے۔
    نوٹ: لائن آف کنٹرول کو بین الاقوامی سرحد بنانے سے متعلق آگرہ سمٹ میں دونوں ممالک بہت قریب آ گئے تھے البتہ مسئلہ کا مستقل حل تب بھی طے نہیں ہوا تھا۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  5. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    11,725
    امریکہ کی مسئلہ کشمیر میں ثالثی بننے کی آفر کو بھارت نے دل پر لے لیا۔ اسی لئے کشمیر میں یہ حالیہ اقدام اتنی جلدی اٹھایا گیا ہے۔ عموما ایسے بڑے فیصلے الیکشن کے سال میں کئے جاتے ہیں۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  6. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    8,737
    ہماری دانست میں، اس وقت جو ملک ایک انچ زمین دشمن کے حوالے کرے گا، وہ غدار کہلائے گا۔ اس لیے، اس بات کے امکانات نہ ہونے کے برابر ہیں کہ مستقبل قریب میں ایسی کوئی سیٹل منٹ ہو جائے۔
     
    • زبردست زبردست × 1
    • متفق متفق × 1
  7. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    8,737
    امریکا نے ثالثی کی پیشکش اگر کی تھی، تو اب، اسے واپس لے لیا ہے۔ یہ تو ٹرمپ کی چال بھی ہو سکتی ہے۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  8. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    11,725
    دیکھیں کشمیر میں تین ایٹمی قوتوں، ایک عالمی قوت اور دو علاقائی قوتیں کے برابر کے حصص ہیں۔ اس طرح کی جذباتی باتوں سے مسئلہ کشمیر حل نہیں ہوگا۔
    چین اسی لئے اتنی جلدی اس مسئلہ کو سلامتی کونسل میں لے کر گیا ہے کیونکہ وہ نہیں چاہتا کہ اس کا سوپر پاور بننے کا خواب خطے میں عدم استحکام کی وجہ سے چکنا چور ہو جائے۔
     
  9. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    8,737
    چین کو آپ زور زبردستی اس معاملے میں گھسیٹ رہے ہیں جو بجائے خود مضحکہ خیز ہے۔ :) دراصل، چین امریکا کی طرز پر سپر پاور بننے میں کوئی دلچسپی نہیں رکھتا ہے۔
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  10. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    11,725
    ٹرمپ کے الفاظ پر غور نہیں کیا شاید۔ اس نے کہا تھا کہ اگر بھارت اور پاکستان چاہے تو امریکہ مسئلہ کشمیر میں ثالثی کا کردار ادا کر سکتا ہے۔
    بھارت کو اس بیان سے لگا کہ پاکستان مسئلہ کشمیر کو شملہ معاہدہ کی خلاف ورزی کرتے ہوئے انٹرنیشلائز کر رہا ہے۔ جس کا شدید رد عمل آرٹیکل 370 اور 35 اے کے جبری اختتام کی صورت میں نکلا۔
    پاکستان سے غلطی یہ ہوئی کہ اس نے امریکہ کو مسئلہ کشمیر میں پڑنے کی بات کی۔ حالانکہ اسے محض بھارت کو مذاکرات کی میز تک لانے کیلئے امریکہ کے دباؤ کی ضرورت تھی۔
     
  11. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    11,725
    چین کا بیلٹ اینڈ روڈ پراجیکٹ۔خطے سمیت پوری دنیا میں کئی ٹریلین ڈالرز کی سرمایہ کاری۔ جگہ جگہ چینی عسکری اڈے۔ امریکہ کے ساتھ جاری تجارتی سرد جنگ۔ یہ سب اگر سپر پاور بننے کیلئے نہیں تو مجھے نہیں معلوم کس خوشی میں یہ سب کر رہا ہے :)
     
  12. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    8,737
    امریکی صدر کا اس نوعیت کا یہ پہلا بیان نہیں تھا۔ ہمیں شبہ ہے کہ ہندوستان اور امریکا نے کوئی پلاننگ کی ہو گی اور ہم اُن کے ٹریپ میں آ گئے۔ مودی سرکار نے آرٹیکل 370 اور 35 اے کو یک دم نہیں چھیڑا؛ یہ ان کی لانگ ٹرم پالیسی کا حصہ تھا۔ بہرصورت، اس پر کسی غیر جانب دار رائٹر کی کتاب یا مضمون کا انتظار رہے گا۔
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  13. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    8,737
    امریکا کی طرز پر سپر پاور نہ بننے کی بات کی تھی؛ یہ نہیں کہا تھا کہ چین ہاتھ پر ہاتھ دھرے بیٹھا رہے گا۔ مزید تفصیل یہ ہے کہ وہ امریکا کی طرز پر مختلف ملکوں میں افواج شاید نہ اتارے گا۔ ہاں، تجارتی محاذ پر وہ امریکا کو شکست دینے کی بھرپور کوشش کرے گا۔ اب امریکا سے ٹکر لینے کے لیے کیا وہ چاکلیٹ بانٹتا پھرے! :)
     
    • زبردست زبردست × 1
  14. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    11,725
    امریکہ اور بھارت کے تعلقات امریکہ اور اسرائیل جیسے مضبوط نہیں ہیں جو ایسی لمبی پلاننگ کرتے پھریں۔ یاد رہے کہ ٹرمپ مودی کو بھارت کی افغان پالیسی کی وجہ سے سر عام کھری کھری سنا چکے ہیں۔ بھارت کے ساتھ جو ماضی میں فیورایبل تجارتی اور ویزہ جاتی معاہدے ہوئے تھے ان کو بھی ٹرمپ نے ختم کر دیا ہے۔
    اور ویسے بھی مسئلہ کشمیر میں ثالثی کیلئے مدد پاکستان نے خود مانگی تھی نہ کہ امریکہ نے اس میں پہل کی تھی۔ ٹریپ والی بات تب درست ہوتی اگر امریکہ خود اس میں پہل کرتا :)
     
  15. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    8,737
    چلیے، مان لیتے ہیں، تاہم، ہمیں شبہ ہے کہ کچھ نہ کچھ گڑ بڑ ہے۔ بہرصورت، کوشش کریں گے کہ یہ شکوک رفع ہو جائیں۔
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  16. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    11,725
    ترجمان فوج اور وزیر خارجہ کی مشترکہ پریس کانفرنس۔ ۳۰ سالوں میں پہلی بار حکومت اور ریاست ایک پیج پر ہے
     
  17. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    11,725
    تحریک انصاف حکومت کی بہترین سفارتکاری:
    • عالمی عدالت انصاف نے کلبھوشن معاملہ پر بھارت کا موقف رد کر دیا
    • دنیا نے ابھی نندن معاملہ پر پاکستان کا ساتھ دیا
    • سلامتی کونسل نے کشمیر پر بھارت کا موقف مسترد کر دیا
    [​IMG]
     
  18. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    11,725
  19. سین خے

    سین خے محفلین

    مراسلے:
    1,749
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    جاسم بھائی آپ سو بار اختلاف کریں پر گزارش ہے کہ یہ نانی وغیرہ کے خطابات نہ دیا کریں۔ خاتون کو ایسے القابات سے نوازنا اچھا نہیں لگتا ہے۔
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  20. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    11,725
    بھارتیوں کی چھوٹی چھوٹی خوشیاں

    شملہ معاہدہ کے مطابق پاکستان اور بھارت لائن آف کنٹرول کا ایک انچ بھی ہلانے کی قانونی حیثیت نہیں رکھتے۔ ایک دوسرے کا مقبوضہ کشمیر فتح کرنا تو بہت دور کی بات ہے۔
     

اس صفحے کی تشہیر