برائے اصلاح

فلسفی نے 'اِصلاحِ سخن' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اکتوبر 28, 2018

ٹیگ:
  1. فلسفی

    فلسفی محفلین

    مراسلے:
    2,584
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Pensive
    سر الف عین اور دیگر احباب سے اصلاح کی گذارش ہے۔

    صحافت میں دیانت کا علم بیچا نہیں جاتا
    ذرا سے نفع کی خاطر قلم بیچا نہیں جاتا

    لٹا دینا تم اپنی جان کو ایمان کے بدلے
    کسی بھی حال میں اپنا دھرم بیچا نہیں جاتا

    لگے جتنی بھی قیمت جھوٹ تو پھر جھوٹ رہتا ہے
    ضرورت میں بھی سچ کو بیش و کم بیچا نہیں جاتا

    کسی بازار میں بکتا نہیں کیوں پوچھتے ہو دام
    یہ میرا عزم ہے جو محترم بیچا نہیں جاتا

    کسی ظالم کو عادل چند سکوں کے عوض لکھ کر
    وقار الفاظ کا اہلِ قلم بیچا نہیں جاتا​
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  2. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    33,841
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    اچھی غزل ہے بس مطلع میں ایطا کا سقم در آیا ہے علم اور قلم یہ ظاہر کرتے ہیں کہ قوافی لم پر ختم ہونے والے ہیں جب کہ واقعی ایسا نہیں ہے
    ہندی میں دھرم میں را پر جزم ہوتا ہے جو کہ درست تلفظ ہے لیکن اردو والوں نے اسے مفتوح بنا دیا ہے، اس لیے قبول کرنا پڑتا ہے مگر کم از کم میں ایسے استعمال کرنا پسند نہیں کرتا
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  3. فلسفی

    فلسفی محفلین

    مراسلے:
    2,584
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Pensive
    شکریہ سر
    سر مطلع یوں درست رہے گا

    صحافت میں خبر کا پیچ و خم بیچا نہیں جاتا
    ذرا سے نفع کی خاطر قلم بیچا نہیں جاتا
    جی سر ہم بھی دھرَم ہی پڑھتے رہے ہیں۔ اس مصرعے کو اگر یو کہیں تو

    لٹا دینا تم اپنی جان کو ایمان کے بدلے
    کسی بھی طور مذہب کا علم بیچا نہیں جاتا
     
  4. فلسفی

    فلسفی محفلین

    مراسلے:
    2,584
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Pensive
    سر مطلع کا ایک متبادل یہ بھی ذہن میں آیا یے

    صحافت میں کبھی اپنا بھرم بیچا نہیں جاتا
    ذرا سے نفع کی خاطر قلم بیچا نہیں جاتا
     
  5. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    33,841
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    جب بھرم چلتا ہے تو دھرم بھی چلے گا تم بھی چلنے دو دھرم ہی۔ وہی شعر رواں ہے
    صحافت والا شعر بھی ٹھیک ہے۔ اردو کا بھرم اب ان معنوں میں اردو کا ہی لفظ بن گیا ہے، اگرچہ یہ بھی ہندی کا ہی ہے مگر اس کے ہندی میں معنی 'دھوکا' ہیں! ہندی بھرم دھرم کا قافیہ ہی ہے
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  6. فلسفی

    فلسفی محفلین

    مراسلے:
    2,584
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Pensive
    ٹھیک ہے سر

    صحافت میں کبھی اپنا بھرم بیچا نہیں جاتا
    ذرا سے نفع کی خاطر قلم بیچا نہیں جاتا

    لٹا دینا تم اپنی جان کو ایمان کے بدلے
    کسی بھی حال میں اپنا دھرم بیچا نہیں جاتا

    لگے جتنی بھی قیمت جھوٹ تو پھر جھوٹ رہتا ہے
    ضرورت میں بھی سچ کو بیش و کم بیچا نہیں جاتا

    کسی بازار میں بکتا نہیں کیوں پوچھتے ہو دام
    یہ میرا عزم ہے جو محترم بیچا نہیں جاتا

    کسی ظالم کو عادل چند سکوں کے عوض لکھ کر
    وقار الفاظ کا اہلِ قلم بیچا نہیں جاتا​
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  7. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    33,841
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    مطلع درست ہو گیا ہے اب، غزل بھی درست
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1

اس صفحے کی تشہیر