اختر شیرانی ایک نوجوان بت تراش کی آرزو

فہد اشرف نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جنوری 21, 2018

  1. فہد اشرف

    فہد اشرف محفلین

    مراسلے:
    6,797
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Relaxed
    ایک نوجوان بت تراش کی آرزو
    ایک ایسا بت بناؤں کہ دیکھا کروں اسے
    آسودہ ہے خیال کا پیکر بنا ہوا
    خواب عدم میں مست ہے جوہر بنا ہوا​
    اک مرمریں حجاب سے پیدا کروں اسے
    —————————————​
    پھولوں میں جیسے جذبۂ نکہت نہفتہ ہو
    یا جلوے بیقرار ہوں آغوش رنگ میں
    یوں اُس کی روح خفتہ ہے دامانِ سنگ میں​
    ظلمت میں جیسے نور کی صورت نہفتہ ہو
    ———————————————​
    دن رات صبح و شام میں پوجا کروں اسے
    میرا گداز روح جبیں سے مچل پڑے
    اس کی نظر سے جذب محبت ابل پڑے​
    ساز نفس کو توڑ کے گویا کروں اسے
    فن خواب مرگ بن رہے بت ساز کے لیے
    دنیا پکارتی رہے آواز کے لیے
    (اختر شیرانی)
    (شعرستان)
     
    آخری تدوین: ‏جنوری 21, 2018
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • زبردست زبردست × 1
  2. محمد ریحان قریشی

    محمد ریحان قریشی محفلین

    مراسلے:
    1,999
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Devilish
    لاجواب نظم! بہت عمدہ انتخاب۔
    اس کی نظر سے جذبِ محبت ابل پڑے
     
    • متفق متفق × 1
  3. فہد اشرف

    فہد اشرف محفلین

    مراسلے:
    6,797
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Relaxed
    انتخاب کی پذیرائی اور غلطی کی نشاندہی کا شکریہ
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1

اس صفحے کی تشہیر