1. اردو محفل سالگرہ پانزدہم

    اردو محفل کی پندرہویں سالگرہ کے موقع پر تمام اردو طبقہ و محفلین کو دلی مبارکباد!

    اعلان ختم کریں

ایک شعر کی تقطیع

محمد بلال اعظم نے 'اِصلاحِ سخن' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اپریل 16, 2012

  1. محمد بلال اعظم

    محمد بلال اعظم لائبریرین

    مراسلے:
    10,220
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Angelic
    اس ایک شعر کی تقطیع کر رہا ہوں، مگر یہ سیٹ نہیں ہو رہی ہے

    رنگ بھی، روشنی، صبا بھی
    12212121221
    سب میں موجود وہ خدا بھی
    2222111221
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  2. ایم اے راجا

    ایم اے راجا محفلین

    مراسلے:
    3,230
    جھنڈا:
    Pakistan
    میرا خیال ہے یہ یوں ہے شاید
    فاعلن فاعلن فعولن
     
  3. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    34,644
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    پہلا مصرع تو معلوم نہیں، دوسرا مصرع
    مفعول مفاعلن فعولن
    میں تقطیع ہوتا ہے۔ مزید اشعار ہوں تو درست اندازہ ہوتا ہے کہ الفاظ کا تلفظ، احذاف وغیرہ سے بحور بدل جاتی ہیں۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • معلوماتی معلوماتی × 1
  4. محمد بلال اعظم

    محمد بلال اعظم لائبریرین

    مراسلے:
    10,220
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Angelic
    جی استاد محترم، میں خود بھی باقی اشعار کی کوشش کرتا ہوں اور مزید اشعار یہاں پوسٹ کروں گا۔
     
  5. محمد بلال اعظم

    محمد بلال اعظم لائبریرین

    مراسلے:
    10,220
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Angelic
    پہلا مصرع اگر اس طرح کر دیا جائے تو

    بادل ہے، سمندر ہے، صبا ہے
    سب میں موجود وہ خدا ہے

    پھر اس کی بحر یہ ہو جائے گی
    مفعول مفاعلن فعول
    کیا یہ ٹھیک ہے، اور باقی اشعار اسی بحر پہ ہوں گے یا کسی اور بحر پہ، ایک حمد لکھنے کی کوشش کر رہا ہوں۔
     
  6. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    34,644
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    پہلا مصرع خارج از بحر ہو رہا ہے۔ محض ’سمند‘ تقطیع ہو رہا ہے۔
    بادل ہ۔ مفعول
    مفاعلن سمند ہے
    فعولن۔ ہوا ہے
    اس کی جگہ کوئی اور لفظ کر دیں۔
    خیال رہے کہ سمندر میں نون ساکن اور دال متحرک، بالفتح ہیں۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • زبردست زبردست × 1

اس صفحے کی تشہیر