انٹرنیٹ پروٹوکال

تفسیر نے 'ٹیکنیکل مضامین' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏مارچ 22, 2008

  1. تفسیر

    تفسیر محفلین

    مراسلے:
    3,088

    فریگمینٹیشن اور ری اسیمبلی
    ---------------------------------------------

    انٹرنیٹ آئیڈینٹیفیکیشن فیلڈ ( ID ) ڈیٹاگرام کی فریگمینٹیشن اور ری اسیمبلی کوظاہر کرنے کے لیے آئی فیلڈ اور پروٹوکال فیلڈ کو سورس اور ڈیسٹینیشن ایڈریس کےساتھ استعمال کرتےہیں۔آخری ڈیٹا گرام کےعلاوہ تمام ڈیٹاگرام میں مور (زیادہ) فریگمینٹیشن (MF) فیلڈ سٹ کی جاتی ہے۔ اوریجنل ڈیٹا گرام میں ہر فریگمینٹ کےشروعات کو فریگمینٹیشن آف سٹ فیلڈ میں نسبتی طور ہر رکھاجاتا ہے۔ آٹھ آکٹیٹ ایک فریگمنٹ یونٹ بناتےہیں۔

    بغیر فریگمینٹ کیا ہوا ڈیٹا برابر ہے صفر والے فریگمینٹیشن انفارمیشن ( ایم ایف = 0، صفر فریگمینٹیشن آف سٹ )
    اگر فریگمینٹ کی فریگمینٹیشن ہوئی ہے تواس کا ڈیٹا والا حصہ آٹھ آکٹیٹ کی حدوں پر تقسیم کیاگیا ہو۔
    اس طرح کی فارمٹ میں 8192 فریگمنٹ ( ہر فریگمنٹ 8 آکٹیٹ کا) یعنی 65,536 آکٹیٹ۔ یہ ڈیٹا گرام فیلڈ کی مکمل لمبائ کےبرابر ہے۔ ہیڈر مکمل لمبائی کا حصہ ہے۔ وہ فریگمینٹ میں نہیں گنا جاتا۔

    فریگمینٹیشن کرتے وقت کچھ آپشن کاپی کیےجاتے ہیں۔ کچھ صرف پہلے فریگمنٹ میں ہی رہتے ہیں۔ ہرانٹرنیٹ ماجول کو بغیر فریگمینٹیشن آکٹیٹ کو آگےبھیجنے کےقابل ہوناچاہیے کیونکہ انٹرنیٹ ہیڈر میں 60 آکٹیٹ تک ہوسکتے ہیں اور فریگمنٹ کی کم سی کم لمبائی آٹھ آکٹیٹ ہیں۔ہرانٹرنیٹ ڈیسٹینیشن ڈیٹاگرام کے 576 آکٹیٹ ایک مکمل فریگمنٹ کی صورت میں یا زیادہ فریگمنٹ کی صورت میں وصول کرنے کےقابل ہوناچاہیئے اور وہ ان کو ری اسمبل کرسکے۔

    یہ فیلڈ فریگمینٹیشن کی بنا پر تبدیل ہو سکتی ہیں۔ ​



    (1) options field
    (2) more fragments flag
    (3) fragment offset
    (4) internet header length field
    (5) total length field
    (6) header checksum ​

    اگر ڈونٹ فریگمینٹ ( DF ) ایک ہے تو انٹرنیٹ فریگمینٹیشن کرنا منع ہے۔ لیکن اس کو رد کرنے پرمنادی نہیں۔ یہ آپشن وہاں استعمال ہوتا ہے جہاں ڈیٹاگرام کو وصول کرنے وال ہوسٹ کے پاس وہ ذرائع موجود نہ ہوں جن کی مدد سےاس ڈیٹاگرام کو ری اسمبل کیاجاسکے۔
    اس کی ایک مثال یہ ہے کہ ہم ایک چھوٹاہوسٹ کو ڈیٹاگرام بھیجتےہیں۔ اس چھوٹےہوسٹ میں ایک بوٹ اسٹریپ پروگرام ہوگا جو ڈیٹاگرام کو وصول کرکے میموری میں اسٹور کرلے گا۔ اور پھراس کو وصول کرے گا۔
     
  2. تفسیر

    تفسیر محفلین

    مراسلے:
    3,088
    فریگمینٹیشن اور ری اسمبلی کے طریقہ یہ ہے۔( مثال )

    اس مثال میں


    " = < " "less than or equal " means "
    "#" "not equal " means"
    "=" "equal ",means "
    "<-" "is set to " means "
    Also, "x to y" includes x and excludes y;
    for example, "4 to 7" would include 4, 5, and 6 (but not 7). ​
     
  3. تفسیر

    تفسیر محفلین

    مراسلے:
    3,088
    فریگمینٹیشن کے طریقہ کی ایک مثال
    ----------------------------------------------------------

    سب سے بڑے سائز کا ڈیٹاگرام جو اگلے نیٹ ورک سےگزرا جاسکتا ہے میکسیمم ٹرانسمیشن یونٹ (MTU) کہلاتا ہے۔اگر مکمل لمبائی ایم۔ٹی۔یو سے کم یا پھر برابر ہے تو اس ڈیٹاگرام پر اگلے اسٹیپ کی تیاری شروع کرو ورنہ اس ڈیٹاگرام کو دو فریگمنٹ میں تقسیم کردو۔ پہلے فریگمنٹ کا سائز ایک ایم۔ٹی۔یو کے برابر کردو اور دوسرا فریگمنٹ کو بقیہ فریگمنٹ کےبرابر۔ پہلے فریگمنٹ پر اگلےاسٹیپ کی تیاری شروع کرو۔ اور دوسرا فریگمنٹ اگر ایم۔ٹی۔یو سے بڑا ہے تو اس کو دو فریگمنٹ میں تقسیم کردو ۔

    Notation:

    FO - Fragment Offset
    IHL - Internet Header Length
    DF - Don't Fragment flag
    MF - More Fragments flag
    TL - Total Length
    OFO - Old Fragment Offset
    OIHL - Old Internet Header Length
    OMF - Old More Fragments flag
    OTL - Old Total Length
    NFB - Number of Fragment Blocks
    MTU - Maximum Transmission Unit
    [​IMG]


    اس طریقہ کا میں ہر فریگمنٹ ( صرف آخری کہ بجائے ) ایم۔ٹی۔یو کے برابر بنایا گیا تھا۔ ایک اور بھی طریقہ ہوسکتا ہے جس میں ڈیٹا گرام ،ایم۔ٹی۔یو سےچھوٹے بھی بنائےجاسکتے ہیں۔ مثال کےطور پر آپ فریگمینٹیشن کے لیےایک ایسا طریقہ استعمال کرسکتے ہیں جس میں آپ ڈیٹاگرام کو ہر بار آدھا کردیں یہاں تک کہ آخری فریگمنٹ ایم۔ٹی۔یو سےچھوٹا بچے۔
     
  4. تفسیر

    تفسیر محفلین

    مراسلے:
    3,088

    ری اسمبلی کے طریقہ کی ایک مثال
    ----------------------------------------------------

    ہرڈیٹاگرام کےلیےبفرآئیڈینڈیفائر (buffer identifier) کو سورس کا کاننوٹیشن ، ڈیسٹینیشن ، پروٹوکال اور آیڈینٹیفیکیشن سےحاصل کرتےہیں۔ اگر یہ مکمل ڈیٹاگرام ہے تودونوں فریگمنٹ آفسٹ اور فریگمنٹ فیلڈ صفرہوں گے، تب ری اسمبلی ریسورسیس کی خلاصی کردی جاتی ہے ( یعنی اب وہ دوسرے کاموں کے استعمال کےلئےموجود ہیں ) اور ڈیٹاگرام کو اگلے عمل کے لے بھیج دیتے ہیں۔

    اگراس بفرآئیڈینڈیفائر کےلیےاور کوئی دوسرا فریگمنٹ نہیں موجود تو بھی ان ریسورس کواستعمال کیاجاسکتا ہے۔ ری اسمبلی ری سورس ڈیٹا بفر، ہیڈر بفر، ایک فریگمینٹ بلاک بٹ ٹیبل، ایک مکمل ڈیٹا لینتھ فیلڈ اور ایک ٹائمرہیں۔ فریگمنٹ کا ڈیٹا فریگمنٹ آفسٹ اور لمبائی کےلحاظ سےڈیٹا بفر میں رکھا جاتا ہے۔ اور فریگمینٹ بلاک بٹ ٹیبل میں وصول کیےہوئےفریگمنٹ بلاک سے مقابل بٹوں کو سٹ کردیتےہیں۔

    اگراس ہیڈر کا پہلا فریگمینٹ ( وہ فریگمنٹ جس کی فریگمنٹ آفسٹ کی ویلیوصفرہو ) تواس کوہیڈر بفر میں رکھ دیتےہیں۔ اگر یہ آخری ہیڈر کاآخری فریگمنٹ ( مور فریگمنٹ آفسٹ کی ویلیوصفرہو) توٹوٹل ڈیٹالینتھ کا حساب کیا جاتا ہے۔ اگر اس فریگمنٹ کےحساب کےبعد ڈیٹاگرام مکمل ( فریگمنٹ بلاک ٹیبل کودیکھنےسےپتہ چلتا ہے) ہوجاتاہےتوڈیٹاگرام کواگلےعمل کے لیےبھیج دیتےہیں، ورنہ ٹائمر کواس فریگمینٹ کی موجودہ سب سےبڑی ویلیو اور ٹائم ٹولیو کی ویلیو پرسٹ کردیتےہیں۔ اور ری اسمبلی روٹین اس پروسیس پر اپنا اختیار ختم کردیتا ہے۔

    اگراس ٹائمر کا وقت ختم ہوجاتاہےتوبفرآئیڈینڈیفائر کو ریلیز کردیتے ہیں۔ اگر آنےوالا فریگمینٹ کی ٹائم ٹو لیو ویلیو، ٹائمر کی وجودہ ویلیو سےذیادہ ہو تو ویٹینگ ٹائم ویلیو بڑھ جاتی ہے مگر کم نہیں ہوگی۔ اگر فریگمنٹ کی ٹائم ٹو لیو ویلیو کم ہے تو اس وجہ سےری اسمبلی ٹائم کی ابتدائی ٹائمر ویلیو، نیچلی ویلیو ہوجاتی ہے۔ اس ٹائمر کی ویلیو ٹائم ٹو لیو کی ویلیوتک پہونچ سکتی ہے ( اندازاً 4.25 منٹ )، موجودہ تفویض پندرہ سیکنڈ ہے۔ جیسےجیسےاس پروٹوکال کا استعمال بڑھےگا ہمارا تجربہ ہمیں بتائےگا کہ اس ویلیو کو بڑھایاجائےیا نہیں ۔
    اس بات کو نوٹ کیا جائے کہ اس پیرامیٹر کی ویلیو دستیاب بفر کپیسیٹی اور ڈیٹا ٹرانسمیشن کی رفتار پر منحصر ہے۔یعنی اگر ڈیٹا ریٹ کو ٹائمر کی ویلیو سےصرب کیا جائےتو وہ ویلیو بفر سائز کےبرابر ہوگی۔ ( e.g., 10Kb/s X 15s = 150Kb).

     
  5. تفسیر

    تفسیر محفلین

    مراسلے:
    3,088

    Notation:

    FO - Fragment Offset
    IHL - Internet Header Length
    MF - More Fragments flag
    TTL - Time To Live
    NFB - Number of Fragment Blocks
    TL - Total Length
    TDL - Total Data Length
    BUFID - Buffer Identifier
    RCVBT - Fragment Received Bit Table
    TLB - Timer Lower Bound

    Notation:

    FO - Fragment Offset
    IHL - Internet Header Length
    MF - More Fragments flag
    TTL - Time To Live
    NFB - Number of Fragment Blocks
    TL - Total Length
    TDL - Total Data Length
    BUFID - Buffer Identifier
    RCVBT - Fragment Received Bit Table
    TLB - Timer Lower Bound [/INDENT]​
     
  6. تفسیر

    تفسیر محفلین

    مراسلے:
    3,088
    [​IMG]
    اس صورت میں جب کےدو یا زیادہ فریگمینٹ میں ایک ہی جیسا ڈیٹاہےتو طریقہ کار بفرمیں آخری پہنچنےوالی کاپی کو ڈیٹا گرام کی صورت میں آگے روانہ کرے گا۔
     
  7. تفسیر

    تفسیر محفلین

    مراسلے:
    3,088
    آئڈینٹیفیکیشن

    آئڈینٹیفائر کاچناؤ فریگمینٹ کو ڈیٹاگرام کا ایک مخصوص انفرادی حصہ ظاہر کرنےپر منحصر ہے۔ پروٹوکال ماجول ایک ڈیٹا گرام کےفریگمینٹس کو یکجا کرنے کےلیےان کے ڈیسٹینیشن ، سورس اور آئیڈینٹیفائر کوجانچتی ہے۔ اگروہ ایک ہوں تو وہ ایک ہی ڈیٹا گرام کا فریگمنیٹ ہیں۔ اس لیےبھیجنے والی پروٹوکال کوہرایک ڈیٹاگرام (جتنی دیر کےلیےوہ انٹرنیٹ پرموجود ہے ) کے سورس اور ڈیسٹینیشن کےلئےایک خصوص انفرادی آئیڈیٹیفائراستعمال کرنا ہوگا۔
    اس سےیہ پتہ چلتاہے کہ بھیجنےوالے آئی پی ماجول کو آئیڈینٹیفائر کا ایک ٹیبل بنانا ہوگا۔جس میں ان تمام ڈیسٹینیشن کی ایک ایک لائن درج ہوجن سے پیکیٹ کی انٹرنیٹ پرآخری عمرتک اس کا رابطہ تھا۔ کیوں کہ آئیڈینٹیفائر فیلڈ 65,536 مختلف ویلیو بنانے دیتی ہے اس لیے کچھ ہوسٹ ایسا کرسکتے ہیں کہ وہ بغیر ڈیسٹینیشن کے مخصوص انفرادی نمبربناسکتے ہیں۔

    یہ بھی مناسب ہے کہ اوپری پروٹوکال اس آئیڈینٹیفائر استعمال کریں۔ مثال کے طور پر ٹی سی پی ماجول کوایک ٹی سی پی سیگمینٹ دوبارہ بھیجنا پڑئے۔ اسی آئیڈینٹیفائر کی موجودگی جو اس سگمنیٹ میں پہلے استعمال ہوا تھا اس ٹی سی پی سیگمینٹ میں غلطی کا امکان کم کردے گی۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ دونوں فریگمنیٹ میں میں سے صحیح ٹی سی پی سیگمینٹ بنایا جاسکتا ہے۔

    ٹائپ آف سروس

    یہ ایک قسم کی سروس ہے جو انٹرنیٹ سروس کی کوالیٹی کو چنتی ہے۔ یہ سروس اولیت (پریسیڈینس) ، دیری ( ڈیلے) ، حاصل ( تھروپٹ) اور ریلائیبیلیٹی کے غیرحقیقی پیرامیٹر سےبتائی جاتی ہے۔ ان نٹریٹ پیرامیڑ کا حقیقی پیرامیٹ کے ساتھ رابطہ کیا جاتا ہے جو اس مخصوس نیٹ ورک میں استعمال میں جس سے ڈیٹا گرام گزرتا ہے۔

    اولیت (پریسیڈینس) اس ڈیٹاگرام کی بمقابلہ دوسروں کےاہمیت کوظاہر کرتا ہے۔
    ڈیلے ( دیری) یہ ڈیٹاگراموں کو پہنچانے کے لیے اہمیت کے درجوں کو طاہر کرتا ہے۔
    حاصل ( تھروپٹ) یہ ڈیٹاگراموں کی رفتار کی اہمیت کو ظاہر کرتا ہے
    ریلائبیلیٹی ۔ یہ ڈیٹا گرام کو خفاطت سے پہنچانے کی اہمیت کو ظاہر کرتا ہے۔


    مثال کے طور پر ارپانیٹ میں ایک فوقیت ( پریی اوریٹی ) بٹ ہوتی ہے ، اسٹینڈرد میسیج ( ٹائپ صفر) اور ان کنٹرولڈ میسیج (ٹائپ 3) ، ( اس کے علاوہ سنگل پیکٹ اور ملٹی پیکٹ کے درمیاں چنائی کو بھی سروس پیرامیٹر مانا جاسکتا ہے )۔ان کنٹرولڈ میسیج کی ریلائبیلیٹی کم ہوتہ ہے ، ان مین کم ڈیلے ہوتا ہے۔ فرض کریں ہم ایک انٹرنیٹ ڈیٹاگرام کوارپانیٹ سےگزارتے ہیں۔ فرض کریں ہم ان کے لیے یہ انٹرنیٹ سروس چنتے ہیں

    اولیت (پریسیڈینس) 5
    دیری ( ڈیلے) 0
    حاصل ( تھروپٹ) 1
    ریلائیبیلیٹی 1

    اس مثال میں اگر ہم انٹرنیٹ پیرامیڑ کا حقیقی پیرامیٹ کے ساتھ رابطہ کریں تو کیونکہ انٹر نیٹ سروس اولیت کی ویلیو اوپری رینج میں ہے۔ارپانیٹ کی فوقیت بٹ کو سٹ کرنا ہوگا۔ تھروپٹ اور ریلائبیلیٹی کی ضرورت بھی ہے تو اسٹینڈرڈ میسیج کو چنا جائے گا۔ ڈیلے کی اہمیت نہیں بتائی گئی ​
     
  8. تفسیر

    تفسیر محفلین

    مراسلے:
    3,088


    ٹائم کو لیو (TTL )
    ڈیٹاگرام بھیجنےوالا ماجول ٹائم۔ٹو۔لیو کے پیرامیٹر کو اس کی آخری ویلیو پر سٹ کردیتاہے۔ اگریہ ڈیٹاگرام انٹرنیٹ پراپنےوقت سےذیادہ دیر ٹھہرتاہےتو اس کو رد کردیاجاتا۔ ہرایک پائنٹ جہاں اس انٹرنیٹ ہیڈر پر عمل کرنے میں وقت صرف ہوتا ہے اس وقت کو اس فیلیڈ میں گھٹادیا جاتا ہے۔ چاہیے مقامی طور پر صرف کیے ہوئے وقت نہ مل سکے پھر بھی اس فیلڈ کو ایک سے کم کردیاجاتاہے۔( وقت کو سیکنڈ میں گنا جاتا ہے اسلئےایک برابر ہے ایک سیکنڈ کے۔ اس وجہ سے ٹائم ٹو لیو کی اوپری وہلیو 255 سیکنڈ ہے یعنی 4.25 منٹ۔ کیونکہ ماجول جو وقت ڈیٹاگرام پرصرف کرتا ہے چاہیے وہ ایک سیکنڈ سے کم ہو ، اس فیلیڈ کی ویلیو کو ایک سے کم کیا جائے گا۔ ٹائم ٹولیو کو اس کی آخری ویلیو سمجھاجاتا ہے۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ انٹرنیٹ پر ڈیٹاگرام کی زندگی مقررکی گئی ہےجس کے بعد اس کو رد کیا جاتا ہے۔ بعض اوپری لیول کی پروٹوکال اس توقع پر مبنی ہیں کہ پرانا ڈیٹاگرام ایک مقررہ وقت کے بعد نہیں پہنچےگا۔ ٹائم ٹو لیو کی محدود کرنے سے ان کی یہ توقع پوری ہوتی ہے۔

    آپشن

    آپشن کا ڈیٹاگرام میں استعمال ضروری نہیں۔ مگر پروٹوکال میں ان کو رکھناضروری ہے۔ دوسرے الفاظ میں ان کا استعمال بھیجنےوالےماجو ل پرہے۔ لیکن ہرانٹرنیٹ ماجول ہرآپشن کوپہچاننے کے کےقابلہوناچاہیےاس فیلیڈ میں کئی آپشن ہوسکتےہیں۔ آپشن کا 32 بٹون کی حد پرختم ہونا ضروری نہیں۔ اس لیےانٹرنیٹ ہیڈر کوصفر کی ویلیو کے آکٹیٹوں سےبھرنا لازمی ہے۔ پہلا صفروں کے آکٹیٹ کوآپشن ختم ہونے کی نشانی سمجھی جائےگئی اور بقیہ کو انٹرنیٹ ہیڈر کی پیڈینگ۔ ہرانٹرنیٹ ماجول ہرآپشن پرعمل کرنے کےقابل ہوناچاہیے۔ وہ ٹرافیک جس پرپابندیاں عائد کی گئی ہوں اس میں سیکیورٹی آپشن کو سٹ کرنا ضروری ہے۔

    چیک سم

    اگر انٹرنیٹ ہیڈر میں تبدیلی آئی ہوتونیاچیک سم بنایاجاتا ہے۔ مثال کےطور پرٹائم ٹو لیو، انٹرنیٹ آپشن میں کمی یا ذیادتی یا فریگمنیٹیشن کی ضرورت۔ انٹرنیٹ لیول پریہ چیک سم
    انٹرنیٹ ہیڈر فیلیڈز کو ٹرانسمیشن کی خامیوں سےبچاتا ہے۔
    بعض اپلیکیشن میں کچھ ڈیٹابٹ میں خامی منظور ہوتی ہے مگر ڈیلےنہیں۔ اگرانٹرنیٹ پروٹوکال ڈیٹا میں خامیاں منظور یہیں کرے گی تو یہ اپلیکیشن انٹرنیٹ پروٹوکال استعمال نہیں کرسکیں گی۔

    اغلاط Errors
    انٹرنیٹ پروٹوکال کی اغلاط کو آئی۔سی۔ایم۔پی پرٹوکال کے زریعے بھیجا جاسکتا ہے۔ ​
     
  9. تفسیر

    تفسیر محفلین

    مراسلے:
    3,088

    انٹرفیسس
    -------------------


    آئ پی کے یوزر انٹرفیس کی عملی تعریف کو ایک تصوراتی حقیقت کہہ سکتے ہیں۔ وجہ یہ ہے کہ ہر آپریٹینگ سسٹم میں رابطےمختلف ہوں گے۔ اسلئے ہمیں یہ واضع کرنا ضروری ہوگا کہ آئی پی کی امپلیمنٹیشن کے ، یوزر انٹرفیس ایک دوسرے سے مختلف ہوں گے۔ مگرتمام انٹرنیٹ پروٹوکالوں کے لئےضروری ہے کہ وہ ایک مخصوص تعداد میں آئی پی سروسیس مہیا کریں تاکہ کہ ان کی امپلیمنیٹیشن ایک جیسی پرٹوکال ہائرآرکی میں کام کرسکے۔ اس حصہ میں ہم ان انٹرفیس کی خصوصیات کا ذکر کریں گے جو کے آئی پی امپلیمنٹیشن کے کئے ضروری ہیں۔ ١نٹرنیٹ پروٹوکال، ایک طرف لوکل ایریا نیٹ ورک اور دوسری طرف اوپری پروٹوکال یا اپلیکیشن پروگرام سے محلق ہوتا ہے۔

    ان مثالوں میں اوپری پروٹوکالوں یا اپلیکیشن پروگرام کو ( اور گیٹ وے پروگرام کو بھی) “یوزر “ کہا جائےگا۔ کیونکہ وہ انٹرنیت ماجول کو استعمال کرتے ہیں۔ انٹرنیٹ پروٹوکال ایک ڈیٹاگرام پروٹوکال ہے اس وجہ سےڈیٹا گرام ٹرانسمیشن کے درمیان کم میموری یا اسٹیٹ رکھی جاتی ہیں۔ اور یوزر اس سروس کے لئے تمام ضروری انفارمیشن مہیا کرتا ہے جس کی اسےانٹرنیت پروٹوکال سےضرورت ہوتی ہے۔

     
  10. تفسیر

    تفسیر محفلین

    مراسلے:
    3,088


    اوپری لیول سےانٹرفیس کی ایک مثال
    -----------------------------------------------------------------
    مندرجہ ذیل دو مثالیں ان تمام درخواست کو پورا کرتی ہیں جو انٹنیٹ ماجول سے کیمیونیکیشن کے لئےضروری ہیں۔ ​


    ("=>" means returns):
    SEND (src, dst, prot, TOS, TTL, BufPTR, len, Id, DF, opt => result)

    where:

    src = source address
    dst = destination address
    prot = protocol
    TOS = type of service
    TTL = time to live
    BufPTR = buffer pointer
    len = length of buffer
    Id = Identifier
    DF = Don't Fragment
    opt = option data
    result = response
    OK = datagram sent ok
    Error = error in arguments or local network error

    Note that the precedence is included in the TOS and the security/compartment is passed as an option.

    RECV (BufPTR, prot, => result, src, dst, TOS, len, opt)

    where:

    BufPTR = buffer pointer
    prot = protocol
    result = response
    OK = datagram received ok
    Error = error in arguments
    len = length of buffer
    src = source address
    dst = destination address
    TOS = type of service
    opt = option data
     
  11. تفسیر

    تفسیر محفلین

    مراسلے:
    3,088

    جب یوزر ایک ڈیٹاگرام بھیجتا ہے تو وہ SEND call کمانڈ کے ذریعہ تمام arguments بھی روانہ کرتا ہے۔انٹرنیٹ پروٹوکال اس آنے والی Send کمانڈ کے arguments کی جانچ کرکےاس کی ضروریات کےمطابق میسیج بھیجتا ہے۔ اگر arguments صحیح تھےاور لوکل ایریا نیٹ ورک ڈیٹا گرام کوقبول کرلیتا ہے تو وہ یہ call کامیابی سے واپس آتی ہے۔اگر arguments میں خامی ہے یا لوکل ایریا نیٹ ورک اس ڈیٹا گرام کو قبول نہیں کرتا تویہcall ناکامیاب واپس آتی ہے۔

    اس ناکامیاب call کی واپسی پرایک رپورٹ تیار کی جاتی ہے جس میں اس کی ناکامیابی کی وجہ ظاہر کی جاتی ہے۔ اس رپورٹ میں خامی کی تفصیل ہرایک انفرادی امپیلیمینٹیشن پرمنحصر ہے۔ جب لوکل ایریا نیٹ ورک سے ڈییٹا گرام انٹرنیٹ پروٹوکال ماجول پر آتا ہے تو دو صورتیں ہوسکتی ہیں۔ یوزر کے ایڈریس سے ایک ریسو کال پینڈینگ ہے۔ دو، ریسو کال نہیں آنےوالی ہے۔

    پہلی صورت میں ڈیٹاگرام سےانفارمیشن یوزر کو دے کرعمل مکمل کیا جاتا ہے۔ دوسری صورت میں یوزر ایڈرس کو پینڈینگ کی اطلاع دی جاتی ہے۔

    اگر یوزر ایڈرس موجود نہیں ہے تو بھیجنے والے کو ایک آئی ۔سی۔ایم ۔پی ایرر میسیج بھیج دیا جاتاہے اور ڈیٹا کو رد کردیتے ہیں۔

    یوزر کواطلاع دینے کا آپریٹینگ سسٹم پرمنحصر ہے یہ ایک انٹرپٹ یا کوئی اور دوسرا طریقہ ہوسکتا ہے۔

    یوزر کی ریسو کال کو یا تو پینڈینگ ڈیٹا گرام سےمطمئن کردیا جاتا ہے یا کال اس وقت تک پینڈینگ رہتی ہے جب تک کہ ڈیٹا گرام نہ آجائے۔اگر سورس ایڈریس میں بھیجنے والے ہوسٹ کے کئی ایڈریس ( کئی فزیکل کنیکشن یا لوجکل ایڈریس ) ، انٹرنیٹ ماجول کو جانچنا ہوتا ہے کہ ان میں سے اس ہوسٹ کا ایک ایڈریس جائز ہے ۔

    ایک امپلیمینٹیشن انٹرنیٹ ماجول کو کال میں اپنے استعمال کے لئے ڈیٹاگرام کی ایک کلاس ( یعنی پرٹوکال فیلڈ میں جن کی ایک خاص ویلیوہے) کو مخصوص کرنے کی آزادی یا پابندی دے سکتی ہے۔

    اس سیکشن میں یوزر اور آپی انٹرفس کی خصوسیات بیان کی گئی ہیں۔ یہاں صورت اختیار ہوئی ہے جو اوپری لیول کی پروگرامی لینگویجز کے پروسیجرز میں استعمال ہوتی ہے۔لیکن اس کا مطلب یہ نہیں کہ ٹریپ ٹائپ سروس کال استعمال نہیں کی جاسکتیں ( یعنی ایس۔وی۔سی، یو۔یو۔او، اور ای۔ایم۔ٹی) یا اور کوئی انٹر پروسس کیمیونیکیشن۔

     
  12. تفسیر

    تفسیر محفلین

    مراسلے:
    3,088
    ضمیمہ (ایف)۔ مثالیں

    مثال نمبر 1:

    اس مثال میں انٹر نیٹ ڈیٹا گرام بہت کم ڈیٹا لےجاتا ہے


    3 .......................................2........................................1 ........................................0
    2 1 0 9 8 7 6 5 4 3 2 1 0 9 8 7 6 5 4 3 2 1 0 9 8 7 6 5 4 3 2 1 0
    +-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+
    |Ver= 4 |IHL= 5 |Type of Service| Total Length = 21 |
    +-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+
    | Identification = 111 |Flg=0| Fragment Offset = 0 |
    +-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+
    | Time = 123 | Protocol = 1 | header checksum |
    +-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+
    | source address |
    +-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+
    | destination address |
    +-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+
    | data |
    +-+-+-+-+-+-+-+-+

    انٹر نیٹ ڈیٹا گرام کی مثال

    توجہ کریں کہ ہرٹِک مارک ایک بٹ کہ پوزیشن کوظاہر کر رہا۔ یہ انٹرنیٹ پروٹوکال کے ورژن فور کا ڈیٹا گرام ہے۔ انٹرنیٹ ہیڈر پانچ، بتیس بٹ ورڈس سےمل کربنا ہے۔اور ڈیٹا گرام کی مکمل لمبائی اکیس آکٹیٹ ہے۔ یہ ایک مکمل ڈیٹا گرام ہے ( یہ فریگمنٹ نہیں ہے)
     
  13. تفسیر

    تفسیر محفلین

    مراسلے:
    3,088
    مثال نمبر 2

    اس مثال میں پہلے ہم ایک ایک عام سائیز کا انٹرنیٹ ڈیٹا گرام ( 452 ڈیٹا آکٹیٹ ) اور اس کے بعددو انٹرنیٹ فریگمنٹس جو ممکمن ہے کےاس ڈیٹاگرام کی فریگمنیٹیشن کرنےسے بنے ہوں ۔ یہ اس صورت میں جب کے 280 آکٹیٹ کے ڈیٹا گرام حد لگی ہو۔ ​

    3 .......................................2........................................1 ........................................0
    2 1 0 9 8 7 6 5 4 3 2 1 0 9 8 7 6 5 4 3 2 1 0 9 8 7 6 5 4 3 2 1 0
    +-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+
    |Ver= 4 |IHL= 5 |Type of Service| Total Length = 472 |
    +-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+
    | Identification = 111 |Flg=0| Fragment Offset = 0 |
    +-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+
    | Time = 123 | Protocol = 6 | header checksum |
    +-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+
    | source address |
    +-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+
    | destination address |
    +-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+
    | data |
    +-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+
    | data |
    \ \
    \ \
    | data |
    +-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+
    | data |
    +-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+

    انٹرنیٹ ڈیٹا گرام کی مثال ​
     
  14. تفسیر

    تفسیر محفلین

    مراسلے:
    3,088
    اب وہ پہلا فریگمنیٹ جو ڈیٹا گرام کو تقسیم کرنےمیں 256 ڈیٹا آکٹیٹ کے بعد بنا۔



    3 .......................................2........................................1 ........................................0
    2 1 0 9 8 7 6 5 4 3 2 1 0 9 8 7 6 5 4 3 2 1 0 9 8 7 6 5 4 3 2 1 0
    +-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+
    |Ver= 4 |IHL= 5 |Type of Service| Total Length = 276 |
    +-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+
    | Identification = 111 |Flg=1| Fragment Offset = 0 |
    +-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+
    | Time = 119 | Protocol = 6 | Header Checksum |
    +-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+
    | source address |
    +-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+
    | destination address |
    +-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+
    | data |
    +-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+
    | data |
    \ \
    \ \
    | data |
    +-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+
    | data |
    +-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+

    انٹرنیٹ فریگمنٹ کی مثال ​
     
  15. تفسیر

    تفسیر محفلین

    مراسلے:
    3,088
    اب دوسرا فریگمنیٹ


    3 .......................................2........................................1 ........................................0
    2 1 0 9 8 7 6 5 4 3 2 1 0 9 8 7 6 5 4 3 2 1 0 9 8 7 6 5 4 3 2 1 0
    +-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+
    |Ver= 4 |IHL= 5 |Type of Service| Total Length = 216 |
    +-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+
    | Identification = 111 |Flg=0| Fragment Offset = 32 |
    +-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+
    | Time = 119 | Protocol = 6 | Header Checksum |
    +-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+
    | source address |
    +-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+
    | destination address |
    +-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+
    | data |
    +-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+
    | data |
    \ \
    \ \
    | data |
    +-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+
    | data |
    +-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+

    انٹرنیٹ فریگمنٹ کی مثال ​
     
  16. تفسیر

    تفسیر محفلین

    مراسلے:
    3,088
    مثال نمبر 3:

    یہاں ہم ایک ایسی مثال پیش کر رہے ہیں جس میں ڈیٹا گرام میں آپشن موجود ہیں۔



    3 .......................................2........................................1 ........................................0
    2 1 0 9 8 7 6 5 4 3 2 1 0 9 8 7 6 5 4 3 2 1 0 9 8 7 6 5 4 3 2 1 0
    +-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+
    |Ver= 4 |IHL= 8 |Type of Service| Total Length = 576 |
    +-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+
    | Identification = 111 |Flg=0| Fragment Offset = 0 |
    +-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+
    | Time = 123 | Protocol = 6 | Header Checksum |
    +-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+
    | source address |
    +-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+
    | destination address |
    +-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+
    | Opt. Code = x | Opt. Len.= 3 | option value | Opt. Code = x |
    +-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+
    | Opt. Len. = 4 | option value | Opt. Code = 1 |
    +-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+
    | Opt. Code = y | Opt. Len. = 3 | option value | Opt. Code = 0 |
    +-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+
    | data |
    \ \
    \ \
    | data |
    +-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+
    | data |
    +-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+

    انٹرنیٹ فریگمنٹ کی مثال ​
     
  17. تفسیر

    تفسیر محفلین

    مراسلے:
    3,088
    ضیمہ ( ب ) - ڈیٹا ٹرانسمیشن آرڈر
    ------------------------------------------------------------------ ​

    اس دستاویز میں ہیڈر کو بھیجنے کی ترتیب اکٹیٹ کے درجہ تک ہے۔ جب بھی ایک ڈیٹا گرام میں آکٹیٹ کا مجموعہ کا نقشہ بنایا گیا ہے ان کو بھیجنے کی ترتیب وہی ہے جو ان کوانگلیش میں پڑھنے میں استعمال ہوتی ہے۔ مثال کے طور پر نیچےدیئے ہوئے نقشہ میں آکٹیٹ دیئے ہوئے نمبروں کے مطابق ٹرانسمٹ کئے جائیں گے​



    3 .......................................2........................................1 ........................................0
    2 1 0 9 8 7 6 5 4 3 2 1 0 9 8 7 6 5 4 3 2 1 0 9 8 7 6 5 4 3 2 1 0
    +-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+
    |.............. 4 ...............|.............. 3...............|..............2............... |...............1...............|
    +-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+
    |.............. 8 ...............|.............. 7...............|.............6............... |...............5...............|
    +-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+
    |.............. 12 .............|............. 11.............|............10............. |...............9...............|
    +-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+-+

    ٹرانمیشن بٹ کا آرڈر
    تصویر نمبر 10


    جب بھی ایک آکٹیت میں نمبر ہوتے ہیں۔ تو نقشہ میں الٹے ہاتھ میں آخری بٹ کی ویلیو سب بٹ میں بڑی ہوتی ہے۔ اس نقشہ میں جس بٹ کو صفر کا نام دیا گیا ہے اس کی ویلیو سب سے بلند ہے۔ اس نقشہ کی ویلیو عشاریہ سسٹم میں 170 ہے۔


    7 6 5 4 3 2 1 0
    +-+-+-+-+-+-+-+-+
    |0 1 0 1 0 1 0 1|
    +-+-+-+-+-+-+-+-+

    بٹس کی اہمیت ​



    اسی طرح جب فیلڈ میں ایک سے زیادہ آکٹیٹ ہوتے ہیں تو اس فیلڈ کا الٹے ہاتھ پر آخری نمبر کی ویلیو سب سے بڑی ہوتی ہے۔ اور جب اس فییلڈ کو بھیجا جاتا ہے تو سب سے بڑی فیلڈ کا آخری نمبر سب سے پہلے روانہ ہوتا ہے اور باقی ترتیب اس کے بعد چلتے ہیں۔ ​
     
  18. تفسیر

    تفسیر محفلین

    مراسلے:
    3,088

    فہرست مصطلحات

    1822
    بی بی این رپورٹ 1822“ دی اسپیسیفیکیشن آف دی انٹرکنیکشن آف اے ہوسٹ اینڈ این آئی۔ایم۔پی“ دی اسپیسیفیکیشن آف انٹرفیس بیٹوین اے ہوسٹ اینڈ آرپانیٹ

    آرپانیٹ لیڈر
    ہوسٹ ۔ آئی ایم پی انٹرفیس پر آرپانیٹ کے کنٹرول انفارمیشن

    آرپانیٹ میسیج
    آرپانیٹ میں ایک ہوسٹ اور ایک آئی ایم پی کے درمیان ٹرانسمیشن کا ایک یونٹ ۔ اس کا اوپری سائز 1012 آکٹیٹ کے برابر ہوسکتا ہے ( 8096 بٹیں ) ۔

    آرپانیٹ پیکٹ
    ٹرانسمیشن کا ایک یونٹ جو آرپانیٹ کےاندر آئی ایم پی کے درمیان استعمال ہوتا ہے۔ اس کی اوپری ویلیو 126 آکٹیٹ ( 1008 بٹیں ) ہے۔

    ڈیسٹینیشن
    ڈیسٹینیشن کا اڈریس ۔ یہ انٹرنیٹ ہیڈر کی ایک فیلڈ ہے۔

    ڈی۔ایف
    یہ ایک فلیگ ہے جس میں اس فریگمنٹ کو اور توڑنے کی ممانعت ہوتی ہے۔

    فلیگ
    ایک انٹرنیت ہیڈر فیلڈ جس کے ذریعہ مختلف کنٹرول فلیگ بھیجے جاتے ہیں۔

    فریگمنٹ آفسٹ
    اس انٹرنیٹ ہیڈر فیلڈ سے پتہ چلتا ہے کہ یہ فریگمنٹ کس انٹرنیٹ ڈیٹاگرام کا ایک حصہ ہے۔

    جی۔جی۔پی
    گیٹ وے سے گیٹ وے پروٹوکال۔ اس پرٹوکال کا بنیادی مقصد دو گیٹ وے کےدرمیان راوٹینگ کی انفارمیشن اور دوسرےگیٹ وے اطلاعات کومنقل کرنا ہے۔

    ہیڈر
    کنٹرول انفارمیشن جوایک میسیج، سیگمنٹ، ڈیٹاگرام، پیکٹ یا ڈیٹا بلاک کے شروع میں ہوتی ہے۔

    آئی۔سی۔ایم۔پی
    انٹرنیٹ کنٹرول میسج پرٹوکال۔ یہ انٹرنیٹ پروٹوکال انٹرنیٹ پروٹوکال ماجول میں موجود ہے۔ اس کا مقصدگیٹ وے اور ہوسٹ یا ہوسٹ اور ہوسٹ کےدرمیان میںerrors کی رپورٹ کرنا اورصحیح راؤٹینگ کا مشورہ دیناہے۔

    آئڈینٹیفیکیشن
    یہ ایک انٹرنیٹ ہیڈر فیلڈ ہے جس میں ڈیٹا گرام بھیجنےوالے ہوسٹ کی طرف سےدی ہوئی ہدایات ہیں جو فریگمنٹ کواس کےڈیٹاگرام سےجوڑنے کے لیےانٹرنیٹ ہیڈر میں موجود ہوتی ہیں۔

    آئی۔ایچ۔ایل
    انٹرنیٹ ہیڈر فیلڈ۔ اس فیلڈ میں انٹرنیٹ ہیڈر کی لمبائی درج ہوتی ہے۔ جو 32 بٹوں کے ورڈز میں ہوتی ہے۔

    آئی۔ایم۔پی
    انٹرنیٹ میسج پروسیسر۔ آرپانیٹ کا پیکٹ سوئچ۔

    انٹرنیٹ ایڈریس
    یہ ایک چار آکیٹ کی سورس یا ڈیسٹینیشن ایڈریس ہے جس میں ایک نیٹ ورک فیلڈ اور ایک لوکل ایڈریس فیلڈ ہوتی ہے۔

    انٹرنیٹ ڈیٹاگرام
    دو انٹرنیٹ ماجول کےدرمیان ایک ڈیٹا یونٹ کا تبادلہ ( جس میں انٹرنیٹ ہیڈر بھی شامل ہے۔

    انٹرفریگمنٹ
    انٹرنیٹ ڈیٹا گرام کا ایک حصہ جس میں اُس کا اپنا انٹرنیٹ ہیڈر بھی ہوتا ہے

    لوکل ایڈریس
    ایک ہوسٹ کا نیٹ ورک میں اندرونی ایڈریس۔ ایک ہوسٹ میں انٹرنیٹ لوکل ایڈریس اور انٹرنیٹ نیٹ ورک ایڈریس سے باہمی تعلق۔ بعض دفعہ کئی لوکل ایڈریس کو ایک نیٹ ورک ایڈریس میں ظاہر کیا جاسکتا ہے۔

    ایم۔ایف
    انٹرنیٹ مور ۔ ہیڈر کی فلیگ فیلڈ جو یہ ظاہر کرتی ہے کہ اور بھی فریگمینٹ ہیں۔

    ماجول
    پروٹوکال، یا کسی دوسرے پروسیجرکو سافٹ وئیر کےذریعے کسی فنکشن کو شامل کرنا۔

    مور۔فریگمنٹ فیلڈ فلیگ
    یہ فیلڈ ظاہر کرتی ہے کےیہ فریگمنیٹ آخری ہے یا نہیں ہے۔ یہ انٹرنیٹ ہیڈر فیلڈ کا ایک حصہ ہے۔

    این۔ایف۔بی
    نمبر آف فریگمنٹ بلاک۔ایک انٹرنیٹ ڈیٹا گرام میں ڈیٹا کے کتنےفریگمینٹ بلاک شامل ہیں ۔ ڈیٹا بلاک میں یہ لمبائی 8 آکٹیٹ میں ناپی جاتی ہے۔

    آکٹیٹ
    ایک بائٹ جس میں آٹھ بٹیں ہوں

    آپشن
    انٹرنیٹ ہیڈر آپشن فیلڈ میں کئی آپشن ہوسکتےہیں اور ہر آپشن کی لمبائی کئی آکٹیٹ ہو سکتے ہیں۔

    پیڈینگ
    انٹرنیٹ ہیڈر پیڈینگ فیلڈ۔ یہ ضروری ہے کہ ڈیٹا بتیس بٹوں کی حدود پرشروع ہو۔ اسلئےجو ڈیٹا بتیس بٹوں کی لمبائی میں نہیں ہوتا اس کےآخر میں خالی بٹووں کو صفروں سےبھر دیتے ہیں۔

    پروٹوکال
    اس دستاویز میں یہ اوپری پروٹوکال کا آیڈینٹیفارئر ہے جو کےایک انٹرنیٹ ہیڈر فیلڈ ہے۔

    ریسٹ
    انٹرنیٹ ایڈریس میں لوکل ایڈریس کا حصہ

    سورس
    سورس ایڈریس ۔ایک انٹرنیٹ بیڈر فیلڈ

    ٹی۔سی۔پی
    ٹرانسمیشن کنڑول پروٹوکال۔ انٹرنیٹ پر ہوسٹ۔ٹو۔ہوسٹ پروٹوکال کا ایک ریلائ ایبل کیمیونیکیشن۔

    ٹی۔سی۔پی سیگمنٹ
    ٹی۔سی۔پی ماجول کے درمیان ڈیٹا کے تبادلہ کا یونٹ جس میں ٹی۔سی۔پی ہیڈر بھی شامل ہے۔

    ٹی۔ایف۔ٹی۔پی
    ٹریوییال فائل ٹرانسفر پروٹوکال۔ یہ سادہ فائل ٹرانسفر پروٹوکال، یوزر ڈیٹاگرام پروٹوکال کو استعمال کرکے بنائی گئی ہے۔

    ٹائم۔ٹو۔لیو (ٹی۔ ٹی۔ ایل)
    ایک انٹرنیٹ ہیڈر فیلڈ جس نے یہ پتہ چلتا ہے کےانٹرنیٹ پراس ڈیٹا گرام کی مکمل زندگی کتنی دیر کی ہے۔

    ٹوٹل لینتھ
    انٹرنیٹ ہیڈر فیلڈ۔ انٹرنیٹ ڈیٹا گرام اور ہیڈر کو ملا کرڈیٹاگرام کی لمبائی۔

    ٹائپ آف سروس (ٹی۔او۔ایس)
    ایک انٹرنیٹ ہیڈر فیلڈ جس سےانٹرنیٹ ڈیٹا گرام کی کوالیٹی کی ضرورت کا پتہ چلتا ہے۔

    یو۔ڈی۔پی
    یوز ڈیٹاگرام پروٹوکال۔ یہ یوزر کے لیول پر ٹرانزیکشن اورئینٹڈ اپلیکیشن پروٹوکال ہے۔

    یوزر
    انٹرنیٹ پروٹوکال کو استعمال کرنے والا۔ یہ اوپری پروٹوکال، ایک اپلیکیش پروگرام یاگیٹ وے پروگرام ہو سکتا ہے۔

    وزژن
    انٹرنیٹ ہیڈر کی فارمیٹ کا ورژن فیلڈ
     
  19. تفسیر

    تفسیر محفلین

    مراسلے:
    3,088
    سندیا حوالے کی کتاب
    ---------------------------------------


    [1] Cerf, V., "The Catenet Model for Internetworking," Information Processing Techniques Office, Defense Advanced Research Projects Agency, IEN 48, July 1978.

    [2] Bolt Beranek and Newman, "Specification for the Interconnection of a Host and an IMP," BBN Technical Report 1822, Revised May 1978.

    [3] Postel, J., "Internet Control Message Protocol - DARPA Internet Program Protocol Specification," RFC 792, USC/Information Sciences Institute, September 1981.

    [4] Shoch, J., "Inter-Network Naming, Addressing, and Routing," COMPCON, IEEE Computer Society, Fall 1978.

    [5] Postel, J., "Address Mappings," RFC 796, USC/Information Sciences Institute, September 1981.

    [6] Shoch, J., "Packet Fragmentation in Inter-Network Protocols," Computer Networks, v. 3, n. 1, February 1979.

    [7] Strazisar, V., "How to Build a Gateway", IEN 109, Bolt Beranek and Newman, August 1979.

    [8] Postel, J., "Service Mappings," RFC 795, USC/Information Sciences Institute, September 1981.

    [9] Postel, J., "Assigned Numbers," RFC 790, USC/Informa ​
     
  20. تفسیر

    تفسیر محفلین

    مراسلے:
    3,088
    یہ صفحہ خالی رکھا گیا ہے ​
     

اس صفحے کی تشہیر