امریکا اور طالبان میں معاہدے پر اتفاق ہوگیا

جاسم محمد نے 'آج کی خبر' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏ستمبر 3, 2019

  1. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    24,517
    طالبان کے پیچھے پورے افغانستان اور پاکستان نے ۱۸ سال جوتے کھائے بھی تو تھے۔ ان کا ریکارڈ تاریخ سے خارج کر دیا گیا ہے؟
     
    • مضحکہ خیز مضحکہ خیز × 1
  2. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    13,882
    جھنڈا:
    Pakistan
    وہ حملے بھی آپ نے خود کرائے تھے۔۔۔
    یاد نہیں ملا عمر نے کہا تھا ثبوت دیں ہم خود اسامہ کو تمہارے حوالے کرتے ہیں۔۔۔
    ثبوت دینا تو یاد نہیں، جوتے کھانا یاد رہ گیا!!!
     
    • زبردست زبردست × 1
    • غیر متفق غیر متفق × 1
  3. سید عمران

    سید عمران محفلین

    مراسلے:
    13,882
    جھنڈا:
    Pakistan
    اسی کا تو جواب دیا گیا ہے!!!
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
    • متفق متفق × 1
  4. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    24,517
    یعنی طالبان نے عالمی طاقت امریکہ سے مقابلہ کرکے لاکھوں مسلمان شہید کروانا قبول کر لیا لیکن ایک اسامہ بن لادن (جو افغان شہری بھی نہیں تھا) اس کے حوالہ کرکے جنگ روکنے کو ترجیح نہ دی۔
    اس ہٹ دھرمی اور ضد کا فائدہ کیا ہوا؟ اسامہ بن لادن تو ۱۰ سال بعد امریکہ نے پھر بھی ایبٹ آباد حملے میں ہلاک کر ہی دیا۔ یہی ۲۰۰۱ میں اس کو امریکہ کے حوالہ کر دیتے تو خطے کا آج یہ حال تو نہ ہوتا۔
     
    • مضحکہ خیز مضحکہ خیز × 1
  5. جان

    جان محفلین

    مراسلے:
    1,932
    موڈ:
    Dead
    امریکہ یقیناً باعزت واپسی چاہتا ہے کیونکہ طول جنگ کسی بھی ملک کے مفاد میں نہیں خاص کر اس وقت تو بالکل بھی نہیں جب خطے کی ڈائنامکس، ملکی رائے عامہ اور قومی مفادات تبدیل ہو چکے ہوں۔ امریکن پالیسی ہمارے ملک کی پالیسیوں کی طرح بوسیدہ اور جذباتی پالیسی نہیں ہے کہ بس اسی سے چپکے رہو چاہے ذلت ہی کیوں نہ اٹھانی پڑے۔ امریکہ اچھی طرح سمجھتا ہے کہ چائنا اب افغانستان سے بڑا دشمن ہے، طول پکڑنے کی وجہ سے عوامی دلچسپی بھی افغان جنگ میں نہیں رہی کیونکہ اب وہ حالات بھی نہیں رہے، اس مسئلے سے زیادہ بڑے اور نئے مسائل سامنے آ رہے ہیں، تو ہر حال میں قومی مفادات اولین ترجیح ہے۔ اگر امریکہ کو کسی بھی ملک پہ حملہ کرنا اس کے مفادات کے عین مطابق ہوا تو وہ اس سے گریز نہیں کرے گا۔ ہم بطور امت مسلمہ اس کو جذبات کی نظر سے دیکھ رہے ہیں حالانکہ اگر اس کو سٹیٹ پالیسی کے طور پر دیکھا جائے تو یہ بہترین پالیسی معلوم پڑتی ہے۔
     
    آخری تدوین: ‏ستمبر 3, 2019
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • زبردست زبردست × 1
  6. فرقان احمد

    فرقان احمد محفلین

    مراسلے:
    10,183
    امریکا نے اپنے مفادات کے پیش نظر درست حکمت عملی اختیار کی ہے؛ اس میں کوئی شک نہیں۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • متفق متفق × 1
  7. آصف اثر

    آصف اثر معطل

    مراسلے:
    3,060
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Busy
    پہلی بات تو کسی متنازعہ حملے کا مکمل الزام دوسروں پر تھوپنا درست نہیں۔
    دوسری بات کہ کیا عراق اور دیگر مسلمان اور غیر مسلم ملکوں پر چڑھائی بھی القاعدہ کی وجہ سے ہوئی تھی؟
    کیا جدید ترین ٹیکنالوجی کے ہوتے ہوئے اور دوسروں کا انسانیت کا درس دیتے ہوئے عوام کا قتلِ عام جائز ہے؟
    کیا دوسرے ممالک میں خانہ جنگیاں کرانا درست ہے؟
    کیا محض اس بہانے کے ہم محفوظ رہیں باقی سب کو جانور سمجھ کر صفحۂ ہستی سے مٹانا جائز ہے؟
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  8. جان

    جان محفلین

    مراسلے:
    1,932
    موڈ:
    Dead
    امریکہ انسانیت سوز اقدامات کرے: مسلمانوں اور انسانیت کا جانی دشمن
    ہم عین وہی عمل دہراہیں: جہاد فی سبیل اللہ

    ظلم ہر حال میں ظلم ہے چاہے امریکہ کرے، مسلمان کرے، یہودی کرے، ہندو کرے یا کسی بھی مذہب کا پیروکار کرے اس کی توجیح نہیں دی جا سکتی۔ امریکہ نے افغانستان یا دیگر مسلمان ملکوں پہ حملہ کیا، ظلم کیا۔ افغانستان میں امریکہ کے بھی آنے سے قبل جو خانہ جنگی چل رہی تھی وہ بھی ظلم ہے اور اس کی موجودگی میں جو چل رہی ہے وہ بھی ظلم ہے۔ امریکہ نے تو ورلڈ وار ٹو کے بعد دنیا پہ اپنا تسلط برقرار رکھنے کی پالیسی اپنائی ہے اور خاص کر کولڈ وار ارا کے بعد۔ افغانستان میں ان سٹیبیلیٹی ورلڈ وار ٹو سے بھی بہت پہلے کی داستان ہے، اگر بھولے نہ ہوں تو غزنوی غوری سے شروع ہیں جائیں اور چلتے چلے جائیں اور مذہب کی بنیاد پر تخصیص کر کے خود کو ہر معاملہ میں درست ثابت کرتے جائیں۔
     
    • زبردست زبردست × 2
    • مضحکہ خیز مضحکہ خیز × 1
  9. سین خے

    سین خے محفلین

    مراسلے:
    2,329
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    سو فیصد متفق۔ امریکہ نے تو وحشیانہ روش اپنائی ہوئی ہے لیکن مسلمانوں نے بھی کچھ اچھا نہ کیا۔ جس نے برا کیا، اس نے برا کیا۔ لاکھوں شہری شہید ہوئے۔ جس نے کیا، ظلم کیا۔ ظلم پر کیوں پردہ ڈالا جائے؟

    پچھلے سال افغان علماء نے افغان طالبان کے خود کش دھماکوں کے خلاف فتوی دیا تھا۔ اس کانفرنس میں افغان علماء کے علاوہ پاکستان اور انڈونیشاء سے بھی علماء شریک ہوئے تھے۔ افغان طالبان نے علماء کو روکنے کی بھی کوشش کی تھی۔

    https://aalmiakhbar.com/archives/48850

    اس کے کچھ عرصے بعد افغانستان میں بھی علماء نے فتوی دیا تھا اور اس اجتماع پر خودکش حملہ ہو گیا تھا۔

    کابل: افغان علماء کے اجتماع پر خودکش حملہ، 7 جاں بحق - World - Dawn News
     
    • معلوماتی معلوماتی × 2
    • زبردست زبردست × 1
    • مضحکہ خیز مضحکہ خیز × 1
  10. آصف اثر

    آصف اثر معطل

    مراسلے:
    3,060
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Busy
    تکرار در تکرار کا کوئی فائدہ نہیں ہوتا۔ تمام سوالوں کے جوابات پہلے مراسلات میں موجود ہیں۔
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
    • غیر متفق غیر متفق × 1
  11. جان

    جان محفلین

    مراسلے:
    1,932
    موڈ:
    Dead
    افغانستان سے امریکہ کے انخلا کے بعد پاور ویکیوم پیدا ہونے کے سبب ظلم کی ایک نئی ویو آنے کے امکانات بہت زیادہ ہیں۔ اس سے افغانستان کے شہری تو متاثر ہونگے ہی تاہم خطرہ بدستور موجود ہے کہ اس سے پاکستان بھی متاثر ہو گا۔ اللہ ہر آنے والے برے وقت سے بچائے۔ آمین۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • متفق متفق × 1
  12. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    24,517
    پہلے تو یہ کہ آپ امریکیوں سے زیادہ نہیں جانتے جن کے سیکورٹی اداروں کا بجٹ ہی پورے پاکستان کے بجٹ سے کہیں زیادہ ہیں۔
    دوسرا یہ کہ 9،11 حملے امریکی سر زمین پر ہوئے تھے۔ ان حملہ آوروں کی نقل و حرکت کو ٹریس کر کے اصل لیڈران تک پہنچنا کونسا مشکل کام تھا۔

    نہیں وہاں اور وجوہات تھیں۔

    کیا کمرشل ہوائی جہازوں کا استعمال کرتے ہوئے اور اسلام امن کا دین ہے کا درس دیتے ہوئے نہتے شہریوں کا قتال جائز ہے؟

    کیا دوسرے ممالک میں دہشت گردی کرانا درست ہے؟

    کیا محض امارت اسلامی قائم کرنے کی خاطر پوری دنیا سے لڑنا جائز ہے؟
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  13. سین خے

    سین خے محفلین

    مراسلے:
    2,329
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    رائے دینے کا سب کو حق حاصل ہے۔ تکرار لگتی ہے تو سو بار تکرار لگے۔ جن کو کسی کے مراسلے پر اعتراض ہے وہ رپورٹ کر کے مراسلے حذف کرا دیں۔
     
    • متفق متفق × 2
    • مضحکہ خیز مضحکہ خیز × 1
  14. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    24,517
    آصف اثر آپ اوپر میرے مراسلہ کو منفی ریٹنگ دینا بھول گئے ہیں :)
     
    • پر مزاح پر مزاح × 4
  15. فیصل عظیم فیصل

    فیصل عظیم فیصل محفلین

    مراسلے:
    3,645
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    تاریخ درست کرلیجئے یا پھر اسے پھریری بنا کر استعمال کرنے کے عواقب سے واقفیت حاصل کر لیجئے - طالبان پہلے ہی اسامہ کی حوالگی کے سلسلے میں ثبوتوں کا مطالبہ کر چکے تھے جو کہ تہذیب کے نام پر طاغوت کے غلام ابن غلام حکمرانوں کے لیئے بھی ایک معیار ہے۔ اسامہ کو مار دیا گیا ہے کا دعویٰ کرنے والے آج بھی ایسا کوئی ثبوت پیش کرنے سے قاصر ہیں۔ دوسری جانب طالبان نے امریکہ کو اپنے مطالبات کے مطابق معاہدہ کرنے پر راضی کر کے ثابت کیا ہے کہ اگر آپ حق پر ہیں اور آپ کا موقف واضح ہے تو سپرطاقتیں بھی آپ سے آپ کی شرائط پر گفتگو کریں گی اور معاہدہ کرنے پر مجبور ہونگی لیکن اگر بے پیندے کے لوٹے ہیں جو ہر روز نیا صنم تراش کر اس کی پوجا کے چکروں میں پڑنا چاہیں گے تو پھر کبھی کوئی چور حاکم ہوگا اور کبھی غیر مسلم مسلمان کا بھیس بدل کر آپ کو بے وقوف بنائیں گے ۔ جب تک لا الہ الااللہ اور محمد رسول اللہ کے اصل مفہوم سے آشنا ہو کر اپنا سر صرف اس ایک ہستی کے سامنے اطاعت کے لیئے جھکائے رکھیں گے کسی کے آگے سر نہ جھکے گا ۔ دوسری صورت میں ہر حاکم نمرود و شداد کا پیروکار ملے گا۔ و نعوذ باللہ من ذلک
     
    • زبردست زبردست × 1
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  16. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    24,517
    اس میں طالبان کا کیا کمال ہے؟ یہ تو امریکہ کی بدقسمتی ہے کہ اسے ٹرمپ جیسا ٹرول حکمران ملا ہے۔ جو اپنے ہی سیکورٹی اداروں کے خدشات رد کرتے ہوئے اگلے الیکشن سے پہلے پہلے کسی بھی صورت امریکی افواج افغانستان سے نکالنا چاہتا ہے۔ تاکہ اس "کامیابی " کو عوام میں بیچ کر دوبارہ صدر بن سکے۔
     
    • مضحکہ خیز مضحکہ خیز × 1
  17. آصف اثر

    آصف اثر معطل

    مراسلے:
    3,060
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Busy
    میں خود منفی ریٹنگ دینے میں بہت اختیاط سے کام لیتا ہوں، یہ تو ایک جھلک دکھانا مقصود تھا کہ مجھے جو منفی ریٹنگ دی جارہی ہو وہ آپ ہی کی جانب سے آشکار ہو۔ اور شکر ہے کامیاب رہا۔:)
     
    آخری تدوین: ‏ستمبر 4, 2019
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  18. ابن سعید

    ابن سعید خادم

    مراسلے:
    60,165
    برادرم، آئندہ ایسی جھلک نہ دکھائیں تو مہربانی ہو گی، کیونکہ یہ درجہ بندی کے نظام کے غیر مناسب استعمال کے زمرے میں آتا ہے۔ :) :) :)
     
    • متفق متفق × 2
    • زبردست زبردست × 1
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  19. آصف اثر

    آصف اثر معطل

    مراسلے:
    3,060
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Busy
    یقینا طرفین کی جانب سے اعتدال کا مظاہرہ کیا جائےگا۔:)
     
    • پر مزاح پر مزاح × 2
  20. Fawad -

    Fawad - محفلین

    مراسلے:
    2,163
    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

    خطے ميں امريکی فوج کی موجودگی اور امن مذاکرات کی کامياب تکميل کے بعد فوجی انخلا کے حوالے سے ہماری واضح کردہ خواہش کا بنيادی مرکز اور سوچ کبھی بھی يہ نہيں تھی کہ ہم اپنی کاميابی کا جشن منانے کے مواقع تلاش کريں، لامتناعی مدت کے ليے علاقوں پر قبضہ جمائيں يا افغان معاشرے کے کسی طبقے کو صفحہ ہستی سے مٹا ديں۔

    ہمارے واضح کردہ اہداف ہمشيہ يہی تھے کہ ايک ايسے افغانستان کے حصول کی جانب کاوشيں کريں جہاں دہشت گردی کے محفوظ ٹھکانوں کو فعال رہنے کا موقع ميسر نا ہو۔

    افغانستان کے ليے امريکہ کے خصوصی نمايندے زلمے خليل زاد جنھوں نے کابل ميں ميڈيا کے نمايندوں سے ملاقات کی ہے، اپنے بيان ميں واضح کيا کہ "يہ امن کے ليے ايک موقع ہے" اور ان کی يہ توقع ہے کہ افغان شہری اس موقع سے مثبت طريقے سے اور ہنگامی بنيادوں پر فائدہ اٹھائيں گے۔

    "اس موقع سے فائدہ اٹھائيں۔ ہمارے پاس موقع ہے کہ مستقبل ميں سانحات سے نجات پائيں، اور چاليس برس سے جاری جنگ کو اختتام تک پہنچائيں اور ميں سب کو تاکيد کروں گا کہ اس موقع سے فائدہ اٹھائيں۔ اور مجھے اميد ہے کہ وہ ايسا ہی کريں گے"۔

    فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ
     
    • معلوماتی معلوماتی × 1

اس صفحے کی تشہیر