پروین شاکر کھلی آنکھ میں سپنا جھانکتا ہے

محمد عدنان اکبری نقیبی نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جولائی 4, 2019

  1. محمد عدنان اکبری نقیبی

    محمد عدنان اکبری نقیبی محفلین

    مراسلے:
    18,157
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    کھلی آنکھ میں سپنا جھانکتا ہے
    وہ سویا ہے کہ کچھ کچھ جاگتا ہے

    تری چاہت کے بھیگے جنگلوں میں
    مرا تن، مور بن کر ناچتا ہے

    مجھے ہر کیفیت میں کیوں نہ سمجھے
    وہ میرے سب حوالے جانتا ہے

    میں اس کی دسترس میں ہوں، مگر وہ
    مجھے میری رضا سے مانگتا ہے

    کسی کے دھیان میں ڈوبا ہوا دل
    بہانے سے مجھے بھی ٹالتا ہے

    سڑک کو چھوڑ کر چلنا پڑے گا
    کہ میرے گھر کا کچّا راستہ ہے

    پروین شاکر​
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1

اس صفحے کی تشہیر