میں تُجھ کو کروں یاد یا تُو مُجھ کو کرے یاد

رشید حسرت نے 'آپ کی شاعری (پابندِ بحور شاعری)' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏مارچ 7, 2021

ٹیگ:
  1. رشید حسرت

    رشید حسرت محفلین

    مراسلے:
    181
    جھنڈا:
    Pakistan
    میں تُجھ کو کروں یاد یا تُو مُجھ کو کرے یاد
    ماضی کے جھروکوں میں عجب رنگ بھرے یاد

    یہ کِس نے کہا وقت نے دُھندلائے تِرے نقش
    فانُوس جلے رکھتا ہوں پلکوں پہ سرِ یاد

    چہرے پہ مِرے وقت نے بھبُوت رمائی
    اب تو ہے وُہی بات کہ خُود مُجھ سے ڈرے یاد

    اک عُمر ہوئی پیار کا تابُوت اُٹھائے
    ہر شئے پہ فنا آئی ہے ہرگز نہ مرے یاد

    کیوں دل کی گواہی پہ یقیں آتا نہیں ہے
    کرتا ہے کوئی مُجھ کو اِن آنکھوں سے پرے یاد

    جِتنا بھی کِیا ترکِ محبّت کا اِرادہ
    ہر روز مگر اور ہی بہرُوپ بھرے یاد

    تُو نے ہی نہیں مُجھ کو کِیا یاد وگرنہ
    کُھلتے ہی چلے جاتے مِرے دوست درِ یاد

    کُچھ زخم تعلّق سے تِرے پِیپ بھرے تھے
    کُچھ درد رہا ساتھ مِرے کار گرِ یاد

    شُہرت کے فلک نے جو مُجھے خاک پہ پٹخا
    تب جا کے رشیدؔ آئے ہیں وہ دوست کھرے یاد


    رشِید حسرتؔ۔​
     
    مدیر کی آخری تدوین: ‏مارچ 8, 2021
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
    • زبردست زبردست × 1
  2. یاسر شاہ

    یاسر شاہ محفلین

    مراسلے:
    1,528
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bitched
    واہ -بہت خوب
     
  3. رشید حسرت

    رشید حسرت محفلین

    مراسلے:
    181
    جھنڈا:
    Pakistan
     
  4. رشید حسرت

    رشید حسرت محفلین

    مراسلے:
    181
    جھنڈا:
    Pakistan
    یاسر شاہ صاحب آپ کا شکریہ
     
  5. ایس ایس ساگر

    ایس ایس ساگر لائبریرین

    مراسلے:
    677
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    عمدہ غزل۔ بہت داد قبول فرمائیے رشید حسرت صاحب۔
     
  6. رشید حسرت

    رشید حسرت محفلین

    مراسلے:
    181
    جھنڈا:
    Pakistan
     
  7. رشید حسرت

    رشید حسرت محفلین

    مراسلے:
    181
    جھنڈا:
    Pakistan
    بڑی نوازش۔ شکریہ
     

اس صفحے کی تشہیر