1. احباب کو اردو ویب کے سالانہ اخراجات کی مد میں تعاون کی دعوت دی جاتی ہے۔ مزید تفصیلات ملاحظہ فرمائیں!

    ہدف: $500
    $453.00
    اعلان ختم کریں

میر کی ہندی بحر کو سمجھنے کا آسان ٹوٹکہ

متلاشی نے 'بزم سخن' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جون 19, 2019

  1. متلاشی

    متلاشی محفلین

    مراسلے:
    2,456
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Pensive
    میر کی ہندی بحر کو سمجھنے کا بالکل آسان طریقہ

    میر کی ہندی بحر کی کل 256 صورتیں ہیں جو سب کی سب کسی ایک غزل یا نظم میں جمع کی جاسکتی ہیں۔
    علم عروض کی اصطلاح میں اس کا نام ہے:

    بحر متقارب مثمن مضاعف اثرم مقبوض محذوف/مقصور
    اور اس کے اصل ارکان ہیں:

    فعلُ فعولُ فعولُ فعولُ فعولُ فعولُ فعولُ فعَل/فعولْ

    اگر اس بحر کو آسانی سے سمجھنا ہو ہم اس کے ارکان یہ مان لیتے ہیں۔

    فعلن، فعلن، فعلن، فعلن، فعلن، فعلن،فعلن، فع/فاع
    2،22,22,22,22,22,22,22

    اب سادہ سا اصول ہے کہ اس میں ہر "لُن" کو فَعِ یعنی11 میں توڑ سکتے ہیں۔

    اس اصول کے مطابق آپ اس بحر میں کہے گئے ہر شعر کی تقطیع کر کے نتیجہ دیکھ سکتے ہیں
    اسی طرح
    بحر متقارب مثمن اثرم مقبوض محذوف/مقصور
    کو بھی آسانی سے سمجھا جا سکتا ہے۔۔
    اس بحر کے اصل ارکان تو یہ ہیں

    فعلُ فعولُ فعولُ فعَل/فعولْ

    آسانی سے سمجھنے کےلئے ہم اس کے ارکان یہ مان لیتے ہیں۔

    فعلن، فعلن، فعلن، فع/فاع
    یعنی
    2٫22,22,22
    اس میں بھی وہی سادہ سا اصول ہے کہ اس میں ہر "لُن" کو فَعِ یعنی11 میں توڑ سکتے ہیں۔
    آپ اس اصول کے مطابق آپ اس بحر میں کہے گئے ہر شعر کی تقطیع کر کے نتیجہ دیکھ سکتے ہیں ۔

    محمد ذیشان نصر
    18 جون 2019
     

اس صفحے کی تشہیر