غزل

خورشید بھارتی نے 'آپ کی شاعری (پابندِ بحور شاعری)' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جون 26, 2020

  1. خورشید بھارتی

    خورشید بھارتی محفلین

    مراسلے:
    76
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Breezy
    گئے دن کی نشانی ہو گئی ہے
    مری تختی پرانی ہو گئی ہے
    گلوں نے خودکشی کرلی یہ سن کر
    خزاں کی حکمرانی ہو گئی ہے
    اچانک مل گئے جو آپ ہم سے
    یہ رت کتنی سہانی ہو گئی ہے
    ضرورت سے فقط ملتی ہے ہم سے
    بہت دنیا سیانی ہو گئی ہے
    نسیں دکھلاتی ہے ہاتھوں کی اکثر
    وہ اک لڑکی دیوانی ہو گئی ہے
    فقط اب رینگتی ہے گھر کے اندر
    عذاب اک زندگانی ہو گئی ہے
    فضا میں زہر ہے نفرت کا ایسا
    ہوا بھی زعفرانی ہو گئ ہے
    خورشید بھارتی
    واسلیگنج،سول لائن،
    مرزاپور، یو۔پی
    انڈیا
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • زبردست زبردست × 1
  2. محمّد احسن سمیع :راحل:

    محمّد احسن سمیع :راحل: محفلین

    مراسلے:
    867
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Confused
    واہ، ماشاء اللہ... اچھی غزل ہے.

    برا نہ مانیں تو یہ عرض کرنے کی جرأت کروں گا یہ شعر دیگر اشعار کے معیار کا نہیں لگا.

    دعا گو،
    راحل.
     
  3. محمد شکیل خورشید

    محمد شکیل خورشید محفلین

    مراسلے:
    301
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Tolerant
  4. خورشید بھارتی

    خورشید بھارتی محفلین

    مراسلے:
    76
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Breezy
    ہوسکتا ہے۔۔۔۔
    سلامت رہیں
     

اس صفحے کی تشہیر