غزل برائے اصلا ح

محمد ا حمد نے 'اِصلاحِ سخن' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏فروری 3, 2018

ٹیگ:
  1. محمد ا حمد

    محمد ا حمد محفلین

    مراسلے:
    6
    غزل

    عجب دستورِ الفت اپنا رہی ہو
    کہ بزمِ دشمناں میں آ جا رہی ہو
    یہ بھی حد ہے عداوت اتنی بڑھا لی
    کہ اب ملنے سے بھی تم کترا رہی ہو
    ہے جعلی اک تبسم جو رخ پہ تو کیا
    عدو کی بات سے رغبت پا رہی ہو
    کہا تم نے کہ پیار اب بھی باقی ہے, ہائے!
    جاں تم تو اب بجھے دل جلا رہی ہو
    اچھا تم چھوڑو ان سب باتوں کو لیکن
    مکانِ دل میں کب آمد لا رہی ہو

    محمد احمد
    ---------------------------------------------------------​
    الف عین
     
  2. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    33,870
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    ایک بار کہہ چکا ہوں کہ عروض ضروری ہے غزل کہنے کے لیے۔ اگر نہیں سیکھنا چاہتے تو نثری نظمیں لکھا کریں۔
     
    • متفق متفق × 1
  3. ارشد چوہدری

    ارشد چوہدری محفلین

    مراسلے:
    1,284
    جھنڈا:
    UnitedStates
    موڈ:
    Brooding
    الف عین صاحب سے سوال----کیا نثری نظم میں بھی وزن کا خیال رکھا جاتا ہے یا صرف خیالات کا اظہار ہوتا ہے
     
  4. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    33,870
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    آزاد نظم میں بحر کی پابندی ہوتی ہے۔ محض نثری نظم میں کسی قسم کی پابندی نہیں ہوتی۔ اصلاح کی بھی نہیں!!!!
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  5. عدنان شاہد 7

    عدنان شاہد 7 محفلین

    مراسلے:
    20
    الف عین صاحب! عروض کے بارے میں کچھ تفصیل سے بتائیں گے؟ نیز غزل سیکھنے کے لیے کہاں سے مدد مِل سکتی ہے؟
     
  6. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    33,870
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    نیٹ پر تلاش کرنے سے کافی مدد مل سکتی ہے۔ عروض ڈاٹ کام کے مضامین، اردو کی برقی کتابوں میں آسی بھائی کی کتب وغیرہ کار آمد ہو گی۔ ابتدائی سبق عزیزی محمد خلیل الرحمن نے پڑھایا ہے، ان کو ہی اپنا لنک ازبر رہتا ہے شاید۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  7. محمد خلیل الرحمٰن

    محمد خلیل الرحمٰن مدیر

    مراسلے:
    7,990
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Festive

اس صفحے کی تشہیر