غزل برائے اصلاح

ارشد چوہدری نے 'اِصلاحِ سخن' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اپریل 4, 2019

ٹیگ:
  1. ارشد چوہدری

    ارشد چوہدری محفلین

    مراسلے:
    1,274
    جھنڈا:
    UnitedStates
    موڈ:
    Brooding
    الف عین
    عظیم
    افاعیل--فعولن فعولن فعولن فعولن
    -------------
    جہالت جو دنیا پہ چھائی ہوئی ہے
    یہ انساں کی اپنی بنائی ہوئی ہے
    -------------
    ہے محبوب میرا تو ناراض مجھ سے
    یہ کس نے ہوائی اُڑائی ہوئی ہے
    ------------
    تری منتظر ہے مرے دل کی محفل
    یہ تیرے لئے ہی سجائی ہوئی ہے
    ------------
    جو بیٹھا ہے کرسی پہ سارے جہاں کی
    یہ دنیا اسی کی بنائی ہوئی ہے
    -----------
    وہی دے رہا ہے مجھے نعمتیں سب
    جبیں اس کے آگے جھکائی ہوئی ہے
    --------------
    ملا ہے سکوں جو کیا یاد رب کو
    مرے دل کی کچھ تو صفائی ہوئی ہے
    --------------------
    ترے دل میں ارشد محبّت خدا کی
    ہمیشہ سے ایسے سمائی ہوئی ہے
    ----------------
     
  2. عظیم

    عظیم محفلین

    مراسلے:
    6,628
    جہالت جو دنیا پہ چھائی ہوئی ہے
    یہ انساں کی اپنی بنائی ہوئی ہے
    -------------'اپنی ہی لائی' زیادہ بہتر معلوم ہو رہا ہے

    ہے محبوب میرا تو ناراض مجھ سے
    یہ کس نے ہوائی اُڑائی ہوئی ہے
    ------------ان دونوں مصرعوں کا آپس میں ربط کمزور ہے
    خاص طور پر پہلا مصرع بیان کے اعتبار سے نامکمل لگ رہا ہے

    تری منتظر ہے مرے دل کی محفل
    یہ تیرے لئے ہی سجائی ہوئی ہے
    ------------
    جو بیٹھا ہے کرسی پہ سارے جہاں کی
    یہ دنیا اسی کی بنائی ہوئی ہے
    -----------یہ دونوں اشعار درست ہیں

    وہی دے رہا ہے مجھے نعمتیں سب
    جبیں اس کے آگے جھکائی ہوئی ہے
    --------------وہی بخشتا ہے....
    'جبیں جس کے آگے' کیسا رہے گا؟

    ملا ہے سکوں جو کیا یاد رب کو
    مرے دل کی کچھ تو صفائی ہوئی ہے
    --------------------جو اور تو طویل کھنچ رہے ہیں جس کی وجہ سے روانی میں کمی آتی ہے
    ملا ہے سکوں جب کیا یاد رب کو
    مرے دل کی اب کچھ صفائی ہوئی ہے

    ترے دل میں ارشد محبّت خدا کی
    ہمیشہ سے ایسے سمائی ہوئی ہے
    ---------------'ایسے ہی' نہیں ہونا چاہیے تھا؟ یا 'یونہی' بہتر رہے گا
    اور پہلے مصرع میں بھی شاید 'کیا' کی ضرورت ہے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • متفق متفق × 1
  3. الف عین

    الف عین لائبریرین

    مراسلے:
    33,841
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Psychedelic
    ماشاء اللہ عظیم میری طرح ہی اصلاح کر رہے ہیں اس لیے
    میں متفق کا جھنڈا لگا دیتا ہوں ۔ اس سے میرا مکمل اتفاق سمجھا جائے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  4. ارشد چوہدری

    ارشد چوہدری محفلین

    مراسلے:
    1,274
    جھنڈا:
    UnitedStates
    موڈ:
    Brooding
    عظیم
    الف عین
    اصلاح کے بعد دوبارا
    ---------
    جہالت جو دنیا پہ چھائی ہوئی ہے
    یہ انساں کی اپنی ہی لائی ہوئی ہے
    -------------
    جو محبوب میرا ہے ناراض مجھ سے
    یہ سازش کسی کی بنائی ہوئی ہے
    ------------ یا ---
    مرا یار ناراض ہے آج مجھ سے
    یہ تیلی کسی کی لگائی ہوئی ہے
    --------------------
    تری منتظر ہے مرے دل کی محفل
    یہ تیرے لئے ہی سجائی ہوئی ہے
    ------------
    جو بیٹھا ہے کرسی پہ سارے جہاں کی
    یہ دنیا اسی کی بنائی ہوئی ہے
    -----------
    وہی بخشتا ہے مجھے نعمتیں سب
    جبیں جس کے آگے جھکائی ہوئی ہے
    --------------
    ملا ہے سکوں جب کیا یاد رب کو
    مرے دل کی اب کچھ صفائی ہوئی ہے
    --------------------
    کیا دل میں ارشد محبّت خدا کی
    ہمیشہ سے یونہی سمائی ہوئی ہے
    ------------
     
  5. عظیم

    عظیم محفلین

    مراسلے:
    6,628
    دوسرے شعر میں سازش کے ساتھ 'رچائی' مناسب لگ رہا ہے اور جو اس کے متبادل کے طور پر شعر ہے وہ پسند نہیں آیا
    اس کے علاوہ جن اشعار کے دوسرے مصرعے 'یہ' سے شروع ہو رہے ہیں ان کے درمیان تھوڑا فاصلہ رکھ لیں۔ مطلب اشعار کی ترتیب آگے پیچھے کر لیں
    مقطع کا پہلا مصرع بحر میں نہیں ہے
    'کیا' کو صرف 'کا' تقطیع کرنا ہو گا
     
    • متفق متفق × 1
  6. ارشد چوہدری

    ارشد چوہدری محفلین

    مراسلے:
    1,274
    جھنڈا:
    UnitedStates
    موڈ:
    Brooding
    عظیم
    محبّت خدا کی یہ کیا دل میں ارشد
    ہمیشہ سے یوں ہی سمائی ہوئی ہے
    -----------
    باقی تبدیلیاں بھی نوٹ کر لی ہیں ۔ اب ساری غزل دوبارہ لکھنے کی ضرورت نہیں ہے شائد۔
     
  7. عظیم

    عظیم محفلین

    مراسلے:
    6,628
    'یہ' بھرتی کا لگ رہا ہے۔ ضروری نہیں ہے کہ 'کیا' ہی استعمال کیا جائے بس کسی طرح سوالیہ تاثر پیدا ہو جائے پہلے مصرع میں
    اگر شعر بھی دوبارہ کہنا پڑے تو کوئی حرج نہیں
    میرے بھی ذہن میں اس وقت کچھ نہیں آ رہا
     
    • متفق متفق × 1
  8. ارشد چوہدری

    ارشد چوہدری محفلین

    مراسلے:
    1,274
    جھنڈا:
    UnitedStates
    موڈ:
    Brooding
    عظیم
    ایک بار پھر
    -----------------
    کیا جو وعدہ وفا کروں گا
    میں حقِ الفت ادا کروں گا
    -------------
    یہ دل تو تیرا ہی ہو گیا ہے
    تری رضا میں جیا کروں گا
    ----------------
    خدا تجھے بھی وفا سکھائے
    میں تیری خاطر دعا کروں گا
    ----------
    تری یہ آنکھیں جو کہہ رہی ہیں
    پکار ان کی سنا کروں گا
    -----------
    نبھا رہا ہوں میں اپنا وعدہ
    کہ دکھ نہ تجھ کو دیا کروں گا
    -------
    جہاں کو چھوڑا تجھے ہے پایا
    میں قدر تیری سدا کروں گا
    ------------
    وفا کی خاطر میں جاں بھی دوں گا
    وفا کا وعدہ وفا کروں گا
    --------
    تجھے بھلانا نہیں ہے ممکن
    میں یاد تجھ کو کیا کروں گا
    ------------
    یہ بات ارشد کی یاد رکھنا
    کبھی نہ دھوکہ دیا کروں گا
    ----------
     
  9. عظیم

    عظیم محفلین

    مراسلے:
    6,628
    کیا جو وعدہ وفا کروں گا
    میں حقِ الفت ادا کروں گا
    ------------اس غزل کی لڑی ہی بدل گئی ہے
    'کیا جو وعدہ' اب دیکھنے پر ٹھیک نہیں لگ رہا۔ ہر ایک وعدہ' کر سکتے ہیں

    یہ دل تو تیرا ہی ہو گیا ہے
    تری رضا میں جیا کروں گا
    ----------------دو لخت

    خدا تجھے بھی وفا سکھائے
    میں تیری خاطر دعا کروں گا
    ----------درست

    تری یہ آنکھیں جو کہہ رہی ہیں
    پکار ان کی سنا کروں گا
    -----------یہ تیری آنکھیں....
    'جو کہہ رہی ہیں' سے ظاہر ہوتا ہے کہ جو بات کہہ رہی ہیں آنکھیں وہ معلوم ہے تو دوسرا مصرع کچھ ساتھ نہیں دے رہا
    ۔۔ میں روز اس کو سنا کروں گا
    شاید بہتر ہو

    نبھا رہا ہوں میں اپنا وعدہ
    کہ دکھ نہ تجھ کو دیا کروں گا
    -------یہ بھی درست

    جہاں کو چھوڑا تجھے ہے پایا
    میں قدر تیری سدا کروں گا
    ------------پہلا مصرع رواں نہیں ۔ کسی اور طرح کہنے کی کوشش کریں مثلا
    جہاں کو چھوڑا تو تجھ کو پایا
    ۔۔اور دوسرے مصرع میں 'سدا' کی جگہ 'کیا' بہتر ہو گا

    وفا کی خاطر میں جاں بھی دوں گا
    وفا کا وعدہ وفا کروں گا
    --------دوسرا مصرع، بات نہیں بنی

    تجھے بھلانا نہیں ہے ممکن
    میں یاد تجھ کو کیا کروں گا
    ------------ٹھیک ہے

    یہ بات ارشد کی یاد رکھنا
    کبھی نہ دھوکہ دیا کروں گا
    ----------کہ میں نہ دھوکے دیا کروں گا
    یا اس سے ملتا جلتا کچھ اور
     

اس صفحے کی تشہیر