1. اردو ویب کے سالانہ اخراجات کی مد میں فراخدلانہ تعاون پر احباب کا بے حد شکریہ نیز ہدف کی تکمیل پر مبارکباد۔ مزید تفصیلات ملاحظہ فرمائیں!

    $500.00
    اعلان ختم کریں

غزل :ایسا بھی نہیں ہے کہ یہ غم کچھ نہیں کہتے - اختر عثمان

فرحان محمد خان نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اکتوبر 6, 2019

  1. فرحان محمد خان

    فرحان محمد خان محفلین

    مراسلے:
    2,095
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheeky
    غزل
    ایسا بھی نہیں ہے کہ یہ غم کچھ نہیں کہتے
    یوں ہے کہ ترے سامنے ہم کچھ نہیں کہتے

    واپس چلے آتے ہیں یونہی دامنِ دل تک
    کچھ اشک سرِ دیدۂ نم کچھ نہیں کہتے

    میں شام سے تا صبح جو پھرتا ہوں بھنور سا
    اِس باب میں اربابِ کرم کچھ نہیں کہتے

    اپنے لیے اِک درجہ بنا رکھا ہے ہم نے
    میعار ہے، میعار سے کم کچھ نہیں کہتے

    ہونا بھی نہ ہونا ہے تو کس بات کا رونا
    اختؔر مجھے موجود و عدم کچھ نہیں کہتے
    اختر عثمان
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1

اس صفحے کی تشہیر