رات بیتی طلوع ہوا آفتاب اے جاناں!

پروفیسر شوکت اللہ شوکت نے 'اِصلاحِ سخن' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جولائی 10, 2020

  1. پروفیسر شوکت اللہ شوکت

    پروفیسر شوکت اللہ شوکت محفلین

    مراسلے:
    238
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    فیس بک پر کسی شاعر کا ایک مصرع پڑھا تو میں نے کچھ ٹیڑھے میڑھے الفاظ کو کچھ یوں لکھا۔۔۔
    کرنے چلے تھے دھوپ چھائوں کی مصوری
    ٹیڑھے سے چند قطرے بارش کے بناتے چلے گئے
    آنکھ نہ جھپکی رُخِ مہتاب کو تکتے تکتے
    مٹاتے مٹاتے بس تصویر بناتے چلے گئے
    حواس ِ خمسہ کا امتزاج تھا عروج پر
    ہر اندام بناتے مٹاتے بناتے چلے گئے
    رات بیتی طلوع ہوا آفتاب اے جاناں!
    نئے سرے سے چہرہ مہتاب بناتے چلے گئے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
  2. یاقوت

    یاقوت محفلین

    مراسلے:
    550
    موڈ:
    Breezy
    ہے تو معرٰی پر کچھ زیادہ ہی معرٰی لگ رہی ہے۔
     
  3. محمد وارث

    محمد وارث لائبریرین

    مراسلے:
    26,564
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Depressed
    پروفیسر صاحب، ذاتی سا سوال پوچھنے کے لیے پیشگی معذرت، آپ کونسا مضمون پڑھاتے ہیں؟
     
  4. پروفیسر شوکت اللہ شوکت

    پروفیسر شوکت اللہ شوکت محفلین

    مراسلے:
    238
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    جناب۔ میں کمپیوٹر ساٸنس اور اس کے علاوہ ایجوکیشنل مینجمنٹ پڑھاتا ہوں۔
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  5. محمد وارث

    محمد وارث لائبریرین

    مراسلے:
    26,564
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Depressed
    شکریہ محترم اور بہت خوشی ہوئی یہ جان کر۔:)
     
  6. پروفیسر شوکت اللہ شوکت

    پروفیسر شوکت اللہ شوکت محفلین

    مراسلے:
    238
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    اس محفل میں دو دن پہلے شرکت کی۔ شکریہ آپ لوگوں کی رہنماٸی کا۔ ان شاء اللہ رابطہ رہے گا۔ میرے کالم 2017 سے hamariweb پر دستیاب ہیں۔ شاعری تو زیادہ نہیں کرتا لیکن قطعات لکھتا رہتا ہوں۔
     
  7. شکیل احمد خان23

    شکیل احمد خان23 محفلین

    مراسلے:
    232
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cheerful
    محترم پروفیسر صاحب!
    ویسے تو اساتذہ کرام آپ کی رہنمائی فرمائیں گے۔۔۔مگر بات سے بات نکلتی ہے اور خیال سے خیال ۔۔۔

    قطعہ
    کرنی تھی دھوپ چھاؤں کی ہم کو مصوری
    آنچل کا اُن کے نقش اُٹھائے چلے گئے

    ٹھہری تھی اُن کے چاند سے چہرے پہ یہ نظر
    آنکھوں میں ہم تو خواب سجائے چلے گئے

    سارے حواس مل کے نہ یہ کرسکے حساب
    کس کس طرح سے یاد وہ آئے چلے گئے

    بیتی جو رات ، رنگ جما آفتاب کا
    ہم تھے کہ داغ دل کے جلائے چلے گئے
     
    آخری تدوین: ‏جولائی 10, 2020
    • متفق متفق × 1
  8. محمّد احسن سمیع :راحل:

    محمّد احسن سمیع :راحل: محفلین

    مراسلے:
    946
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Confused
    شکیل بھائی کی تجاویز سے متفق ہو‍ں، گو اشعار کی اچھی خاصی جراحتِ تجمیلی کرنا پڑ گئی.

    مکرمی پروفیسر صاحب، بصد احترام عرض ہے کہ اگر اس ہئیت میں اشعار پیش کریں گے تو ان کی اصلاح بہت دشوار ہوجائے گی. اس لئے میری گزارش یہ ہے کہ علم عروض کی بنیادی شدبد ضرور حاصل کیجئے(بحر اوزان وغیرہ). جب تک آپ اپنے کلام کو کسی بحر میں معقول حد تک موزوں نہیں کریں، ان کی اصلاح کروانے میں مشکل رہے گی.

    دعاگو،
    راحل.
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  9. پروفیسر شوکت اللہ شوکت

    پروفیسر شوکت اللہ شوکت محفلین

    مراسلے:
    238
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    شکریہ جناب! جیسا کہ میں عرض کر چکا ہوں کہ میں ایسوسی ایٹ پروفیسر آف کمپیوٹر سائنس ہوں اور اس کے علاوہ ایجوکیشنل مینجمنٹ وغیرہ بھی پڑھاتا ہوں۔ کالم نگاری کرتا ہوں۔ شاعری سے شغف نہیں۔۔۔ کبھی کبھی ٹیڑھے میڑے الفاظ یکجا کر لیتا ہوں۔ اردو محفل نظر سے گزری ، اچھی لگی۔ اس لئے سوچا کہ آپ لوگوں سے اس بہانے بات چیت ہوتی رہے گی۔ اُمید ہے آپ بُرا نہیں منائیں گے۔ ہمیشہ خوش رہیں، آباد رہیں۔
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  10. محمّد احسن سمیع :راحل:

    محمّد احسن سمیع :راحل: محفلین

    مراسلے:
    946
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Confused
    خوش آمدید جناب، دل و جان سے خوش آمدید.
    اس میں برا ماننے والی کوئی بات ہی نہیں، یہاں ہر ایک کو کھلے دل سے دعوت شرکت حاصل ہے، اور اپنی تحریرات پیش کرنے کی بھی. مجھے کسی قسم کی کوئی قدغن لگانے کا اختیار حاصل ہے نہ ہی ایسی کوئی خواہش ہے :)
    امید ہے آپ مستقلا اور دائما شریک محفل رہیں گے.
     

اس صفحے کی تشہیر