دہی کے گُن کون گنوائے!

سیما علی نے 'اپنا اپنا دیس' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏اگست 1, 2020

  1. ام عبدالوھاب

    ام عبدالوھاب محفلین

    مراسلے:
    1,774
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Busy
    بہت زبردست،معلوماتی تحریر۔
    سیما آپی بہت کمال لکھا ہے
    دہی ایرانیوں کی ایجاد ہے۔پرانے زمانے میں جب لوگ قافلوں کی صورت میں سفر کرتے تھے تو خوراک کیلیئے دودھ والے جانور بھی ساتھ لے لیتے تھے،جہاں پڑاؤ کیا وہاں جانوروں کا دودھ دھو کر پی لیا جاتا تھا۔
    ایک مرتبہ دودھ پینے کی بجائے مشکوں میں بھر لیا گیا تاکہ جب پیاس لگے تو پانی کے طور پر استعمال کیا جا سکے،جب ضرورت پڑی تو دودھ جم چکا تھا۔چنانچہ اسے کھا لیا گیا۔شام تک لوگوں نے محسوس کیا کہ اس دن انہوں نے زیادہ سفر کیا اور انہیں تھکان بھی کم ہوئی،بھوک پیاس بھی کم لگی۔انہوں نے اور دودھ دھو کر وہی دہی والی مشکوں میں ڈال دیا جو دوپہر تک پھر جم گیا، پھر وہ کچھ بچا کر دودھ میںملانے لگے۔
    یوں دہی ایجاد ہوئی اور ہم تک پہنچی۔تاہم یہ میرے علم میں نہیں کہ دہی کتنی صدیوں سے ہماری خوراک کا حصہ ہے۔
    دہی کے بارے میں ایک اور دلچسپ بات جو مجھے معلوم ہے وہ یہ کہ دہی مذکر بھی ہے اور مونث بھی۔اسے دونوں طرح بولا جا سکتا ہے۔
     
    • زبردست زبردست × 1

اس صفحے کی تشہیر