درخت،پیڑ،پودے،شجر

جاسمن نے 'اشعار اور گانوں کے کھیل' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جون 28, 2018

  1. جاسمن

    جاسمن مدیر

    مراسلے:
    14,749
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Fine
    غزل (عباس تابش)

    شاید کسی بلا کا تھا سایہ درخت پر

    چڑیوں نے رات شور مچایا درخت پر

    موسم تمہارے ساتھ کا جانے کدھر گیا

    تم آئے اور بور نہ آیا درخت پر

    دیکھا نہ جائے دھوپ میں جلتا ہوا کوئی

    میرا جو بس چلے کروں سایہ درخت پر

    سب چھوڑے جا رہے تھے سفر کی نشانیاں

    میں نے بھی ایک نقش بنایا درخت پر

    اب کے بہار آئی ہے شاید غلط جگہ

    جو زخم دل پہ آنا تھا آیا درخت پر

    ہم دونوں اپنے اپنے گھروں میں مقیم ہیں

    پڑتا نہیں درخت کا سایہ درخت پر​
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 6
    • زبردست زبردست × 2
  2. جاسمن

    جاسمن مدیر

    مراسلے:
    14,749
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Fine
    درخت کٹ گیا لیکن وہ رابطے ناصرؔ

    تمام رات پرندے زمیں پہ بیٹھے رہے
    حسن ناصر
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
    • زبردست زبردست × 2
  3. جاسمن

    جاسمن مدیر

    مراسلے:
    14,749
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Fine
    تمام اونچے درختوں سے بچ کے چلتا ہوں
    میں جانتا ہوں کہ سایہ کسی کے پاس نہیں
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
    • زبردست زبردست × 1
  4. جاسمن

    جاسمن مدیر

    مراسلے:
    14,749
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Fine
    جب راستے میں کوئی بھی سایہ نہ پائے گا
    یہ آخری درخت بہت یاد آئے گا
    اظہر عنائتی
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
    • زبردست زبردست × 2
  5. جاسمن

    جاسمن مدیر

    مراسلے:
    14,749
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Fine
    کچھ ایسے بدحواس ہوئے آندھیوں میں لوگ
    جو کھوکھلے تھے پیڑ انہی سے لپٹ گئے
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
    • زبردست زبردست × 1
  6. جاسمن

    جاسمن مدیر

    مراسلے:
    14,749
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Fine
    گل سے لپٹی ہوئے تتلی کو گرا کر دیکھو
    آندھیو! تم نے درختوں کو گرایا ہوگا
    کیف بھوپالی
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
    • زبردست زبردست × 2
  7. جاسمن

    جاسمن مدیر

    مراسلے:
    14,749
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Fine
    ذرا چھوا تھا کہ بس پیڑ آگیا مجھ پر
    کسے خبر تھی کہ اندر سے کھوکھلا ہے بہت
    افتخار امام صدیقی
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
    • زبردست زبردست × 2
  8. جاسمن

    جاسمن مدیر

    مراسلے:
    14,749
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Fine
    صبا سے کہہ دو یہاں سے دبے قدم گذرے
    شجر پہ ایک ہی پتہ دکھائی دیتا ہے
    شکیب جلالی
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 5
    • زبردست زبردست × 1
  9. جاسمن

    جاسمن مدیر

    مراسلے:
    14,749
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Fine
    ہاں بتائے گا شجر سمتِ ہوا
    اُس پہ گر ایک بھی پتہ ہوگا
    ارشد غازی
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
    • زبردست زبردست × 1
  10. جاسمن

    جاسمن مدیر

    مراسلے:
    14,749
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Fine
    کبھی کتابوں میں پھول رکھنا، کبھی درختوں پہ نام لکھنا
    ہمیں بھی ہے یاد آج تک وہ نظر سے حرفِ سلام لکھنا
    حسن رضوی
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 6
    • زبردست زبردست × 2
  11. جاسمن

    جاسمن مدیر

    مراسلے:
    14,749
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Fine
    پرندے لڑ ہی پڑے جائداد پر آخر
    شجر پہ لکھا ہوا ہے شجر برائے فروخت
    افضل خان
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 5
    • زبردست زبردست × 1
  12. جاسمن

    جاسمن مدیر

    مراسلے:
    14,749
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Fine
    لگایا محبت کا جب یاں شجر
    شجر لگ گیا اور ثمر جل گیا
    میر حسن
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
    • زبردست زبردست × 1
  13. جاسمن

    جاسمن مدیر

    مراسلے:
    14,749
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Fine
    مرے حالات کو بس یوں سمجھ لو
    پرنے پر شجر رکھا ہوا ہے
    شجاع خاور
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • زبردست زبردست × 1
  14. جاسمن

    جاسمن مدیر

    مراسلے:
    14,749
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Fine
    کون پتھر اُٹھائے
    یہ شجر بے ثمر ہے
    عبدالصمد تپش
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 3
    • زبردست زبردست × 1
  15. جاسمن

    جاسمن مدیر

    مراسلے:
    14,749
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Fine
    یہ کیسا گُل کھلایا ہے شجر نے
    ثمر بننے کو گُنثہ منتظر ہے
    راہی فدائی
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 2
    • زبردست زبردست × 1
  16. عندلیب

    عندلیب محفلین

    مراسلے:
    15,035
    جھنڈا:
    India
    موڈ:
    Amused
    تم نے دیکھا ہے کبھی اک نظر شام کے بعد
    کتنے چپ چاپ سے لگتے ہیں شجر شام کے بعد
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 7
    • زبردست زبردست × 1
  17. جاسمن

    جاسمن مدیر

    مراسلے:
    14,749
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Fine
    ذرا موسم تو بدلا ہے مگر پیڑوں کی شاخوں پر نئے پتوں کے آنے میں ابھی کچھ دن لگیں گے
    بہت سے زرد چہروں پر غبارِ غم ہے کم بےشک پر ان کو مسکرانے میں ابھی کچھ دن لگیں گے
    جاوید اختر
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 6
    • زبردست زبردست × 1
  18. جاسمن

    جاسمن مدیر

    مراسلے:
    14,749
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Fine
    ادیب و شاعر فن کار بوتے ہیں جو شجر
    یہ لوگ پھل کہاں اپنے شجر کے دیکھتے ہیں
    دلاور فگار
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
    • زبردست زبردست × 1
  19. جاسمن

    جاسمن مدیر

    مراسلے:
    14,749
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Fine
    کتنا بھی رنگ و نسل میں رکھتے ہوں اختلاف
    پھر بھی کھڑے ہوئے ہیں شجر اِک قطار میں
    غلام مرتضیٰ راہی
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 4
    • زبردست زبردست × 1
  20. جاسمن

    جاسمن مدیر

    مراسلے:
    14,749
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Fine
    کل رات جو ایندھن کے لئے کٹ کے گرا ہے
    چڑیوں کو بہت پیار تھا اس بوڑھے شجر سے
    پروین شاکر
     
    • پسندیدہ پسندیدہ × 5
    • زبردست زبردست × 1

اس صفحے کی تشہیر