جکومت کی ایک سالہ کارکردگی۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

La Alma نے 'سیاست' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏نومبر 9, 2019 11:33 صبح

  1. La Alma

    La Alma محفلین

    مراسلے:
    1,845
    دس مہینے کی قلیل مدت میں کرتار پور راہداری کے منصوبے کی تکمیل پر وزیراعظم عمران خان کا حیرانگی کا اظہار۔۔۔
    جناب فرماتے ہیں کہ مجھے تو پتا ہی نہیں تھا میری حکومت اتنی ایفیشنٹ ہے۔ اس کا مطلب ہے ہم اور کام بھی کر سکتے ہیں۔:):)
     
    آخری تدوین: ‏نومبر 9, 2019 11:47 صبح
    • پر مزاح پر مزاح × 4
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
  2. محمداحمد

    محمداحمد لائبریرین

    مراسلے:
    21,840
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Amazed
    سچی؟؟
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
    • متفق متفق × 1
  3. La Alma

    La Alma محفلین

    مراسلے:
    1,845
    یہاں معاملہ مذہبی رواداری کا نہیں بلکہ ذاتی ترجیحات کا ہے۔ عوام سے کیے گئے ہزاروں وعدے وفا نہ ہوئے تو کیا ہوا ۔۔۔دوست سے کئے گئے وعدے کی لاج تو رکھ لی۔ دوستی ہو تو ایسی۔
     
    • زبردست زبردست × 1
    • متفق متفق × 1
  4. La Alma

    La Alma محفلین

    مراسلے:
    1,845
    ایک سالہ کارکردگی کی ویڈیو تفصیلات:
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  5. عبدالقیوم چوہدری

    عبدالقیوم چوہدری محفلین

    مراسلے:
    17,113
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Relaxed
    خان صاحب سے حسب معمول ایک اور چول وج گئی ہے۔ حکومت نامی کسی شے کا اس گوردوارے اور راہدری میں حصہ شاید ایک اینٹ کا بھی نہیں ہے۔ فیصلہ کرنے سے لیکر تعمیرات کے ٹینڈر اور تکمیل تک خاکیوں کے قدم چپے چپے پر ثبت ہیں۔

    FWO نے 'شاید' یہ منصوبہ BOT کے تحت بنایا ہے اور معاہدے کی مدت کم نہیں تو اندازاً 20 سال تو ہو گی۔ اگلی گل سیانے آپ سمجھن۔

    البتہ کل کہیں پڑھا تھا کہ کرتار پور بنانے والے مستری فارغ ہو گئے ہیں تو انھیں بی آر ٹی پشاور کا کام سونپ دیں۔
     
    • معلوماتی معلوماتی × 2
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  6. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    13,145
    یہ تو بہت برا ہوا۔ بھوٹان کی فوج ملک کا سارا سرمایہ لوٹ کر برطانیہ، سوئٹزرلینڈ اور دبئی لے گئی ہے۔ اسے کوئی این آر او نہیں دینا آپ سویلین بالادستی والوں نے۔ فوج سے ایک ایک پائی کا حساب لیں۔ بس شریف اور زرداری خاندان کی لوٹ مار پر کوئی بات نہیں ہوگی۔
     
  7. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    13,145
    جب قومی بجٹ کا ۴۲ فیصد پچھلی حکومتوں کے لئے گئے قرضوں کی ادائیگی میں جا رہا ہوگا تو آپ عوام سے کئے گئے وعدوں کو پورا کرنے کیلئے پیسہ کہاں سے لائیں گی؟
    [​IMG]
    [​IMG]
     
  8. احمد محمد

    احمد محمد محفلین

    مراسلے:
    330
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Breezy
    جاسم محمد صاحب، لگتا ہے آپ کو باور کروانا پڑے گا کہ خان صاحب وفاقی حکومت میں آنے سے پہلے فرماتے تھے:-

    ہم نے پانچ سال خیبر پختونخواہ میں حکومت کر کے بہت کچھ سیکھا ہے۔ ہم نے ہوم ورک مکمل کیا ہوا ہے، ہر چیز کا سسٹم اور میکانزم بنایا ہوا ہے بس نافذ کرنا ہے، اسد عمر انتہائی قابل آدمی ہے، 90 دن میں کرپشن ختم ہو جائے گی، لوٹا ہوا پیسا اگلے دن واپس آ جائے گا وغیرہ۔

    اور اب حکومت میں آکر ڈیڑھ سال سے محض یہ بتا رہے ہیں کہ ملکی وسائل کا 42 فیصد پچھلے قرضوں میں جاتا ہے۔ کتنے قرض لیے گئے، وسائل کا بے دریغ استمعال کیا گیا۔ خزانے کو نقصان پہنچایا گیا وغیرہ وغیرہ۔

    عجیب منطق ہے، پہلے خان صاحب کی کرپٹ سیاستدانوں کے خلاف 22 سالہ جدوجہد کی منوہر کہانیاں سناتے تھے اب ہر روز انہی کرپٹ عناصر سے موازنہ کرکے خان صاحب کو بہتر ثابت کرتے ہیں۔
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  9. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    13,145
    اس کی سمجھ نہیں آئی۔ ظاہر ہے عمران خان کا موازنہ ملک کے سابقہ حکمرانوں سے ہی ہوگا۔ اگر آپ چاہتے ہیں کہ کسی اور ملک کے حکمران سے موازنہ کیا جائے تو ترکی کے اردغان اور ملائیشیا کے مہاتیر سے کر لیں۔ دونوں سابقہ حکومتوں کے بڑے بڑے کرپشن سکینڈلز اور ملک کے معاشی حالات خراب ہونے پر اقتدار میں آئے تھے۔
     
  10. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    13,145
    یہ بات درست ہے۔ اس کا اقرار وفاقی وزرا، بشمول وزیر اعظم صاحب نے خود کئی بار کیا ہے کہ ان کو واقعی نہیں معلوم تھا کہ سابق حکومتیں ملک کو کس سنگین معاشی بحران سے دوچار کر کے گئی ہے۔
    Pakistan's debt policy has brought us to the brink. Another five years of the same is unsustainable - DAWN.COM
     
  11. La Alma

    La Alma محفلین

    مراسلے:
    1,845
    اچھا ایکسکیوز ہے۔ہزار ہا مشکلات کے باوجود 72 سالہ پرانے معاملات تو باآسانی سلجھ گئے لیکن چند دہائیوں پر محیط اپنے ملکی مسائل حل نہ ہو سکے۔کیونکہ وہ گزشتہ حکومتوں کی پیداوار تھے۔
    مدینے جیسی مثالی ریاست کے قیام کا وعدہ کیا اپنوں سے، اورافتتاح کیا غیر کے مدینے کا۔ عوام بھی اتنی سادہ ہے کہ اسی کو دیکھ کر خوش ہو گئی۔ :)
     
    • دوستانہ دوستانہ × 1
  12. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    13,145
    قانون کے مطابق حکومت کو کل ملکی پیداوار کا 60 فیصد سے زیادہ قرضہ لینا منع ہے۔ اس کے باوجود 90 کی دہائی اور پچھلے دس سالوں میں آنے والی حکومتوں نے اس حد کو تجاوز کیا۔ جس کے سنگین نتائج آج پوری قوم کو ادا کرنے پڑ رہے ہیں۔
    [​IMG]
    اس وقت پاکستان اپنی کل قومی پیداوار کے حساب سے سب سے زیادہ مقروض ملک ہے۔
    [​IMG]
    ظاہر ہے یہ پہاڑ جتنے قرضے موجودہ حکومت نے نہیں لیے۔ بلکہ سابقہ حکومتوں نے عوام اور فوج کو لالی پاپ دینے کی خاطر عوام پر چڑھائے اور اب کنٹینر پر چڑھ کر اس حکومت کے خلاف بک بک کر رہے ہیں جو قوم سے کئے گئے وعدوں کو بھینٹ چڑھا کر ان کی اقساط واپس کرنے پر مجبور ہے۔
    [​IMG]
    Current Debt Crisis Threatens Pakistan's Future
     
  13. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    13,145
    کوئی بات نہیں۔ موجودہ حکومت ہر لحاظ سے بری ہے۔ چاہے وہ کشمیر یوں کے لئے ہر جگہ آواز بلند کرے۔ یا وہ مذہبی سیاحت کے فروغ کیلئے اپنے بارڈر کھول دے۔
    اچھی حکومتیں تو وہ تھی جب مودی کو گھر شادیوں پر بلوایا جاتا تھا۔ اور بزنس ٹائیکون جندال بغیر ویزہ کے مری کی سیریں کرتا تھا :)
    [​IMG]
    [​IMG]
     
  14. آورکزئی

    آورکزئی محفلین

    مراسلے:
    400
    ہاہاہا۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ویسے اگر کرتارپور سے فارغ ہوئے ہوں تو بی آر ٹی پہ کام شروع کیا جائے۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ہاہاہاہا

    یہ لوگ بھی کیا لوگ ہیں مر کیوں نہیں جاتے
     
    • پر مزاح پر مزاح × 2
  15. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    13,145
    بی آر ٹی فوجی کمپنیوں کو دے دیتے تو کب کا مکمل ہو جاتا :)
     
  16. آورکزئی

    آورکزئی محفلین

    مراسلے:
    400
    پھر برویز کٹک کا کیا بنتا ۔۔۔۔۔۔؟؟
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  17. محمد وارث

    محمد وارث لائبریرین

    مراسلے:
    25,426
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Depressed
    زیادہ سیانوں نے سوشل میڈیا پر یہ حساب لگایا ہے چوہدری صاحب
    20 ڈالر ضرب پانچ ہزار یاتری ضرب 365 دن ضرب 160 ڈالر ریٹ برابر قریب چھ ارب روپے سالانہ، نصف جس کے تین ارب (اور یہی قرین قیاس ہے کہ نہ 365 دن انٹری ہونی ہے اور نہ ہر روز پانچ ہزار یاتری ہونے ہیں)۔

    لیکن میرا سوال آپ سے یہ ہے کہ کیا ایف ڈبلیو او پرائیوٹ ادارہ ہے؟ اگر پرائیوٹ نہیں بلکہ حکومتی ادارہ ہے چاہے آرمی کا ہے تو پھر بیس سال کا کنٹریکٹ ہو یا کچھ اور کیا فرق پڑتا ہے!
     
    • زبردست زبردست × 1
  18. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    13,145
    ان سویلین بالا دستی والوں کو صرف پاک فوج، فوجی کمپنیوں اور ان کو چلانے والے جرنیلوں سے بغض ہے۔ یہی کنٹریکٹ اگر شریف یا زرداری خاندان کے کسی قریبی کو ملا ہوتا تو یہ اس وقت بھنگڑے ڈال رہے ہوتے۔
     
    • پر مزاح پر مزاح × 1
  19. محمد خلیل الرحمٰن

    محمد خلیل الرحمٰن مدیر

    مراسلے:
    7,785
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Festive
    ظاہر ہے پاک فوج، فوجی کمپنیوں اور ان کو چلانے والے جرنیلوں کی مخالفت دراصل ریاست سے بغاوت ہے!
     
    • متفق متفق × 1
  20. جاسم محمد

    جاسم محمد محفلین

    مراسلے:
    13,145
    فوجی کمپنیوں کو کرتارپور راہداری کا کنٹریکٹ ملا۔ 9 ماہ سے بھی کم عرصہ میں مکمل کرکے پرسوں کھول بھی دیا گیا۔
    دوسری طرف پشاور میں سویلین بالادست کمپنیاں بی آر ٹی پراجیکٹ بنانے میں کئی سالوں سے تاخیر کا شکار ہیں۔
     

اس صفحے کی تشہیر