1. اردو ویب کے سالانہ اخراجات کی مد میں فراخدلانہ تعاون پر احباب کا بے حد شکریہ نیز ہدف کی تکمیل پر مبارکباد۔ مزید تفصیلات ملاحظہ فرمائیں!

    $500.00
    اعلان ختم کریں

صبا اکبر آبادی :::::: جو دیکھیے، تو کرم عِشق پر ذرا بھی نہیں:::::: Saba- Akbarabadi

طارق شاہ نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جون 25, 2019

  1. طارق شاہ

    طارق شاہ محفلین

    مراسلے:
    10,616
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Bookworm
    غزل
    صبؔا اکبر آبادی

    جو دیکھیے، تو کرم عِشق پر ذرا بھی نہیں
    جو سوچیے کہ خَفا ہیں، تو وہ خَفا بھی نہیں

    وہ اور ہوں گے، جِنھیں مُقدِرت ہے نالوں کی!
    ہَمَیں تو حوصلۂ آہِ نارَسا بھی نہیں

    حدِ طَلب سے ہے آگے، جنُوں کا استغنا
    لَبوں پہ آپ سے مِلنے کی اب دُعا بھی نہیں

    حصُول ہو ہَمَیں کیا مُدّعا محبّت میں !
    ابھی سلیقۂ اِظہارِ مُدّعا بھی نہیں

    شُگُفتِ گُل میں بھی، زخمِ جِگر کی صُورت ہے
    کسی سے ایک تبسّم کا آسرا بھی نہیں

    زہے حیات، طبیعت ہے اعتدال پسند
    نہیں ہیں رِند اگر ہم تو پارسا بھی نہیں

    سُنا تو کرتے تھے، لیکن صَبّا سے مِل بھی لِیے
    بَھلا ، وہ ہو کہ نہ ہو آدمی بُرا بھی نہیں

    صبؔا اکبرآبادی
     

اس صفحے کی تشہیر