جو دل نے کہی لب پہ کہاں آئی ہے دیکھو زہرا نگاہ

سیما علی نے 'پسندیدہ کلام' کی ذیل میں اس موضوع کا آغاز کیا، ‏جنوری 23, 2021

  1. سیما علی

    سیما علی لائبریرین

    مراسلے:
    20,563
    جھنڈا:
    Pakistan
    موڈ:
    Cool
    جو دل نے کہی لب پہ کہاں آئی ہے دیکھو
    اب محفل یاراں میں بھی تنہائی ہے دیکھو

    پھولوں سے ہوا بھی کبھی گھبرائی ہے دیکھو
    غنچوں سے بھی شبنم کبھی کترائی ہے دیکھو

    اب ذوق طلب وجہ جنوں ٹھہر گیا ہے
    اور عرض وفا باعث رسوائی ہے دیکھو

    غم اپنے ہی اشکوں کا خریدا ہوا ہے
    دل اپنی ہی حالت کا تماشائی ہے دیکھو​
     
    مدیر کی آخری تدوین: ‏جنوری 23, 2021
    • پسندیدہ پسندیدہ × 1
    • زبردست زبردست × 1

اس صفحے کی تشہیر